گوا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
گوا
گووا
ریاست
گوا بھارت میں واقع
گوا بھارت میں واقع
گوا کا نقشہ
گوا کا نقشہ
متناسقات (پناجی): 15°29′56″N 73°49′40″E / 15.49889°N 73.82778°E / 15.49889; 73.82778متناسقات: 15°29′56″N 73°49′40″E / 15.49889°N 73.82778°E / 15.49889; 73.82778
ملک Flag of India.svg بھارت
قیام 30 مئی1987
پایۂ تخت پناجی
عظیم ترین شہر واسکو دا گاما
اضلاع 2
حکومت
 • گورنر بھارت ویر ونچو
 • وزیر اعلیٰ منوہر پریکار
 • Legislature یکمجلسی (40 نشستیں)
 • Parliamentary constituency 2
 • عدالتِ اعلیٰ بمبئی عدالتِ عالیہ - پناجی ، گوا بینچ
رقبہ
 • کل 3,702 کلو میٹر2 (1,429 مربع میل)
درجہ بلحاظ رقبہ 28th
آبادی (2011)
 • کل 1,457,723
 • درجہ بلحاظ آبادی 25th
 • کثافت 390/کلو میٹر2 (1,000/مربع میل)
منطقۂ وقت بھارتی معیاری وقت (یو ٹی سی+05:30)
آیزو 3166 رمز IN-GA
انسانی ترقیاتی اشاریہ Increase2.svg 0.779 (high)
درجہ 3واں (2005)
خواندگی 87% (3rd)
دفتری زبانیں کونکنی
ویب سائٹ www.goa.gov.in
^*  Konkani is the sole official language but Marathi is also allowed to be used for any or all official purposes.[1][2][3]

گوا (انگریزی: Goa) (کونکنی:गोंय ، مراٹھی : गोवा ، سنسکرت : गोमंतक) بھارت کی ایک ریاست ہے۔ بلحاظ رقبہ سب سے چھوٹی ریاست ہے۔ بلحاظ آبادی چوتھی ریاست ہے۔ یہ ریاست بھارت کے جنوبی مشرقی علاقہ میں واقع ہے۔ اس علاقہ کو کونکن بھی کہا جاتا ہے۔ اس ریاست کے شمال اور مشرق میں ریاست مہاراشٹر، جنوب میں ریاست کرناٹک اور مغرب میں بحیرہ عرب واقع ہے

تاریخ[ترمیم]

گوا کے 1961 بھارتی الحاق، 1961. میں اپنے بھارتی علاقوں میں مسلح کارروائی پرتگالی اقتدار ختم ہوا کہ بھارت کی مسلح افواج کی طرف سے ایک کارروائی تھی، 36 سے زائد گھنٹے کے لئے بھارتی حکومت، ملوث ہوا، سمندر اور زمین حملوں کی طرف سے آپریشن وجے نامی کوڈ، اور گوا میں پرتگالی نوآبادیاتی حکمرانی کے 451 سال کو ختم کرنے کے لئے بھارت ایک فیصلہ کن فتح، تھا. 1950s میں بھارتی وزیر اعظم پنڈت جواہر لال نہرو تکلیفیں مسائل میں سے ایک گوا کے بارے میں کیا تھا. صورتحال گوا لوگوں اور بھارتی مظاہرین کے ایک گروپ گوا میں 'آزادی مارچ' کیا اور ان میں سے 20 سے زائد کو گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا جب 1955 میں ایک سر میں آنے کے لئے شروع کر دیا.

انہوں نے کہا کہ گوا کے پرتگالی کنٹرول اب کوئی برداشت کیا جا سکتا ہے کا اعلان کیا اور پرتگالی حکومت فراہمی پرواز کرنے کے لئے جس میں ایک ہوائی اڈے کی تعمیر کی طرف پاکستان اور سری لنکا کے ساتھ تجارت کو کھولنے کی طرف سے بچ گیا تھا جس میں ایک ناکہ بندی، قائم. پرتگالی آمر، انتونیو سالا زر عالمی رہنماؤں سے بین الاقوامی حمایت ڈرم کی کوشش کی. صدر کینیڈی طاقت کا استعمال اور لندن میں پرتگالی سفیر 1899 کے اینگلو پرتگالی اتحاد کی شرائط کے تحت یہ کسی بھی پرتگالی کالونی پر حملہ کیا گیا تو پرتگال کی مدد کرنے کے لئے آنے کے لئے واجب کیا گیا تھا کہ برطانوی حکومت کو یاد دلایا کے لئے نہیں اس کا مشورہ دے نہرو کو لکھا.

وہاں زیادہ واقعات تھے اور نومبر 1961 میں گوا میں پرتگالی بھارتی ماہی گیری کشتیوں پر فائرنگ. نہرو صبر کھو دیا ہے اور دسمبر 17th پر بھاری اکثریت سے طاقت کے استعمال گوا پر فوجی، بحری اور فضائی حملے نصب. 30،000 ایک بھارتی فوجی کی مخالفت سب سے زیادہ 3،000 مردوں میں تھا جو پرتگالی گورنر،، حملہ آوروں میں تاخیر کرنے کے لئے چند پل کو دھماکے سے اڑا لیکن اس صورت حال صاف مایوس کن تھا اور وہ سفید جھنڈا لہرایا اور آگے ہتھیار ڈال دئے. تقریبا کوئی مزاحمت اور چند جانی نقصان نہیں کیا گیا تھا. ریاست ہائے متحدہ امریکہ اور برطانیہ بھی عملی انداز میں پرتگال کی مدد کے لئے ایک انگلی اٹھانے نہیں کیا. اور نہ ہی کسی نے.

بیرونی روابط[ترمیم]


حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ "Goa". Commissioner Linguistic Minorities, 42nd Report, July 2003 to June 2004. National Commissioner Linguistic Minorities. Retrieved 17 July 2007. Konkani is the only official language of the state. There actually is no second official language. However, as per notification, Marathi will be used for the purpose of reply by the Government whenever communications are received in that language. 
  2. ^ UNI (30 May 2007). "Marathi vs Konkani debate continues in Goa". rediff.com (Rediff.com India Limited). http://www.rediff.com/news/2007/may/30goa.htm۔ اخذ کردہ بتاریخ 17 July 2007. 
  3. ^ Government of Goa. "About Goa". goa.gov.in. Goa Government. At present, Marathi and Konkani are two major languages of Goa. 
‘‘https://ur.wikipedia.org/w/index.php?title=گوا&oldid=2011444’’ مستعادہ منجانب