صفحۂ اول

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
(Main Page سے رجوع مکرر)
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
ویکیپیڈیا میں خوش آمدید

منتخب مضمون

بہترین مضمون

Mohammad yousuf.jpg

محمد یوسف (سابقہ نام یوسف یوحنا؛ پیدائش: 27 اگست 1974ء) سابق پاکستانی کرکٹر ہیں۔ 2005ء میں قبول اسلام سے قبل، یوسف کا شمار پاکستان کرکٹ ٹیم کی طرف سے کھیلنے والے چند مسیحی کھلاڑیوں میں ہوتا تھا۔ غریب پس منظر سے تعلق رکھنے والے یوسف نے عمدہ بلے بازی کے باعث اپنی پہچان بنائی اور کرکٹ کی تاریخ میں کئی ریکارڈ اپنے نام کیے۔ یوسف نے اپنے ٹیسٹ کیریئر میں ساڑھے سات ہزار رنز، اور ایک روزہ کیریئر میں ساڑھے نو ہزار رنز بنائے۔ یوسف کو آئی سی سی کی جانب سے 2007ء کا بہترین ٹیسٹ کرکٹر بھی قرار دیا گیا۔ وہ کچھ عرصہ متنازع انڈین کرکٹ لیگ کا حصہ بھی رہے۔ 2009ء-2010ء میں پاکستانی کرکٹ ٹیم نے محمد یوسف کی قیادت میں آسٹریلیا کا دورہ کیا جہاں اسے شکست ہوئی۔ نتیجتاً پاکستان کرکٹ بورڈ نے تحقیقات کے بعد، 10 مارچ 2010ء کو محمد یوسف پر پاکستان کی جانب سے بین الاقوامی کرکٹ کھیلنے پر پابندی عائد کردی۔ بورڈ کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا کہ انھیں آئندہ ٹیم کے لیے منتخب نہیں کیا جائے گا کیونکہ انھوں نے ٹیم میں انضباطی مسائل اور اندرونی رسہ کشی کو جنم دیا ہے۔

اس پابندی کے رد عمل میں، محمد یوسف 29 مارچ 2010ء کو بین الاقوامی کرکٹ سے ریٹائر ہوگئے۔

حالیہ واقعات

حالیہ وفیات | زمرہ حالیہ وفیات: میر قاسم علی حنیف محمد شمیم آرا عبد الستار ایدھی محمد علی کلے

آج کا دن

آج: پير، 26 ستمبر 2016 عیسوی بمطابق 23 ذوالحجہ 1437 ہجری (UTC)

واقعات
  • 1947ء - قائد اعظم نے ولیکا ٹیکسٹائل ملز کا سنگ بنیاد رکھا۔
  • 1948ء - نوابزادہ لیاقت علی خان نے لاہور میں ایک تقریر میں بھارت کو دوستانہ تعلقات کی خواہش کا یقین دلایا۔
  • 1950ء - اوون ڈکسن نے سلامتی کونسل کو پیش کی گئی اپنی رپورٹ میں بتایا کہ بھارت مسئلہ کشمیر کی حل کی راہ میں رکاوٹیں ڈال رہا ہے۔
  • 1952ء - جسٹس ایم آر کیانی لاہور ہائی کورٹ کی ایڈیشنل جج مقرر ہوئے۔
  • 1954ء - پاکستان 40ہزار ٹن پٹ سن برآمد کرنے کی پوزیشن میں آگیا۔
  • 1955ء - حمید الحق چوہدری نے وزیر خارجہ کا حلف اٹھایا۔
  • 1955ء - غفار خان کو رہا کیا گیا۔
  • 1955ء - دستورساز اسمبلی کو ون یونٹ پر غور سے روکنے کی لیے چیف کورٹ میں درخواست دائر ہوئی۔
  • 1960ء - خان عبدالقیوم خان کو مارشل لاءکی تحت گرفتار کیا گیا۔
  • 1961ء - ڈیورنڈ پر پنڈت نہرو کی بیان پر پاکستان کابھارت سے شدید احتجاج۔
  • 1962ء - سہروردی نے 1956ءکا آئین بحال کرنے کی تجویز پیش کی۔
  • 1965ء - ایوب خان نے پاک فوج کی 94افسران اور جوانوں کو جنگ ستمبر میں بہادری دکھانے پر (عزیز بھٹی شہید کی لیے نشان حیدر سمیت دیگر) تمغوں اور اعزازات سے نوازا۔
  • 1967ء - عوامی جمہوریہ چین نے سائنس اور ٹیکنالوجی کی میدان میں پاکستان سے تعاون کا اعلان کیا۔
  • 1967ء - پاکستان کی اہم برآمدات پر یادگاری ڈاک ٹکٹ جاری ہوئے۔
  • 1969ء - ایوب خان اور مسلم لیگ کی دیگر چار عہدیداروں کی خلاف مغربی پاکستان ہائی کورٹ میں مقد مہ دائر ہوا۔
  • 1972ء - پروفیسر غلام مصطفیٰ سندھ یونیورسٹی کے وائس چانسلر مقر ر ہوئے۔
  • 1972ء - چاروں صوبائی گورنرز کانفرنس میں دریائے سندھ کا تقسیم آب فارمولہ طے ہوا۔
  • 1977ء - لاہور ہائی کورٹ نے لیاقت باغ فائرنگ کیس کا ریکارڈ طلب کیا۔
  • 1977ء - اسلامی نظریاتی کونسل کی تشکیل نو کی بعد جسٹس (ر) افضل چیمہ چیرمین مقرر ہوئے۔
  • 1982ء - پاکستان عالمی ادارہ برائے جوہری توانائی کے بورڈ آف گورنرز کا رکن بنا۔
  • 1983ء - لندن سے واپسی پر خان عبدالولی خا ن گرفتار ہوئے۔
  • 1986ء - سردار شیر باز مزاری نے این ڈی پی کی صدارت دوبارہ سنبھالی۔
  • 1990ء - پشاور ہائی کورٹ نے سرحد اسمبلی اور کابینہ بحال کی۔
  • 1990ء - سپریم کورٹ نے ہائی کورٹ کا فیصلہ معطل کیا۔
  • 1992ء - عبید اللہ بیگ نے پی ٹی وی سے استعفا دیا۔
  • 1992ء - لاہور سے روز نامہ خبریں جاری ہوا۔
  • 1994ء - کراچی میں شاہ فیصل کالونی اور ناتھا خان گوٹھ میں آپریشن کی دوران 202ہتھیار برآمد ہوئے۔
  • 1997ء - میر مرتضیٰ بھٹو کی صاحبزادی فاطمہ بھٹو کی شعری مجموعہ (Whisper of the Desert) کی کراچی میں تقریب رونمائی ہوئی۔
  • 2003ء - وزیر ریلوے غلام محمد مہر نے اسلام آباد میں گولڑہ کی مقام پر ریلوےہیریٹیج میوزیم کا افتتاح کیا۔
  • 2008ء - امریکا میں فرینڈز آف پاکستان کانفرنس منعقد ہوئی، پاکستان کو اقتصادی امداد فراہم کرنے کے کنسورشیم کے قیام پر اتفاق ہوا۔
  • 2011ء - سندھ ہائی کورٹ نے آفاق احمد کو رہا کرنے کا حکم دیا۔
  • 2011ء - موٹر وے پرکلر کہار کے مقام پر اسکول بس حادثے کا شکار ہوئی،37طلبہ ہلاک اور51زخمی ہوئے۔
  • 2012ء - ڈاکٹر شیریں مزاری نے تحریک انصاف کی رکنیت اور عہدے سے استعفا دیا۔
  • 2012ء - نئے بلدیاتی نظام کی خلاف سندھ کی مختلف اضلاع میں مکمل ہڑتال ہوئی۔
  • 2013ء - بدنظمی پر صوبائی وزیر سندھ اویس مظفر سے محکمہ صحت واپس لیاگیا۔
سالگرہ
  • 1876ء - سید غلام بھیک نیرنگ - رہنما تحریک پاکستان، ادیب
  • 1926ء - اصغر سودائی - شاعر، ماہر تعلیم
  • 1932ء - اسد محمد خان - افسانہ نگار
  • 1955ء - سرحد سندھی(عبدالر حمن مغل) - سندھی گلوکار
  • 1963ء - طاہر اسلم گورا - شاعر، نقاد
  • 1969ء - شاہد نواب - ڈراما نگار
  • 1977ء - فرحان عادل - ٹیسٹ کرکٹر
برسی
  • 1954ء - راحل ہو شیار پوری - شاعر
  • 1960ء - اسمٰعیل ابراہیم چندریگر - سابق وزیراعظم پاکستان
  • 1961ء - حاجی لق لق - صحافی، مزاح نگار
  • 1983ء - ولی محمد طوفان - پشتو کی ترقی پسند شاعر
  • 1983ء - میر عبدالصمد خان - اردو، پشتو ادیب
  • 1983ء - الحاج غلام حیدر جانباز - رہنما خاکسار تحریک
  • 1984ء - خواجہ غلام صادق - ماہر تعلیم
  • 1992ء - فضل حسین - گلوکار
  • 1994ء - جسٹس (ر) ملک غلام علی - تاسیسی رکن جماعت اسلامی
  • 1998ء - سفر علی بنگش - رہنما تحریک جعفریہ (قتل)
  • 2004ء - امجد فاروقی - پرویز مشرف پر قاتلانہ حملے کا ماسٹر مائنڈ
  • 2008ء - عاشق حسین عاشقی - نعت گو شاعر
  • 2010ء - ڈاکٹر محمود احمد غازی - عالم دین
  • 2010ء - فتح یاب علی خان - سیاستدان
  • 2010ء - آفاق شاہد - سیاستدان
  • 2013ء - نعمت علی رندھاوا - قانون دان ، رہنما مسلم لیگ (ن) لائرونگ(قتل)

ویکیپیڈیا کا حصہ بنیں!

ویکیپیڈیا ایک آزاد بین اللسانی دائرۃ المعارف ہے جس میں ہم سب مل جل کر لکھتے ہیں اور مل جل کر اس کو سنوارتے ہیں۔ ویکیپیڈیا کا آغاز جنوری سنہ 2001ء میں ہوا، جبکہ اردو ویکیپیڈیا کا اجرا جنوری سنہ 2004ء میں عمل میں آیا۔ فی الوقت اردو ویکیپیڈیا میں 107,990 مضامین موجود ہیں۔

آج کا لفظ

4
عموماً لکھا جاتا ہے: ہمارے آس پڑوس کے ممالک۔۔۔
لیکن بہتر ہو گا کہ اسے اس طرح لکھا جائے: ہمارے پاس پڑوس کے ممالک۔۔۔
اس لیے کہ: آس پڑوس ہندی کی تحریری زبان میں ہے، اب اردو میں بھی استعمال ہوتا ہے
لیکن تحریر کی حد تک پاس پڑوس بہتر اور آس پڑوس سے احتراز انسب ہے۔ (بحوالہ لغات روزمرہ)

آج کی بات

انگریزی سے نابلد اردو پڑھنے وسمجھنے والوں کے لیے جدید معلومات کا حصول ممکن بنائیے!

حالیہ موضوعات

ویکیپیڈیا صارفین

ویکیپیڈیا صارفین وہ افراد ہیں جو ویکیپیڈیا میں اپنا کھاتہ بناتے ہیں، اس میں تدوین وترمیم کا کام کرتے ہیں اور دائرۃ المعارف کے مفاد کے خاطر اس کی تنسیق وترتیب، زمرہ بندی اور مقالات نویسی میں کوشاں ہیں۔ اور ویکیپیڈیا کو ہر لحاظ سے ایک آزاد دائرۃ المعارف کی شکل دینے کے لیے باہمی تعاون فراہم کرتے ہیں۔

اردو ویکیپیڈیا صارفین کی تعداد تاحال 57,290 ہوچکی ہے۔ تاہم ان میں سے ایک قلیل تعداد ہی مستقل پابندی سے اس منصوبہ میں شریک ہے۔ اور قلیل تناسب ایسے صارفین کا بھی ہے جو پابندی سے اس منصوبہ کی ترقی اور مضامین کی اصلاح پر تبادلۂ خیال کرتے ہیں۔ اس کے برخلاف غیر اندراج شدہ ویکیپیڈیا صارفین کی ایک بڑی تعداد ہے جو اس منصوبہ میں وقتاً فوقتاً شریک ہوتی ہے۔

کیا آپ جانتے تھے؟

کیا آپ بھی لکھنا چاہتے ہیں؟

اردو ویکیپیڈیا پر اس وقت 107,990 مضامین موجود ہیں، اگر آپ بھی کسی موضوع پر مضمون لکھنا چاہتے ہیں تو پہلے اس صفحۂ تلاش پر جا کر عنوان لکھیے اور تلاش کرنے کی کوشش کریں، ممکن ہے آپ کا مطلوبہ مضمون پہلے سے موجود ہو۔ اگر مضمون موجود نہ ہو تو ذیل کے خانہ میں وہ عنوان درج کریں اور نیا مضمون تحریر کریں۔


ہمارے ساتھ سماجی ذرائع ابلاغ کی ویب سائٹ پر شامل ہوں: F icon.svg اور G 2014-04-24 22-48.png
(واضح رہے کہ یہ اردو ویکیپیڈیا کے غیر دفتری حلقے اور صارفین کی اپنی کوششیں ہیں)

ویکیپیڈیا صحت ومعتبریت کی کوئی ضمانت فراہم نہیں کرتا۔
ویکیمیڈیا فاؤنڈیشن ویکیپیڈیا پر موجود مواد کی صحت کا ذمہ دار نہیں ہے۔ ہر ترمیم کنندہ خود اپنی ترمیم کا ذمہ دار ہے۔
ہم سے رابطہ کریں مدد کی ضرورت ہے؟ ہم سے رابطہ کریں!