عثمان ثالث

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
خلیفہ
امیرالمومنین
سلطان سلطنت عثمانیہ
خادم الحرمین الشریفین
عثمان ثالث
Osman III
عثمان ثالث
عثمان ثالث

خلیفہ
امیرالمومنین
سلطان سلطنت عثمانیہ
خادم الحرمین الشریفین
دور حکومت 13 دسمبر 1754ء30 اکتوبر 1757ء
(مدتِ حکومت: 2 سال 10 ماہ 17 دن شمسی)
ساتھی yes
سلطان سلطنت عثمانیہ
معلومات شخصیت
پیدائش 2 جنوری 1699ء

ادرنہ محل، ادرنہ، سلطنت عثمانیہ، موجودہ ترکی
وفات 30 اکتوبر 1757ء
(عمر: 58 سال)

استنبول  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
مدفن ینی مسجد (استنبول)
شہریت Ottoman flag.svg سلطنت عثمانیہ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
مذہب اسلام
زوجہ لیلی قادین افندی
زیوکی قادین افندی
فرخندہ امینہ قادین افندی
والد مصطفی ثانی
والدہ شہسوار سلطان
بہن/بھائی
خاندان عثمانیہ خاندان
دیگر معلومات
پیشہ سیاست دان  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
دستخط
عثمان ثالث
عثمان ثالث کے طغرا والا طلائی سکہ جو 1754ء سے 1757ء تک رائج رہا۔

عثمان ثالث (پیدائش: 2 جنوری 1699ء– وفات: 30 اکتوبر 1757ء) سلطنت عثمانیہ کے سلطان تھے۔ عثمان ثالث نے 1754ء سے 1757ء تک حکومت کی۔

ابتدائی زندگی[ترمیم]

عثمان خان سوم 2 جنوری 1699ء کو ادرنہ محل میں پیدا ہوئے۔ وہ محمود اول کے چھوٹے بھائی اور مصطفی دوم کے بیٹے تھے اور ان کی والدہ سلطان شہسوار سلطان تھیں۔ انہوں نے لیلی سے شادی کی۔

تعلیم و تربیت[ترمیم]

سلطان عثمان خان سوم نے معمولی درجے کی تعلیم پائی اور اوائل عمر سے لہو و لعب میں مبتلا تھا۔ شطرنج سے دلی رغبت تھی۔

واقعات[ترمیم]

سلطان عثمان ثالث نے سب سے پہلے سلطان احمد ثالث کے تینوں بیٹوں کو قتل کروادیا تاکہ بغاوت کا اندیشہ نہ رہے۔ اس نے انتہائی مختصر عرصے کی حکومت کی۔ اس عرصے میں وہ سلطان محمود اول کے سیاسی اصولوں کا پابند رہا۔

  • سلطان احمد ثالث نے اپنے دور میں ہر مذہب کی رعایا کے لیے علاحدہ علاحدہ لباس تجویز کیا اور خواتین کے لیے پردہ کے متولق احکامات جاری کیے۔
  • 1754ء میں جنگ ہفت سالہ شروع ہوئی جس نے مغربی حکومتوں کو دو مخالف جماعتوں میں تقسیم کرکے سات سال تک وسطی مغرب کو جنگ کا میدان بنائے رکھا۔ لیکن عثمان خان سوم نے اس سے کوئی فائدہ حاصل نہ کیا اور اپنے اصولوں پر قائم رہا۔ اس لیے اس کی ہمسایہ حکومتوں سے کوئی جنگ نہیں ہوئی۔
  • سلطنت کے اندرونی نظم و نسق کا سلسلہ اسی طرح چلتا رہا جو اس کے پیشرو کے دور میں تھا۔
فرانسیسی سفیر چارلس گریوئیر، کومتے دی ورجنیز سلطان عثمان ثالث کے دربار میں – 1755ء

وفات[ترمیم]

عثمان ثالث نے 58 سال کی عمر میں 30 اکتوبر 1757ء کو توپ کاپی محل، استنبول میں وفات پائی۔

حوالہ[ترمیم]


عثمان ثالث
پیدائش: 2 جنوری 1699ء وفات: 30 اکتوبر 1757ء
پیشرو 
محمود اول
فہرست سلاطین عثمانی
13 دسمبر 1754ء30 اکتوبر 1757ء
جانشین 
مصطفی ثالث
مناصب سنت
پیشرو 
محمود اول
خلیفہ
13 دسمبر 1754ء30 اکتوبر 1757ء
جانشین 
مصطفی ثالث

سانچہ:عثمانی شجرہ نسب