عمر بن حسین خرقی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
عمر بن حسین خرقی
معلومات شخصیت
مقام پیدائش بغداد  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
تاریخ وفات سنہ 945  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ وفات (P570) ویکی ڈیٹا پر
مدفن باب صغیر  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام دفن (P119) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Black flag.svg دولت عباسیہ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
مذہب اسلام
فرقہ اہل سنت
فقہی مسلک حنبلی
عملی زندگی
استاذ ابو بکر مروذی،  حرب بن اسماعیل کرمانی،  صالح بن احمد بن حنبل،  عبد اللہ بن احمد بن حنبل  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں استاد (P1066) ویکی ڈیٹا پر
P islam.svg باب اسلام

ابو قاسم عمر بن حسین بن عبد اللہ بن احمد خرقی (متوفی 334ھ)۔[1] اپنے والد حسین بن عبد اللہ، ابو بکر مروذی، حرب کرمانی، صالح بن احمد بن حنبل اور عبد اللہ بن احمد بن حنبل سے علم حاصل کیا۔ ان کے تلامذہ میں عبد اللہ بن بطہ، ابو حسین تمیمی اور ابو حسین بن سمعون ہیں۔ ابو قاسم خرقی حنبلی مذہب کی مشہور کتاب "المختصر" کے مؤلف ہیں، کبار علما میں شمار ہوتا ہے۔

قاضی ابو یعلیٰ فرماتے ہیں: «ابو قاسم کی بہت سی تصنیفات ظاہر نہ ہو سکیں، اس لیے وہ جب بغداد میں سبِّ صحابہ ہونے لگا تو وہاں سے نکل گئے اور اپنی ساری کتابیں ایک گھر میں چھوڑ آئے تھے اور وہ گھر جلا دیا گیا»۔

ذہبی کہتے ہیں: «بغداد سے دمشق آ گئے اور وہیں وفات پائی، ان کی قبر "مقبرہ باب صغیر" میں ایک زیارت گاہ ہے»۔

تالیفات[ترمیم]

  • مختصر الخرقی[2]

وفات[ترمیم]

ابو قاسم خرقی کی وفات سنہ 334 ہجری میں ہوئی۔[3]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. خير الدين الزركلي (1980)۔ "الخِرَقي"۔ موسوعة الأعلام (عربی زبان میں)۔ مكتبة العرب۔
  2. الخرقي المكتبة الشاملة. وصل لهذا المسار في 1 مايو 2016 نسخہ محفوظہ 01 مايو 2017 در وے بیک مشین
  3. سير أعلام النبلاء الطبقة التاسعة عشرة الخرقي المكتبة الإسلامية. وصل لهذا المسار في 1 مايو 2016 نسخہ محفوظہ 01 يناير 2017 در وے بیک مشین