پاکستان کے عام انتخابات 1985ء

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
State emblem of Pakistan.svg
سلسلہ مضامین
سیاست و حکومت
پاکستان
آئین

1985 انتخابات پاکستان کا تیسرا انتخابات تھا۔اس انتخابات کا مقصد نے قومی اسمبلی کے رکنوں کو کے لیے 29 فروری 1985 میں. یہ انتخابات ضیاء الحق حکومت میں دوران تھا آئین تجدید کیا کے بعد.

تقریبا 1300 نے امیدوار انتخابات مقابلہ کیا، جس کے پاس پارٹیوں نے مقابلہ کیا نہیں تھا۔ سب امیدواروں کو اس کے کاغذوں کا نامزدگی 50 رجسٹرڈ ووٹرز ان کا انتخابات ی حلقہ سے دستخط کرنا تھے۔ ضیاء الحق نے بہت زیادہ امیدوار نااہل کیے، ضیاء الحق نے زیادہ امیدوار نااہل کیے اور انتخابات ریگ کیا کے لیے تعارف کیا زیادہ ترمیم 1962 سیاسی پارٹیوں قانون کو. تحریک بحالی جمہوریت کا جواب نے انتخابات بائیکاٹ کیا تھا۔ تحریک بحالی جمہوریت نے فوج حکومت کا زوال همدردی کیا تھا۔

ووٹر کے ٹرن آؤٹ 52.93% تھے، جو دو سابق انتخابات سے چھوٹا تھا۔ زیادہ پارلیمنٹیرین ضیاالحق کے همدردیاں تھے۔ نیا حکومت نے بنایا، محمّد خان جونیجو کا قیادت. انتخابات کے بعد، وزیر عظام جونیجو اور اس کے حامیوں نے پاکستان مسلم لیگ بنایا تھا۔

تحریک بحالی جمہوریت نے غلطی بنایا، کیونکے اس نے سوچیے پاکستانی عوام نے انتخابات بائیکاٹ همدردی کیا، لکن آدھا پاکستانوں نے رائے دیتے.


حوالہ جات[ترمیم]