حکومت بلوچستان

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
حکومت بلوچستان
Coat of arms of Balochistan.svg
صوبائی حکومت کا نشانیہ
Flag of Balochistan.svg
صوبائی حکومت کا پرچم
حکومتی نشست کوئٹہ
قانون سازی
اسمبلی
اسپیکر راحیلہ حمید درانی
اراکین اسمبلی 65
انتظامی حکومت
گورنر محمد خان اچکزئی
وزیر اعلیٰ جام کمال خان
چیف سکٹری اورنگزیب حق
عدلیہ
عدالتِ عالیہ بلوچستان عدالت عالیہ
چیف جسٹس جسٹس طاہرہ صفدر
State emblem of Pakistan.svg
مضامین بسلسلہ
سیاست و حکومت
پاکستان
آئین

حکومت بلوچستان، پاکستان کے صوبہ بلوچستان کی انتظامی امور کی ذمہ دار ہے جو رقبے کے لحاظ سے پاکستان کا سب سے بڑا صوبہ ہے۔ حکومت بلوچستان کے مرکزی دفاتر، صوبائی دارلحکومت کوئٹہ میں واقع ہیں۔ صوبہ کا آئینی سربراہ گورنر ہے جس کی نامزدگی صدر پاکستان اپنے آئینی اختیارات کے تحت کرتے ہیں۔ حکومت بلوچستان کا سربراہ وزیر اعلیٰ ہوتا ہے جو بلوچستان کی قانون ساز اسمبلی میں منتخب کیا جاتا ہے۔
پاکستان کے صوبہ بلوچستان میں آبادی کا بڑا حصہ تاریخی قبیلہ بلوچ یا بلوچستان سے تعلق رکھتا ہے، اسی لیے صوبہ کا نام بلوچستان داخل ہے۔ صوبہ کے ہمسایوں میں مغربی سرحد پر ایرانی بلوچستان، شمال کی جانب افغانستان اور وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقہ جات جبکہ مشرق کی جانب صوبہ سندھ اور پنجاب واقع ہیں۔ جنوب میں بحیرہ عرب ہے۔ بلوچستان کی بڑی زبانیں بلوچی، پشتو، براہوی اور فارسی ہیں۔2011ئء کے اعدادوشمار کے مطابق صوبہ کی کل آبادی 79 لاکھ ہے۔

صوبہ بلوچستان 6 ڈویژن اور 32 اضلاع پر مشتمل ہے۔ جبکہ یونین کونسلوں کی تعداد86 ہے۔ صوبائی اسمبلی میں اراکین کی کل تعداد65 ہے جن میں 51 جنرل سیٹیں ،3 اقلیتی اراکین اور 11خواتین کی مخصوص نشستیں ہیں۔

عہدیدار[ترمیم]

حکومت بلوچستان کے محکمہ جات[ترمیم]

حکومت بلوچستان چھبیس محکمہ جات اور ان کے متعلقہ دفاتر پر مشتمل ہے اور ہر محکمہ کی انتظامی سربراہی صوبائی سیکرٹری کرتا ہے۔ صوبائی سیکرٹریوں کی سربراہی صوبائی چیف سیکرٹری کرتا ہے۔ حالیہ دور حکومت میں کل سینتالیس وزارتیں ہیں جو چھبیس محکمہ جات کے انتظامی امور کی آئینی ذمہ دار ہیں۔


مزید دیکھیے[ترمیم]

بیرونی روابط[ترمیم]