شعوبیہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

شعوبیہ ایک خاص اصطلاح ہے جو عرب لوگ از راہ نفرت ہر اس مسلمان کے حق میں استعمال کیا کرتے تھے جو عربوں کی افضلیت کا اعتراف نہ کرتا ہو۔

نیز شعوبیہ وہ مسلمان ہیں جو بنی امیہ کے ظلم و جور کے زمانہ میں عربی تعصب کے خلاف سر بستہ ہوئے تھے۔ اور قرآنی تعلیمات کے مطابق عرب و عجم میں کسی فرق کے روادار نہیں تھے۔[1]

فرمانِ باری تعالٰیٰ ہے "

يَا أَيُّهَا النَّاسُ إِنَّا خَلَقْنَاكُمْ مِنْ ذَكَرٍ وَأُنْثَىٰ وَجَعَلْنَاكُمْ شُعُوبًا وَقَبَائِلَ لِتَعَارَفُوا إِنَّ أَكْرَمَكُمْ عِنْدَ اللَّهِ أَتْقَاكُمْ إِنَّ اللَّهَ عَلِيمٌ خَبِيرٌ
اے لوگو! ہم نے تم کو پیدا کیا

— 

اس آیت مبارکہ میں لفظ شعوب کی نسبت سے ان کو شعوبیہ کہا جاتا تھا۔

شعوبیہ تحریک نے مسلم و غیر مسلم ،عرب و عجم اور قریشی و غیر قریشی کی جو گرد اڑائی تھی ،اس نے مسلمانوں کے مابین چپقلش ہی تیز نہیں کی بلکہ اہل کتاب کے ضمن میں بھی ہماری وسعت نظری کو مسخ و مسموم کیا۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. منجد الاعلام طبع بیروت۔ آخری ایڈیشن صفحہ 289 کالم نمبر 2