سید صبغت اللہ شاہ راشدی اول

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں

سید صبغت اللہ شاہ راشدی اول ( سندھی) تھے۔ آپ سید محمد راشد شاہ کے سب سےبڑے بیٹےتھے۔جبکہ چھٹے اور آٹھویں پیر پاگارا کا نام بھی سیدصبغت اللہ شاہ راشدی ہے۔

علمی شغف[ترمیم]

آپ نے تعلیم و تربیت اپنےوالدِ محترم سید محمد راشد شاہ سےہی حاصل کی۔آپ بہت بڑے علمی کتب خانہ کے بھی مالک تھے جس میں نادر و نایاب کتابیں جمع کی تھیں۔سید احمد شہید کے نواسے سید حمید الدین ان کے کتب خانہ کے بارے میں فرماتے ہیں کہ

ان کا کتب خانہ بڑا عجیب وغریب تھا سلاطین وامراء کے پاس بھی ایسا کتب خانہ نہ ہوگا پندرہ ہزار جلد کتب معتبرہ اس میں موجود ہیں۔ سو دیوان فارسی کے ایرانی خط میں مطلا، پینسٹھ جلدیں معتبر تفسیروں کی ،شاہنامہ فردوسی کے پانچ نسخے جن میں سے تین مصور ومطلا تھے۔ حدیث کی تمام معتبر کتابیں مع شروح ، جامع الاصول تیسر الوصول ،احیاء العلوم اورفتوحات مکیہ کے تین تین نسخے اور سب جلدیں شاہانہ ہیں۔[1]

وفات[ترمیم]

سید صبغت اللہ شاہ کی وفات 1246ھ میں ہوئی۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. تاریخ دعوت وعزیمت ۔ سید ابو الحسن علی ندوی ، ص : 476 حصہ ششم