ویانا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
ویانا
{{کنارا|کا دفتری پرچم ویانا}}
کی دفتری مہر ویانا
پرچم مہر
Karte oesterreich wien.png
محل وقوع: 48 درجے 13 منٹ شمال 16 درجے 22 منٹ مشرق
ملک آسٹریا
میئر یا گورنر Michael Häupl
رقبہ  
 - شہر 414.90 مربع کلومیٹر
 - اراضی 395.51 مربع کلومیٹر
 - پانی 19.39 مربع کلومیٹر  4.67%
آبادی  
 - شہر (31 دسمبر 2005) 1,651,437
 - کثافت 3,931.3/مربع کلومیٹر
 - میٹرو 2,165,357
علاقائی کوڈ 01
ویب سائیٹ: http://www.wien.gv.at/


ویانا (Vienna) آسٹریا کا دارالحکومت اور ملک کی 9 ریاستوں میں سے ایک ہے۔ یہ ملک کا سب سے بڑا شہر ہے جس کی آبادی 1.6 ملین ہے۔ اس کے علاوہ یہ آسٹریا کا ثقافتی، اقتصادی و سیاسی مرکز بھی ہے۔ ویانا وسط یورپ کے جنوب مشرقی گوشے میں دریائے ڈینیوب کے کنارے واقع ہے اور چیک جمہوریہ، سلوواکیا اور ہنگری کے قریب ہے۔ 2001ء میں شہر کے مرکز کو عالمی ثقافتی ورثہ قرار دیا گیا۔


تاریخ[ترمیم]

شہر کی بنیادیں 500 قبل مسیح میں پڑیں۔ 15 قبل مسیح میں شہر رومی سلطنت کا حصہ بنا اور یہ شمال کے جرمن قبیلوں کی جارحیت کے خلاف اہم سرحدی شہر تھا۔

قرون وسطی میں یہ شہر بیبن برگ اور ہیبس برگ خاندانوں کا پایہ تخت تھا۔ 16 ویں اور 17 ویں صدی میں عثمانی ترکوں کی یورپ میں فتوحات کا سلسلہ جاری تھا لیکن وہ ویانا سے آگے نہ بڑھے سکے اور 1529ء اور 1683ء میں دو عظیم محاصرے ناکام ہوگئے۔ جس طرح جنگ ٹورس نے مغربی یورپ میں اسلام کی پیش قدمی روکی اسی طرح ویانا کے محاصروں کی ناکامی سے وسط یورپ میں اسلام مزید نہ پھیل سکا۔ یورپ کی عیسائی تاریخ میں محاصرہ ویانا کی فتوحات انتہائی اہمیت کی حامل ہیں۔

1805ء میں شہر آسٹرین سلطنت کا دارالحکومت بنا اور بعد ازاں آسٹرو ہنگرین کا پایہ تخت قرار پایا اور یورپی و عالمی سیاست میں اہم ترین کردار ادا کیا۔ 1918ء میں پہلی جنگ عظیم کے بعد ویانا جمہوریہ آسٹریا کا دارالحکومت بنا۔ 1938ء سے دوسری جنگ عظیم کے اختتام تک ویانا برلن کے مقابلے میں اپنا دارالحکومت کا اعزاز کھوچکا تھا۔ 1945ء میں اتحادی افواج نے ویانا کو 4 حصوں میں تقسیم کردیا۔

ویانا

مذہب[ترمیم]

2001ء کی مردم شماری کے مطابق شہری آبادی کی مذہبی تقسیم مندرجہ ذیل ہے

رومن کیتھولک 49.2 فیصد
لامذہب 25.7 فیصد
مسلمان 7.8 فیصد
آرتھوڈوکس 6.0 فیصد
پروٹیسٹنٹ (اکثریت لوتھرن) 4.7 فیصد
یہودی 0.5 فیصد
دیگر 6.3 فیصد

بین الاقوامی حیثیت[ترمیم]

ویانا میں قائم اقوام متحدہ کے دفاتر

اقوام متحدہ اور کئی دیگر عالمی تنظیموں اور اداروں کے دفاتر ویانا میں قائم ہیں جن میں اقوام متحدہ کی صنعتی ترقی کی تنظیم UNIDO، تیل برآمد کرنے والے ممالک کی تنظيم OPEC، عالمی ادارہ جوہری توانائی IAEA، جوہری تجربات پر پابندی کے معاہدے کے ادارے CTBTO اور یورپ میں تحفظ اور تعاون کی انجمن OSCE کے دفاتر شامل ہیں۔

مزید برآں اقوام متحدہ کے کمیشن برائے بین الاقوامی تجارتی قوانین UNCITRAL کا دفتر بھی ویانا میں قائم ہے۔

جڑواں شہر[ترمیم]