حمزہ حکیم زادہ نیازی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
حمزہ حکیم زادہ نیازی
Hamza Hakimzade Niyazi
Hamza Niyazi.jpg
پیدائش حمزہ حکیم زادہ نیازی
6 مارچ 1889(1889-03-06)
خوقند، روسی ترکستان، روسی سلطنت
وفات 18 مارچ 1929(1929-03-18)
شاه مردان، ازبک سوویت اشتراکی جمہوریہ، سوویت یونین
قلمی نام حمزہ حکیم زادہ نیازی
پیشہ مصنف، موسیقار، سیاسی کارکن
زبان ازبک، روسی
قومیت Flag of Uzbekistan.svg ازبکستان
نسل ازبک
اصناف شاعری، ڈراما، موسیقی، ناول
اہم اعزازات 1926ء - ازبک قومی مصنف

حمزہ حکیم زادہ نیازی (ازبک: Hamza Hakimzoda Niyoziy; روسی: Хамза Хакимзаде Ниязи) (پیدائش: 6 مارچ 1889ء - وفات: 18 مارچ 1929ء) ازبکستان کے عوامی مصنف، عظیم شاعر، ڈراما نویس، ناول نگار، موسیقار اور سیاسی کارکن تھے۔

حالات زندگی[ترمیم]

حمزہ حکیم زادہ نیازی 6 مارچ 1889ء کو خوقند، روسی ترکستان میں پیدا ہوئے۔ حمزہ حکیم زادہ نیازی نے عظیم اکتوبر انقلاب کے اور خانہ جنگی میں سرخ فوج کی فتوحات کے وجدانی گیت گائے۔ وہ ازبک شاعروں کی ایک پوری کہکشاں کے استاد تھے جس کے درخشندہ ستاروں میں ایبک، غفور غلام، اوئگون، میرتیمیر، شیخادزے، حمید علیم جان، سلطان جورا اور دوسرے خاص طور پر قابلِ ذکر ہیں۔ ان کی نظموں سے عوام نے جتنی محبت کی اتنی ہی طبقاتی دشمنوں نے ان سے نفرت کی۔ حمزہ کو بسماچیوں کے گرگوں نے غدارانہ گولی مار کر قتل کر دیا۔[1]

اعزازات[ترمیم]

وفات[ترمیم]

حمزہ حکیم زادہ نیازی 18 مارچ 1929ء کو ازبک سوویت اشتراکی جمہوریہ کے علاقے شاہ مردان میں انقلاب دشمن غداروں کے ہاتھوں قتل ہوا۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. موج ہوائے عصر، ظ انصاری، تقی حیدر، مطبع "رادوگا" اشاعت گھر، ماسکو، سوویت یونین، 1985ء ،ص175