دریائے گوداوری

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
دریائے گوداوری
Godavari river.jpg 

Godavari.png  نقشہ

انتظامی تقسیم
ملک Flag of India.svg بھارت  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں ملک (P17) ویکی ڈیٹا پر[1]
تقسیم اعلیٰ کرناٹک،  وآندھرا پردیش،  ومہاراشٹر،  وچھتیس گڑھ،  وتیلنگانا  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں انتظامی تقسیم میں مقام (P131) ویکی ڈیٹا پر
متناسقات 18°09′15″N 80°33′35″E / 18.1541062°N 80.559741°E / 18.1541062; 80.559741،  و19°55′48″N 73°31′39″E / 19.93°N 73.5275°E / 19.93; 73.5275،  و16°43′32″N 82°19′52″E / 16.7256°N 82.3311°E / 16.7256; 82.3311  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں متناسقاتی مقام (P625) ویکی ڈیٹا پر
مزید معلومات
اوقات متناسق عالمی وقت+05:30  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں منطقہ وقت (P421) ویکی ڈیٹا پر
جیو رمز 1271115  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں جیونیمز شناخت (P1566) ویکی ڈیٹا پر
نحوی غلطی

دریائے گوداوری : (مراٹھی : गोदावरी, تیلگو గోదావరి) : جنوبی ہندوستان کا ایک اہم دریا ہے۔ یہ مغرب سے نکل کر مشرق کی طرف بہتا ہے۔ اور اس کا بیسن بہت ہی بڑا مانا جاتا ہے۔ یہ دریا مہاراشٹر ریاست کے ضلع ناشک کا علاقہ ترمبک سے نکلتا ہے اور سطح مرتفع دکن سے گزر کر، آندھرا پردیش کے مشرقی گوداوری ضلع میں راجمنڈری کے پاس خلیج بنگال میں جا ملتا ہے۔[2]

جغرافیہ[ترمیم]

دریائے گوداوری، وسطی بھارت کا ایک اہم آبی ذریعہ ہے۔ ریاست مہاراشٹر کی مغربی گھاٹی میں، ضلع ناشک کے ترمبکیشور (ترمبک) کے آس پاس سے نکلتا ہے۔ مشرق کی جانب، سطح مرتفع دکن سے گذرتا ہے۔ یہ دریا بھارت کا سب سے بڑا دوسرا دریا ہے۔ اس کو دکشن گنگا (جنوبی گنگا) بھی کہا جاتا ہے۔ یہ دریا آندھرا پردیش میں، نظام آباد ضلع کے کندُکُرتی گاؤں سے داخل ہوتا ہے، سطح مرتفع دکن سے گذرتا ہوا، جبوب مشرق کی طرف بہتا ہوا، خلیج بنگال میں جا ملتا ہے۔[3]

دریا کے کنارے بسے شہر اور گاؤں[ترمیم]

مہاراشٹر میں[ترمیم]

آندھرا پردیش میں[ترمیم]

باندھ اور پُل[ترمیم]

  • آندھرا پردیش کے مشرقی گوداوری ضلع کے دھوالیشورم کے پاس ایک بیریج 1852 میں باندھا گیا۔
  • اضلاع نظام آباد اور عادل آباد کی سرحدوں میں سری رام ساگر کے نام سے ایک ڈیم ہے۔
  • ترمبکیشور، مہاراشٹر کے پاس ایک پُل باندھا گیا۔
  • یکلہارا، مہاراشٹر کے پاس ایک پروجکٹ۔
  • پیتھانی، مہاراشٹر کے پاس ‘جیکواڑی ڈیم‘۔
راجمنڈری اور کوور کے درمیان ایک ریلوے پُل۔

دیدہ زیب علاقے[ترمیم]

بھدراچلم سے بہتی دریائے گوداوری کا ایک منظر۔

بھارت کے عام دریاؤں کی طرح دریائے گوداوری کے کنارے بھی کئی شہر بسے ہیں، بالخصوص ہندو دھرم کے کئی مقدس مقامات ہیں۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1.   خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں جیونیمز شناخت (P1566) ویکی ڈیٹا پر"صفحہ دریائے گوداوری في GeoNames ID"۔ GeoNames ID۔ اخذ شدہ بتاریخ 5 نومبر 2019۔
  2. "River Godavari"۔ rainwaterharvesting.org۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 2006-11-12۔
  3. "Ponnaiyar"۔ Person uknown۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 2006-12-09۔

بیرونی روابط[ترمیم]