وفد کلب

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

وفدکلب میں بارگاہ نبوی میں حاضر ہوا۔ بعض روایات میں اسے وفدبنو رقاش شمار کیا گیالیکن یہ دونوں مختلف ہیں اس وفد میں ربیعہ بن ابراہیم الدمشقی کی روایت کے مطابق حارثہ بن قطن بن زائر بن حصنبن کعب بن علیم الکلبی ،حمل بن سعدانہ بن حارثہ بن مغفل بن کعب بن علیم اورأسد بن قطن، حصن بن قطن بطور وفد شامل ہوئے۔ حمل بن سعدانہ کے لیے جھنڈا باندھا وہ اس جھنڈے کو لیکر معاویہ کے ساتھ صفین میں بھی شامل رہے۔ حارثہ بن قطن کے لیے ایک فرمان تحریر کر دیا جس کا مضمون یہ تھا۔ یہ فرمان محمد رسول اللہ کی طرف سے دومۃ الجندل اور اس کے نواح کے انباشندگان کے لیے ہے جو قبیلہ کلب کے حارث بن قطن کے ساتھ ہیں بارش سے سیراب ہونے والی صحرائی کھجور کے درخت ہمارے ہیں۔ شہر کی کھجور کے درخت تمہارے ہیں۔ جس زمین پر چشمہ وغیرہ کا پانی جاری ہواس پر محصول عشر(دسواں حصہ)ہے اور جو بارش سے سیراب ہو اس پر محصول نصف عشر(بیسواں حصہ)ہے نہ تمہارے اونٹوں کی جمیعت کو جمع کیا جائیگااور نہ ایک دو مویشی ہوں تو انہیں برابر کیا جائیگا۔ تمہیں نماز کو وقت پر ادا کرنا ہوگا،زکوۃ اس کے حق کے موافق ادا کرنا ہوگی۔ تم سے گھاس نہیں روکی جائیگی اور نہ سامان خانہ داری سے عشر وصول کیا جائیگا۔ تم سے اس کا عہد و میثاق ہے،تمہارے ذمہ خیر خواہی و وفادی اور اللہ اور اس کے رسول کی ذمہ داری ہے اللہ اور مومنین حاضرین گواہ ہیں۔[1]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. طبقات ابن سعد حصہ دوم صفحہ 81 محمد بن سعد ،نفیس اکیڈمی کراچی