قرآنیت

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
قرآنیون
مذہب اسلام
ارکان ایمان اور شریعت کے لیے قرآن مصدر واحد
قریبی عقائد والے مذاہب معتزلہ · قدریہ
دنیا میں بھارت، مصر، سوڈان، جزائر،[1] ترکی، پاکستان

قرآنیت مسلمانوں میں ایک نظریاتی گروہ کا نام ہے جس کے نزدیک قرآن ہی اسلام میں سب سے قابلِ اعتبار اور تنہا ذریعہ ہے۔ ان کے نزدیک حدیث کی کوئی اہمیت نہی ہوتی۔ یہی بات اسے سنی، شیعہ اور اہل حدیث سے الگ کرتی ہے جو احادیث نبویﷺ کو بھی برابر اہمیت دیتے ہیں۔
اسلام کے نئے روشن خیال طبقے میں اس مسلک کے لوگوں کو بھی شامل سمجھا جاتا ہے۔ ان کے نزدیک اسلام ایک روشن خیالی اور جمہوری دنیا کے لیے تخلیق ہوا ہے۔ مسیحیت میں بھی اس طرح کے گروہ ہیں جس کی مثال سولا اسکرپٹیورا ہیں۔

شیعہ اہل قرآن[ترمیم]

قرآنیون یا قرآنیان فارسی میں ایک اصطلاح ہے جو ایران میں اہل قرآن[2] کے لیے استعمال ہوتا ہے۔لیکن ایران میں اس کے ساتھ لفظ شیعہ بھی ملا کر کے قرآنیون شیعہ یا قرآنیان شیعہ[3] بھی کہا جاتا ہے۔شیعہ اہل قرآن اور برصغیر کے اہل قرآن میں ایک فرق یہ ہے کہ شیعہ اہل قرآن جن کو کہا جاتا ہے وہ صرف ان احادیث کو نہیں مانتے جو خلاف قرآن یا خلاف عقل ہو،دیگر امور میں وہ احادیث کی حجیت کے قائل ہیں۔اہل تشیع سے ابوالفضل برقعی، حیدرعلی قلمداران، سیدمصطفی حسینی طباطبایی[4] وغیرہ کو اہل قرآن شمار کیا جاتا ہے، جب کہ اہل سنت میں محمد شحرور، احمد صبحی منصور اور مصطفی کمال المہدوی وغیرہ۔[5]

حوالہ جات[ترمیم]