روہڑی-چمن ریلوے لائن

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
روہڑی-چمن ریلوے لائن
Rohri–Chaman Railway Line
مجموعی جائزہ
دیگر ناممین لائن 3
ایم ایل-3[1]
ٹرمینلروہڑی جنکشن ریلوے اسٹیشن
چمن ریلوے اسٹیشن
سٹیشن184
لائن نمبر3
آپریشن
افتتاح6 اکتوبر 1879ء (1879ء-10-06)
مالکپاکستان ریلویز
آپریٹرپاکستان ریلویز
تکنیکی
لائن کی لمبائی523 کلومیٹر (325 میل)
ٹریک گیج1,676 ملی میٹر (5 فٹ)
آپریٹنگ رفتار105 کلومیٹر/گھنٹہ (65 میل فی گھنٹہ) (موجودہ)
160 کلومیٹر/گھنٹہ (99 میل فی گھنٹہ) (مجوزہ)[2]
روٹ نقشہ

کلومیٹر
0 روہڑی جنکشن ریلوے اسٹیشن
5 سکھر جنکشن ریلوے اسٹیشن
11 آرائیں روڈ ریلوے اسٹیشن
18 گوسڑجی ریلوے اسٹیشن
33 حبیب کوٹ جنکشن ریلوے اسٹیشن
43 شکارپور ریلوے اسٹیشن
57 سلطان کوٹ ریلوے اسٹیشن
72 آباد ریلوے اسٹیشن
84 جیکب آباد جنکشن ریلوے اسٹیشن
97 ڈیرہ اللہ يار ریلوے اسٹیشن
101 منگولی ریلوے اسٹیشن
121 ڈیرہ مراد جمالی ریلوے اسٹیشن
148 نٹال ریلوے اسٹیشن
175 بختیار آباد ڈومکی ریلوے اسٹیشن
187 دمبولی ریلوے اسٹیشن
210 دنگرا ریلوے اسٹیشن
231 پیراک ریلوے اسٹیشن
240 سبی ریلوے اسٹیشن
257 مشکاف ریلوے اسٹیشن
266 پھیرو کنری ریلوے اسٹیشن
281 پانیر ریلوے اسٹیشن
290 پیشی ریلوے اسٹیشن
303 آب گم ریلوے اسٹیشن
315 مچھ ریلوے اسٹیشن
329 ہیروک ریلوے اسٹیشن
333 دوزن ریلوے اسٹیشن
341 کول پور ریلوے اسٹیشن
357 سپیزنڈ جنکشن ریلوے اسٹیشن
371 سر آب ریلوے اسٹیشن
381 کوئٹہ ریلوے اسٹیشن
389 شیخ ماندہ ریلوے اسٹیشن
393 بیلیلی ریلوے اسٹیشن
404 کچلاک ریلوے اسٹیشن
414 بوستان جنکشن ریلوے اسٹیشن
427 یارو ریلوے اسٹیشن
463 گلستان ریلوے اسٹیشن
477 قلعہ عبداللہ ریلوے اسٹیشن
493 شیلاباغ ریلوے اسٹیشن
523 چمن ریلوے اسٹیشن

روہڑی-چمن ریلوے لائن (انگریزی: Rohri–Chaman Railway Line) جسے مرکزی لائن 3 (Main Line 3) یا مخفف ایم ایل-3 (ML-3) کے طور پر بھی جانا جاتا ہے، پاکستان کی چار مرکزی لائنوں میں سے ایک ہے جو پاکستان ریلویز کے زیر انتظام ہے۔ یہ روہڑی جنکشن ریلوے اسٹیشن سے شروع ہو کر چمن ریلوے اسٹیشن پر ختم ہوتی ہے۔ اس ریلوے لائن کی کل لمبائی 523 کلومیٹر (325 میل) ہے۔ روہڑی جنکشن ریلوے اسٹیشن سے چمن ریلوے اسٹیشن تک اس پر 35 ریلوے اسٹیشن واقع ہیں۔[3]

اسٹیشن[ترمیم]

3
The unnamed parameter 2= is no longer supported. Please see the documentation for {{columns-list}}.

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Amer Sial (August 17, 2016). "Pak Railways poised to get massive funding from CPEC and CAREC". Pakistan Today (بزبان انگریزی). August 18, 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 18 اگست 2016. 
  2. Pakistan Railways: A Performance Analysis - Citizens’ Periodic Reports on the Performance of State Institutions (PDF) (بزبان انگریزی). Islamabad: PILDAT. December 2015. صفحہ 21. ISBN 978-969-558-589-4. January 24, 2016 میں اصل (PDF) سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ August 18, 2016. 
  3. Pakistan Railways Time & Fare Table 2015 (PDF) (بزبان انگریزی and Urdu) (ایڈیشن October 2015). Pakistan: National Book Foundation. صفحات 94–99. August 18, 2016 میں اصل (PDF) سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 18 اگست 2016.