سنی دیول

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
سنی دیول
Sunny Deol
سنی دیول 2012
سنی دیول 2012

معلومات شخصیت
پیدائش اکتوبر 1957 (عمر  سال)[1]
نئی دہلی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
رہائش ممبئی، مہاراشٹر، بھارت
شہریت Flag of India.svg بھارت  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
نسل پنجابی لوگ
جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں سیاسی جماعت کی رکنیت (P102) ویکی ڈیٹا پر
زوجہ پوجا دیول
اولاد کرن دیول
راج ویر دیول
والدین دھرمیندر
پرکاش کور
والد دھرمیندر  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں والد (P22) ویکی ڈیٹا پر
بہن/بھائی
عملی زندگی
مادر علمی متھی بائی کالج  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تعلیم از (P69) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ اداکار، ڈائریکٹر، پروڈیوسر
پیشہ ورانہ زبان ہندی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں زبانیں (P1412) ویکی ڈیٹا پر
دور فعالیت 1983 – تا حال
اعزازات
فلم فیئر اعزاز 
قومی فلم اعزاز برائے بہترین معاون اداکار  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں وصول کردہ اعزازات (P166) ویکی ڈیٹا پر
IMDb logo.svg
IMDB پر صفحہ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں آئی ایم ڈی بی - آئی ڈی (P345) ویکی ڈیٹا پر

سنی دیول (Sunny Deol) پیدائشی نام اجے سنگھ دیول (Ajay Singh Deol) ایک بھارتی فلم اداکار، فلمی ہدایت کار پروڈیوسر اور سیاست دان ہیں۔ وہ گورداس پور لوک سبھا حلقہ سے رکن پارلیمان ہیں۔ بالی وڈ کے ساتھ ان کا 35 سال کا رشتہ ہے جہاں انہوں نے 100 سے زیادہ فلموں میں کام کیا ہے۔ انہیں دو مرتبہ قومی فلم اعزازات (بھارت) سے نوازا گیا اور دو مرتبہ فلم فیئر اعزازات سے بھی نوازا گیا۔ ان کی پہلی فلم امریتا سنگھ کے ساتھ 1982ء میں بیتاب آئی۔ یہ امریتا کی بھی پہلی فلم تھی۔ وہ اس فلم کے لیے فلم فیئر اعزاز برائے بہترین اداکار کے نامزد ہوئے۔[3] اس کے بعد جیسے ان کی زندگی بہار آگئی اور 1980ء اور 1990ء کی دہائی میں انہوں نے ایک کے بعد ایک بہترین فلمیں دیں۔ فلم دل لگی سے انہوں نے ہدایتکاری کا آغاز کیا۔ ان کی بہترین فلموں میں؛

  • منزل منزل (1984ء)
  • سویرے والی گاڑی (1986)
  • سلطنت (1986ء)
  • ڈکیت (1987ء)
  • یتیم (1988ء)
  • ویرتا (1883ء)
  • امتحان (1994ء)
  • گھاتک (1996ء)
  • سلاخیں (1998ء) اور
  • فرض(2001ء) شامل ہیں۔

ابتدائی زندگی[ترمیم]

ان کی ولادت 19 اکتوبر 1956ء کو سہنیوال، پنجاب، بھارت کے ایک گاؤں میں ہوئی۔ ان کے والد بالی ووڈ کے مشہور اداکار دھرمیندر ہیں۔ والدہ کا نام پرکاش کور ہے۔ ان کا ایک بھائی بابی دیول ہے جو ایک زمانہ میں مشہور اداکار تھا۔ دو بہنیں ویجےتا اور اجیتا ہیں جو کالیفورنیا میں مقیم ہیں۔ ان کی سوتیلی ماں ہیما مالنی ہیں۔[4] جن سے سنی دو سوتیلی بہنیں ہیں، ایشا دیول اور آشا دیول]]۔[5]

بالی ووڈ[ترمیم]

فلمی دنیا میں انہیں ایک غصہ ور اداکار کے طور پر جانا جاتا ہے جو بدعنوانی،ظلم اور غنڈہ گردی کے خلاف لڑتا ہے۔ وہ وطن پرست اداکار کے طور پر بھی مشہور ہیں۔ ان کے علاوہ انہوں نے رومانی فلموں میں بھی کام کیا ہے۔ ان کی پہلی بیتاب ایک رومانی فلم تھی جس میں ان کے کام کو کافی سراہا گیا۔1985ء میں انہوں نے راہل روائی کے ساتھ ارجن میں کام کیا۔ فلم سلطنت میں اپنے والد کے ساتھ نطر آئے۔ یہ ایک ایکشن فلم تھی۔ اس کے بعد فلموں کی جھڑی سی لگ گئی اور آئندہ چند برسوں میں انہوں نے ڈکیت، یتیم، پاپ کی دنیا، تریدیو اور چالباز جیسی فلمیں کیں۔ 1990ء میں ان کی فلم گھایل بہت مشہور ہوئی جس کے لیے انہیں فلم فیئر اعزاز برائے بہترین اداکار کا اعزاز ملا۔ 1992ء تا 1997ء انہوں نے یکے بعد دیگرے ہٹ فلمیں دیں جیسے لٹیرے، ڈر، جیت، گھاتک، بارڈر اور ضدی۔ 1999ء میں انہوں نے ہدایتکاری کی شروعات کی اور ان کی پہلی فلم دل لگی تھی جس میں ان کے بھائی اور ارمیلا ماتونڈکر نے اداکاری کی۔[6] 2001ء میں انل شرما کی ہدایتکاری میں انہوں غدر (فلم) میں کام کیا جو بہت بڑی ہٹ چابت ہوئی۔ اس کے بعد 2003ء میں دی ہیرو:ایک جاسوس کی داستان عشق منظر عام پر آئی جس میں پریتی زنٹا اور پریانکا چوپڑہ بھی تھیں۔[7] یہ اس وقت کی سب سے مہنگی فلم تھی اور سال کی تیسری زیادہ کمائی کرنے والی فلم بنی۔[8][9] اپنے (فلم) میں وہ اپنے والد اور بھائی کے ساتھ نظر آئے۔[10] اس کے بعد یملا پگلا دیوانا میں بھی سب ساتھ دکھے۔[11][12] انہوں نے ایک اینیمیشن فلم (بھیم) کے لیے اپنی آواز دی۔ حالیہ دنوں میں ان کی فلمیں بھیا جی سپر ہٹ، گھایل ونس اگین، پوستر بائز، موہلہ اسی آئیں۔ 2019ء میں اپنے بیٹے کرن دیول کے لیے وہ پل پل دل کے پاس ڈائیریکٹ کریں گے۔

ذاتی زندگی[ترمیم]

سنی دیول کی شادی پوجا دیول سے ہوئی۔ ان کے دو بیٹے ہیں؛ کرن اور راجویر، کرن یملا پگلا دیوانا میں اسسٹنٹ ڈائریکٹر تھے۔ وہ پل پل دل کے پاس فلم میں اپنی اداکاری کی شروعات کرنے جا رہے ہیں۔

سیاسی سفر[ترمیم]

سنی دیول نے گورداس پور لوک سبھا حلقہ سے 82,459 ووٹوں کے فرق سے جیت حاصل کی۔[13][14] انہوں نے 23 اپریل 2019ء کو بھارتیہ جنتا پارٹی میں شمولیت اختیار کی اور بھارت کے عام انتخابات، 2019ء میں گورداس پور لوک سبھا حلقہ سے انتخاب میں حصہ لیا۔[15]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "'In my head I am still 25,' says Sunny Deol"۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 جون 2015۔
  2. "In my 30-year career, I have spent five years in bed due to my backache: Sunny Deol"۔ The Times Of India۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 11 فروری 2013۔ |archiveurl= اور |archive-url= ایک سے زائد مرتبہ درج ہے (معاونت); |archivedate= اور |archive-date= ایک سے زائد مرتبہ درج ہے (معاونت)
  3. "The Nominations – 1982"۔ filmfareawards.indiatimes.com۔ مورخہ 8 جولائی 2012 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 دسمبر 2011۔
  4. "He's like my teddy bear"۔ hindustantimes۔ مورخہ 25 جنوری 2013 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 13 جولائی 2011۔
  5. "Sunny Deol pawan"۔ starboxoffice۔ مورخہ 23 اپریل 2011 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 13 جولائی 2011۔
  6. "Box Office 1988"۔ Box Office India۔ مورخہ 31 جنوری 2009 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 دسمبر 2011۔
  7. "third highest grosser"۔ Box Office India۔ مورخہ 25 مئی 2012 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 جون 2011۔
  8. "The Hero stunt most exacting, says Sunny Deol"۔ Times of India۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 دسمبر 2011۔
  9. "Box Office 2003"۔ www.boxofficeindia.com۔ مورخہ 25 مئی 2012 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 دسمبر 2011۔
  10. "Apne"۔ Times of India۔ مورخہ 8 جولائی 2012 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 جون 2011۔
  11. "Top Grossers 2010–2011 OVERSEAS"۔ Boxofficeindia.Com۔ اخذ شدہ بتاریخ 30 جون 2011۔
  12. "Top Hits"۔ مورخہ 4 جون 2013 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 30 جون 2011۔
  13. "From Sunny Deol to Urmila Matondkar, here's how star candidates fared in Lok Sabha Polls- News Nation"۔ https://www.newsnation.in (انگریزی زبان میں)۔ اخذ شدہ بتاریخ 2019-05-24۔ External link in |website= (معاونت)
  14. "Actor Sunny Deol wins the Lok Sabha Elections 2019 by 82,459 votes – Times of India"۔ The Times of India (انگریزی زبان میں)۔ اخذ شدہ بتاریخ 2019-05-24۔
  15. "BJP fields Sunny Deol from Gurdaspur, Kirron Kher from Chandigarh"۔ Times Now۔ اخذ شدہ بتاریخ 23 اپریل 2019۔

بیرونی روابط[ترمیم]