بیگم رقیہ سخاوت

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
Begum Rokeya.jpg
بیگم رقیہ سخاوت
پیدائش رقیہ خاتون
9 دسمبر 1880(1880-12-09)ء
پیرابوندھ گاؤں، مِیٹھاپُکُر اُپ ضلع, رنگ پور، بنگال پریزیڈنسی، برطانوی ہند (موجودہ بنگلہ دیش)
وفات 9 دسمبر 1932(1932-12-09) (عمر  52 سال)
کولکاتا، بنگال پریزیڈنسی، برطانوی ہند (موجودہ بھارت)
پیشہ سماجی کارکن، مصنف، مسلم نسوانیت پسند
زبان بنگلہ
قومیت بھارت
نسل بنگالی
دور برطانوی حکمرانی
ادبی تحریک حقوق نسواں
نمایاں کام سلطاناز ڈریم، پدما راگ
شریک حیات خان بہادر سخاوت حسین

بیگم رقیہ سخاوت (بنگالی زبان: রোকেয়া সাখাওয়াত হোসেন ) (9 دسمبر 1880ء9 دسمبر 1932ء) بنگالی مسلمان خواتین کی تعلیم کے لیے ان تھک کوشش کرنے والی پہلی خاتون تھی۔

خاندان اور ابتدائی زندگی[ترمیم]

بیگم رقیہ کو پانچ سال کی عمر سے سخت پردے میں رکھا گیا۔ ان کی اسکولی تعلیم عملاً بعید از امکان تھی۔ رقیہ کے والد ان کے انگریزی یا بنگالی سیکھنے کے سخت خلاف تھے۔ اس وجہ سے بیگم رقیہ اور ان کی بہن کریم النساء اپنے ایک بھائی کو لے کر رات کے اندھیرے میں ان دو زبانوں کو پڑھتی تھی۔