جھارکھنڈ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
جھارکھنڈ
ریاست
An immensely resource-rich state, Jharkhand suffers from resource curse
An immensely resource-rich state, Jharkhand suffers from resource curse
جھارکھنڈ کی دفتری مہر
مہر
جھارکھنڈ کا محل وقوع
جھارکھنڈ کا محل وقوع
Map of Jharkhand
Map of Jharkhand
متناسقات (Ranchi): 23°21′N 85°20′E / 23.35°N 85.33°E / 23.35; 85.33متناسقات: 23°21′N 85°20′E / 23.35°N 85.33°E / 23.35; 85.33
ملک بھارت
بھارت کی انتظامی تقسیم مشرقی بھارت
Formation 15 نومبر 2000
پایہ تخت رانچی
Largest city جمشیدپور
ضلع 24
حکومت
 • Governor Draupadi Murmu
 • Chief Minister Raghubar Das (بھارتیہ جنتا پارٹی)
 • Legislature یک ایوانیت (81 seats)
 • Parliamentary constituency 14
 • بھارتی عدالت ہائے عالیہ کی فہرست Jharkhand High Court
رقبہ
 • کل 79,714 کلو میٹر2 (30,778 مربع میل)
رقبہ درجہ فہرست بھارتی ریاستیں اور علاقہ جات بلحاظ رقبہ
آبادی (2011)
 • کل 32,988,134
 • درجہ بھارت کی ریاستیں بلحاظ آبادی
 • کثافت 414/کلو میٹر2 (1,070/مربع میل)
منطقۂ وقت بھارتی معیاری وقت (UTC+05:30)
آیزو 3166 رمز آیزو 3166-2:IN
انسانی ترقیاتی اشاریہ Increase2.svg 0.376 (low)
HDI rank فہرست بھارتی ریاستیں اور علاقہ جات بلحاظ انسانی ترقیاتی اشاریہ (2007-08)
بھارت میں شرح خواندگی 67.6% (فہرست بھارتی ریاستیں بلحاظ شرح خواندگی)
دفتری زبان ہندی زبان
Second official languages میتھلی زبان، بھوجپوری زبان، Magahi، Angika، بنگلہ، Ho، اڑیہ زبان، سنتالی زبان and several other languages
ویب سائٹ www.jharkhand.gov.in
Formed by the Bihar Reorganisation Act, 2000
بھارت کے نقشے میں ریاست جھارکھنڈ کو نمایاں کیا گیا ہے

جھارکھنڈ (ہندی: झारखण्ड)مشرقی بھارت کی ایک ریاست ہے۔ یہ 15 نومبر 2000ء کو ریاست بہار کو تقسیم کر کے تشکیل دی گئی۔ ریاست کی سرحدیں شمال میں بہار، مغرب میں اتر پردیش اور چھتیس گڑھ، جنوب میں اڑیسہ اور مشرق میں مغربی بنگال سے ملتی ہیں۔ 79 ہزار 714 مربع کلومیٹر (30 ہزار 778 مربع میل) پر پھیلی ریاست جھارکھنڈ کا دار الحکومت صنعتی شہر رانچی ہے جبکہ جمشید پور ریاست کا سب سے بڑا شہر ہے۔ جھارکھنڈ کا مطلب "جنگلاتی زمین" ہے۔

2001ء کی مردم شماری کے مطابق ریاست کی آبادی 32.96 ملین ہے، جس میں سے 68.6 فیصد ہندو مت کی پیروکار ہے جبکہ مسلمانوں کی آبادی 13.84 فیصد ہے۔ 13 فیصد آبادی مظاہر پرست قبائلی باشندوں پر مشتمل ہے۔

جھارکھنڈ 1967ء کے بعد سے عسکریت پسند اشتراکی نکسل وادیوں کا گڑھ رہی ہے اور اب تک باغیوں اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کے درمیان جنگ میں 6 ہزار سے زائد لوگ مارے جا چکے ہیں۔