باطنیت

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
باطنیہ سے مغالطہ نہ کھائیں۔

باطنیت (انگریزی: Mysticism،عربی:روحانية، فارسی:عرفان،)جسے عرفان، بصیرت اور بسا اوقات از زمرہ جات تصوف بھی کہا جاتا ہے ایک اصطلاح مذہبی ، روحانی وعلوم ہائے سری ہے جو وجدانی کیفیات ،روحانی مشاہدات، کشف اسرار،تجربات روحانی، سیرہائے جسم لطیف اور ان تمام اعمال کو کفایت کرتی ہے جو بحث و استدلال اور تجربات مادی کی بجائے کشف و شہود سے متعلق ہیں۔ باطنیت کا تعلق کسی ایک خاص مذہب یا عقیدے سے نہیں اور نہ ہی اس کے لیے باقاعدہ لازم العمل دستور ہے، ہر مذہب اور عقیدے نے اس کی تشریح،توضیح ،تعریف اور قواعد اعمال اپنے طور پر طے کیے ہیں۔ اسی لیے ہم دیکھتے ہیں کہ آفاقی طور پر بین المذاہب و عقائد شرح و تسلیم باطنیت میں نظریات، اخلاقیات، خوارق، اساطیر، طلسمات اور جادو کو بھی شامل کیا گیا ہے۔ [1]اور یہ تسلیم کیا جاتا ہے کہ انسان وجدانی طور پر بصیرت کے ذریعے، جو عام فہم یا حسی شعور کی نسبت زیادہ فوری براہ راست طریقہ ہے، خدا یا مذہبی صداقت کو جان سکتا ہے؛ دل کی روشنی یا خاص انکشاف کے ذریعے اسرار وجود کے حل کی تلاش؛ انسانی تجربات سے خارج نظریات پر خواب نارویائی غور اور ظن وتخمین۔[2] غیر مذہبی یا کم مذہبی اقوام و ملل بھی مخصوص طریقوں اور مشقوں کے ذریعے پوشیدہ سچائیوں اور ماورائے عقل و خرد حقائق کو جاننے اور انسان کے کثافت سے لطافت میں گم ہوجانے پر یقین رکھا گیا ہے اور ایسے اعمال و افراد ان معاشروں میں بھی پائے گئے ہیں۔[3]

انگریزی اصطلاح مسٹیزم کا ماخذ قدیم یونان سے ہے جو تاریخی طور پر مختلف المعانی ہے۔[4][5] یونانی لفظ μύω سے بنی ایک اصطلاح جس کے معنی پوشیدہ کرنے یا بند کرنے کے ہیں۔[6] لفظ مسٹیزم قرون اولی اور وسطی کی مسیحی بائبلی صوفیانہ اور روحانی عبادات عام کے لیے بھی استعمال کیا گیا ہے۔[7] موجودہ جدید دور کی ابتدا سے مسٹیزم کی تشریح و معانی میں انتہائی وسعت پیدا ہوئی ہے اور اسے نہ صرف مختلف النوع عقائد و نظریات کے لیے استعمال کیا گیا ہے بلکہ اس کے ساتھ ذہن انسانی کی مافوق الفطرت کیفیتوں اور خارق العادات حالتوں سے بھی تعبیر کیا گیا ہے۔[8]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Dan Merkur, Mysticism, Encyclopædia Britannica
  2. ادارۂ فروغِ قومی زبان آن لائن قومی انگریزی اُردو لُغت
  3. "Gellman, Jerome, "Mysticism", The Stanford Encyclopedia of Philosophy (Summer 2011 Edition), Edward N. Zalta (ed.)". Plato.stanford.edu. Retrieved 2013-11-06
  4. Dan Merkur, Mysticism, Encyclopædia Britannica
  5. "Gellman, Jerome, "Mysticism", The Stanford Encyclopedia of Philosophy (Summer 2011 Edition), Edward N. Zalta (ed.)". Plato.stanford.edu. Retrieved 2013-11-06
  6. "Gellman, Jerome, "Mysticism", The Stanford Encyclopedia of Philosophy (Summer 2011 Edition), Edward N. Zalta (ed.)". Plato.stanford.edu. Retrieved 2013-11-06.
  7. King 2002, p. 15
  8. King 2002, pp. 17–18.