ہریانہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
ہریانہ
ہریانہ
YamunaRiver.jpg
 

تاریخ تاسیس 1 نومبر 1966  ویکی ڈیٹا پر (P571) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
Haryana in India (claimed and disputed hatched).svg
 
نقشہ

انتظامی تقسیم
ملک Flag of India.svg بھارت  ویکی ڈیٹا پر (P17) کی خاصیت میں تبدیلی کریں[1][2]
دارالحکومت چندی گڑھ  ویکی ڈیٹا پر (P36) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تقسیم اعلیٰ بھارت  ویکی ڈیٹا پر (P131) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
جغرافیائی خصوصیات
متناسقات 30°43′48″N 76°46′48″E / 30.73000°N 76.78000°E / 30.73000; 76.78000
رقبہ 44212 مربع کلومیٹر  ویکی ڈیٹا پر (P2046) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
آبادی
کل آبادی 27761063 (2016)  ویکی ڈیٹا پر (P1082) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
  • مرد 13494734 (2011)[3]  ویکی ڈیٹا پر (P1540) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
  • عورتیں 11856728 (2011)[3]  ویکی ڈیٹا پر (P1539) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مزید معلومات
اوقات متناسق عالمی وقت+05:30  ویکی ڈیٹا پر (P421) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
سرکاری زبان ہندی  ویکی ڈیٹا پر (P37) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
آیزو 3166-2 IN-HR[4]  ویکی ڈیٹا پر (P300) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
قابل ذکر
اہم زبانیں
باضابطہ ویب سائٹ باضابطہ ویب سائٹ  ویکی ڈیٹا پر (P856) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
جیو رمز 1270260  ویکی ڈیٹا پر (P1566) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

ہریانہ کی ذاتیں
ذات تناسب
جاٹ
  
34.0%
یاداو
  
18.0%
براہمن
  
11.0%
راجپوت
  
5.0%
گجر
  
2.5%
میو
  
10.0%
دیگر
  
19%

ہریانہ (ہندی:हरियाणा) شمالی بھارت میں واقع ایک ریاست ہے۔ 'ہریانہ' لفظ کا مطلب ہے 'ہریانوی بولنے والوں کی زمین'۔ ہریانہ کا کل رقبہ 44 ہزار 212 مربع کلومیٹر ہے جبکہ ریاست کے 22 اضلاع ہیں۔ اکثریتی زبان ہریانوی ہے۔ ہریانہ کا دار الحکومت چندی گڑھ ہے جو پڑوسی ریاست پنجاب کا بھی دار الحکومت ہے۔

وجہِ تسمیہ[ترمیم]

ہریانہ نام 12 ویں صدی عیسوی میں امیرھرمشا مصنف "وِبُدھ شْرِیدھر" (وی 1189-1230) کے کاموں میں پایا جاتا ہے۔[5] ہریانہ کا نام سنسکرت الفاظ ہری (ہندو خدا وشنو) اور آیانا (گھر) سے حاصل کیا گیا ہے جس کا معنی "خدا کا گھر" ہے۔[6] تاہم، منی لعل، مرلی چندر شرما، ایچ اے فڈک اور سکوید سنگھ چب جیسے علما کا خیال ہے کہ یہ نام سنسکرت الفاظ "ہرِت" بمعنی ہرا یا سبز (Green) اور "ایرانی" (جنگل) کے ایک مرکب سے آتا ہے۔[7] کیونکہ، یہ ممکن نہیں ہے کہ جنگل اور سبز دونوں ایک دوسرے کو اکٹھا کریں، لہٰذا ایک ہی نام میں دو مختلف الفاظ کو استعمال کیا جائے گا،تو یہاں "ہریانہ" کے لفظی معنی "سبز جنگل" کے بنتے ہیں۔ یعنی سرسبز و شاداب اور ہرا بھر علاقہ۔

قیام[ترمیم]

ہریانہ ریاست 1 نومبر 1966ء کو لسانی و ثقافتی بنیادوں پر قائم ہوئی جو پہلے سابقہ بھارتی ریاست مشرقی پنجاب کا حصہ تھی۔

آبادیات[ترمیم]

2011ء کی مردم شماری کے مطابق 87.45 فیصد لوگ ہندو مت کے پیروکار ہیں۔ غیر ہندو اقلیت میں مسلمان 7.03 فیصد، سکھ 4.90 فیصد ہیں۔[8]


Circle frame.svg

ہریانہ کے مذاہب (2011)

  ہندو مت (87.45%)
  اسلام (7.02%)
  سکھ مت (4.90%)
  مسیحیت (0.19%)
  جین مت (0.2%)
  بدھ مت (0.02%)
  دیگر اور الحاد (0.2%)
Haryana in India (disputed hatched).svg

ذیلی تقسیم[ترمیم]

ریاست ہریانہ کے 22 اضلاع نام مندرجہ ذیل ہیں:

اضلاع

بیرونی روابط[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1.   ویکی ڈیٹا پر (P1566) کی خاصیت میں تبدیلی کریں"صفحہ ہریانہ في GeoNames ID". GeoNames ID. اخذ شدہ بتاریخ 26 اکتوبر 2020ء. 
  2.   ویکی ڈیٹا پر (P982) کی خاصیت میں تبدیلی کریں "صفحہ ہریانہ في ميوزك برينز.". MusicBrainz area ID. اخذ شدہ بتاریخ 26 اکتوبر 2020ء. 
  3. ^ ا ب http://www.censusindia.gov.in/pca/DDW_PCA0000_2011_Indiastatedist.xlsx
  4. ربط : میوزک برائنز ایریا آئی ڈی  — ناشر: MetaBrainz Foundation
  5. An Early Attestation of the Toponym Ḍhillī, by Richard J. Cohen, Journal of the American Oriental Society, 1989, pp. 513–519
    हरियाणए देसे असंखगाम, गामियण जणि अणवरथ काम|
    परचक्क विहट्टणु सिरिसंघट्टणु, जो सुरव इणा परिगणियं|
    रिउ रुहिरावट्टणु बिउलु पवट्टणु, ढिल्ली नामेण जि भणियं|
    Translation: there are countless villages in Haryana country. The villagers there work hard. They don't accept domination of others, and are experts in making the blood of their enemies flow. Indra himself praises this country. The capital of this country is Dhilli.
  6. Haryana Britannica Online Encyclopedia
  7. Bijender K Punia (1993). Tourism management: problems and prospects. APH. صفحہ 18. ISBN 978-81-7024-643-5. 
  8. "Population by religion community - 2011". Census of India, 2011. The Registrar General & Census Commissioner, India. 25 اگست 2015 میں اصل سے آرکائیو شدہ.