اسلام میں ارتداد

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
اسلام اور دیگر مذاہب
تخطيط كلمة الإسلام

باب:اسلام

اسلام میں مُرتَد وہ شخص ہے جو اسلام کے بعد کسی ایسے امر کا انکار کرے جو ضروریات دین سے ہو یعنی زبان سے کلمہ کفر کہے جس میں تاویل صحیح کی گنجائش نہ ہو۔ یونہی بعض افعال بھی ایسے ہیں جن کے کرنے سے شخص کافر ہوجاتا ہے مثلاً بت کوسجدہ کرنا، مصحف (قرآن) شریف کو نجاست کی جگہ پھینک دینا۔[1]
ارتداد اس راستہ پر پلٹنے کو کہتے ہیں جس سے کوئی آیا ہو۔ لیکن مرتد کا لفظ کفر کی طرف لوٹنے کے ساتھ مختص ہوچکا ہے اور ارتداد عام ہے جو حالت کفر اور دونوں کی طرف لوٹنے پر بولا جاتا ہے۔ چنانچہ قرآن میں ہے : إِنَّ الَّذِينَ ارْتَدُّوا عَلى أَدْبارِهِمْ [ محمد/ 25] بیشک جو لوگ اپنی پشتوں پر لوٹ گئے۔ [2]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. بہارشریعت، ج 2، حصہ 9، ص 455
  2. مفردات القرآن:امام راغب اصفہانی