روزنامہ جنگ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
روزنامہ جنگ
قسم روزنامہ
ہیئت اخبار
بانی میر خلیل الرحمٰن
ناشر جنگ گروپ آف پبلشرز
مدیر محمود شام
ایڈیٹر ان چیف میر شکیل الرحمٰن
آغاز 1939ء
زبان اردو
صدر دفتر کراچی
تعداد اشاعت 800,000
ساتھی اخبارات روزنامہ عوام، اخبار جہاں، The News
ویب سائٹ http://jang.com.pk/

روزنامہ جنگ پاکستان کا سب سے زیادہ چھپنے والا اردو اخبار ہے ۔اس کی روزانہ اشاعت تقریبا 8 لاکھ کاپی ہے (حوالہ درکار)

تاریخ[ترمیم]

19 روزنامہ جنگ میر خلیل الرحمن نے 1940ء میں دہلی سے شروع کیا۔اس وقت کی پیش نظربرصغیر کے مسلمانوں کے حق میں آواز بلند کرنا اور مسلم لیگ کی ترجمانی تھا۔1947ءمیں قیام پاکستان کے بعد کراچی کو دارلحکومت بنایا گیاجہاں ہوائی اڈے کے علاوہ بندرگاہ کی سہولت بھی موجود تھی کراچی ایک ابھرتا ہوا صنعتی شہر تھا جہاں اخبارات کو خوب فروغ حاصل ہوا ۔ دہلی کے تین مسلم اخباروں یعنی روزنامہ ڈان،روزنامہ جنگ اورروزنامہ انجام نے آزادی کے بعد اپنے دفاتر کراچی منتقل کئے۔کراچی منتقلی کے بعد جنگ اور انجام میں مقابلہ جاری رہا۔مقابلے کی اس دور میں یہ اخبارات جدید فنی مہارت اور تکنیک کو بروئے کار لائے۔ان کی رنگارنگ تحریروں اور خوبصورت طباعت کی وجہ سے قارئین میں اخبار بینی کا شوق بڑھا۔روزنامہ جنگ اور ڈان کی اشاعت میں اضافہ ہوا۔جبکہ انجام کی اشاعت اسکا ساتھ دینے سے قاصر رہی۔آج روزنامہ جنگ پاکستان کے بڑے شہروں لاہور، کراچی،راولپنڈی،اسلام آباد، کوئٹہ اور ملتان کے علاوہ برطانیہ کے شہر لندن سے بھی شائع ہوتا ہے جبکہ دیگر بڑے شہروں میں بیورو آفسز قائم ہیں۔

روزنامہ جنگ نے 11فروری 1991سے لاہور ،راولپنڈی اور کراچی سے بیک وقت انگریزی اخبار"THE NEWS"جاری کیا جو بین الاقوامی معیار کا اخبارہے ۔روزنامہ جنگ خبروں کے حصول میں ہمیشہ آگے رہتاہے۔ روزنامہ جنگ نے 1981میں کمپیوٹر کمپوزنگ متعارف کروائی جو اردو زبان کی ترقی کے لیے ایک انقلابی اقدام تھا ۔میر خلیل الرحمن کے بعد اب ان کے چھوٹے بیٹے میر شکیل الرحمن اخبار کے مالک ہیں جبکہ محمود شام ایڈیٹر ہیں۔

جنگ گروپ[ترمیم]

جنگ گروپ روزنامہ جنگ کے علاوہ مندرجہ ذیل اخبار و رسائل بھی شائع کرتا ہے۔

ٹی وی[ترمیم]

جنگ گروپ کے تحت جیو ٹی وی نیٹ ورک بھی کام کر رہا ہے۔

مزید[ترمیم]

بیرونی روابط[ترمیم]