خواجہ نجم الدین احمد مشتاق

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

آپکا نام احمد اور لقب مودود تھا ولادت 492 ہجری اور وفات 577 ہجری آپ کا ایک اور لقب مشتاق آپ کو حضرت محمد صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کی طرف سے ایک غیبی آواز کے ذریعےدی گئی آپ کا مزار اقدس چشت شریف میں ہے خواجہ نجم الدین احمد مشتاق خواجہ قطب الدین مودود چشتی رحمۃ اللہ علیہ (430ہجری  527 ہجری) کے فرزند تھے اور خواجہ قطب الدین مودود چشتی خواجہ ابو یوسف ناصر الدین چشتی رحمۃ اللہ علیہ (375ہجری  459 ہجری) کے فرزند تھے - [1]

مقالات بہ سلسلۂ

تصوف

Maghribi Kufic.jpg

تاریخی پس منظر[ترمیم]

تاریخ[ترمیم]

حضرت خواجہ مودود چشتی رحمۃ اللہ علیہ کے ایک ہی فرزند تھے جن کا نام  حضرت خواجہ نجم الدین احمد مشتاق  تھا - خواجہ مودود چشتی رحمۃ اللہ علیہ کی نسل انہی سے چل رہی ہے، حضرت خواجہ مودود چشتی رحمۃ اللہ علیہ کے وفات کے بعد خواجہ شریف زندنی آپ کے خلیفہ مقرر ہوئے اور یہ سلسلہ طریقت چشتیہ کے نام سے ہندوستان منتقل ہوا -

سلسلہ طریقت چشتیہ[ترمیم]

حضرت خواجہ مودود چشتی رحمۃ اللہ علیہ کے وفات کے بعد  حضرت خواجہ نجم الدین احمد مشتاق  رحمۃ اللہ علیہ انکے سجادہ  نشین ہوئے , اور مسند خلافت و ارشاد پر متمکن ہوئے, اس طرح ایک اور سلسلہ بنام طریقت مودودیہ متعارف ہوا جو بذریعہ آپ کے اولاد کے 800 ہجری میں بلوچستان منتقل ہوا -

طریقت مودودیہ[ترمیم]

حالات زندگی[ترمیم]

حضرت خواجہ نجم الدین احمد مشتاق رحمۃ اللہ علیہ کے تین بیٹے تھے،  جن کے نام  خواجہ بہاو الدین محمود   خواجہ نظام الدین علی  اور خواجہ رکن الدین حسین تھے، حضرت خواجہ نجم الدین احمد مشتاق رحمۃ اللہ علیہ نے ان تینوں میں سے کسی کو اپنا جانشین نہیں بنایا، خواجہ محمود بڑے صاحبزادے تھے اور سمجھتے تھے کہ یہ حق انکا ہے،  اور خواجہ نظام الدین علی اپنی اعلٰی علمی حیثیت کی وجہ سے سمجھتے تھے کہ انکو یہ رتبہ ملنا چا ہئے،  جبکہ خواجہ رکن الدین سب سے چھوٹے اور خاموش طبیعت کے مالک تھے اور مریدین کی خاطر مدارات میں لگے رہتے تھے،    خواجہ نجم الدین احمد مشتاق رحمۃاللہ علیہ کے انتقال کے بعد آخر کار خواجہ رکن الدین حسین  رحمۃ اللہ علیہ کو اتفاق رائے سے جانشین مقرر کیا گیا، حضرت خواجہ نجم الدین احمد مشتاق رحمۃ اللہ علیہ  اپنے والد حضرت خواجہ قطب الدین مودود چشتی کے مرید تھے، اپنے وقت کے بڑے مشائخ میں سے تھے، آپ کو علوم ظاہری اور باطنی پر پوری مہارت اور عبور حاصل تھی، ایک رات خواب میں حضرت محمد صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے آپ سے فرمایا کہ اے احمد اگر تو ہمارا مشتاق ہے تو ہم بھی تمہارے مشتاق ہیں یہ بشارت پاتے ہی صبح آپ چپکے سے زیارت حریمین شریفین کے لیے روانہ ہوگئے، آپ نے اس حالت میں سفر کیا کہ کسی نے آپ کو نہیں پہچانا ارکان حج ادا کرنے کے بعد آپ فوراً مدینہ منورہ پہنچے اور چھ ماہ تک وہاں مقیم رہے، آپکے طویل قیام کی وجہ سے روضہ اقدس کے مجاور تنگ آگئے اور آپ کو تکلیف دینے کے درپے ہو گئے، ایک دن روضہ اطہر سے یہ آواز آئی اور یہ سب نے سنی کہ تم لوگ جسے ستا رہے ہو وہ ہمارے مشتاق  ہیں، اس واقع کے بعد آپکا لقب مشتاق پڑا، مدینہ شریف سے واپسی پر بغداد آکر حضرت شیخ شہاب الدین سہروردی کے خانقاہ میں ٹھہرے حضرت شیخ شہاب الدین نے آپ کو بڑے احترام سے رکھا، اور آپ کی خوب خاطرمدارات کی،  حضرت خواجہ نجم الدین احمد مشتاق  رحمۃ اللہ علیہ  حضرت شیخ شہاب الدین سہروردی  رحمتہ اللہ علیہ کے ہمعصر تھے جو سلسلہ عالیہ سہروردیہ بانی تھے،  خلیفہ بغداد نے ایک خواب دیکھا ،اس لیے اسنے آپ کو اپنے محل میں دعوت دی، جب آپ وہاں پہنچے تو خلیفہ نےآپ کی بڑی تعظیم کی اور تحائف پیش کئے، آپ نے خلیفہ کو نہایت مؤثر پند و نصیحت کئے، رخصت کرتے ہوۓ آپ کو خلیفہ نے جو تحائف دیئے آپ نے انکی دلجوئی کی خاطر وہ لے ليے اور محل سے باہر آکر سارے فقیروں میں تقسیم کر دیئے اور خراسان کی طرف روانہ ہو گئے، آپ کے کمالات کرامات بے شمار ہیں، آپکا سجادہ نشین آج تک چشت کی مسند پر متمکن ہے - [10]

نسب[ترمیم]

شجرہ جات[ترمیم]

شجرہ نسب خواجہ نجم الدین احمد[ترمیم]

سلسلہ اولاد خواجہ نجم الدین احمد[ترمیم]

حوالہ جات بیرون[ترمیم]

  1. ^ [1] تذكار يكپاسى
  2. ^ [2] خواجہ قطب الدین مودود چشتی
  3. ^ [3] خواجہ شریف زند نی
  4. ^ [4] خواجہ عثمان ہارونی
  5. ^ [5] خواجہ معین الدین چشتی
  6. ^ [6] خواجہ قطب الدین بختیار کاکی
  7. ^ [7] بابا فرید گنج شکر
  8. ^ [8] نظام الدین اولیاء
  9. ^ [9] نصیرالدین چراغ دہلوی
  10. ^ [10] تذكار يكپاسى
  11. ^ شجرہ موروثی سادات کرانی

حوالہ کتب[ترمیم]

Referenced from Book Khwaajah Maudood Chisti
  • [11] Chishti Tariqa
  • [12] Soofie(Sufi)
  • [13] Chishti Order
  • [14] خواجگان چشت سيرالاقطاب: زندگي نامہ هائے مشايخ چشتيہ
  • [15]طريقہ چشتيہ در ہند و پاكستان و خدمات پيرواناين طريقہ بہ فرہنگ ہائی اسلامى و ايرانى‎
  • ( خزینہ الاصفیاء: مفتی غلام سرور لاہوری رحمۃ اللہ علیہ )
  • تذکرہ سید مودودی ادارہ معارف اسلامی لاہور
  • سیر الاولیاء
  • مرا ۃ الاسرار
  • تاریخ مشائخ چشت
  • سفینہ العارفین
  • تذکرہ غوث و قطب
  • شجرہ موروثی سادات کرانی