طارق جمیل

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
طارق جمیل
پیدائش 23 جون 1953 (1953-06-23) ‏(62)
مادر علمی جامعہ عربیہ، رائے ونڈ (نزد لاہور، پاکستان)
مذہب اسلام
عہد دور حاضر
مکتبہ فکر اہلسنت والجماعت - فقہ حنفی ديوبندی
اہم نظریات
اسلام کے بنیادی اصول اور اعمال، عالمی بھائی چارہ


طارق جمیل (معروف بہ مولانا طارق جمیل) ایک پاکستانی مبلغ اور عالمِ دین ہیں۔[1] اُن کا تعلق خانیوال، صوبہ پنجاب کے شہر تلمبہ سے ہے جو میاں چنوں کے قریب واقع ہے۔ وہ تبلیغی جماعت کے رکن ہیں اور فیصل آباد، پاکستان میں ایک مدرسہ چلاتے ہیں۔ اُن کی تبلیغی کوششوں کے باعث بہت سے گلوکار، اداکار اور کھلاڑی دینِ اسلام کی طرف راغب ہوئے۔

ابتدائی حالات[ترمیم]

طارق جمیل کا تعلق ایک زمیندار گھرانے سے ہے۔[2] اُنھوں نے ابتدائی تعلیم کے حصول کے بعد لاہور کی کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی میں ایم بی بی ایس کے لیے داخلہ لیا۔[3] دورانِ تعلیم وہ تبلیغی جماعت سے متعارف ہوئے اور پھر اُس سے متاثر ہوکر مذہبی تعلیم کے حصول کے لیے جامعہ عربیہ رائے ونڈ میں داخلہ لیا۔[4]

تبلیغی جماعت[ترمیم]

مولانا طارق جمیل اپنے اندازِ بیان کے باعث مشہور ہیں۔ انہوں نے تبلیغی جماعت کے ساتھ 6 براعظموں کا سفر کیا ہے۔ اُن کے مقتدین کی جانب سے اُن کے بیانات انٹرنیٹ پر مختلف ویب سائٹوں پر پیش کیے جاتے ہیں۔[5]

تحریک دیوبند
Jameah Darul Uloom Deoband.jpg

اہم شخصیات

محمد قاسم نانوتوی · رشید احمد گنگوہی
حسین احمد مدنی ·
محمود حسن
شبیر احمد عثمانی ·
اشرف علی تھانوی
انور شاہ کشمیری ·
محمد الیاس کاندھلوی
عبید اللہ سندھی ·
محمد تقی عثمانی

اہم ادارے

دارالعلوم دیوبند، بھارت
مظاہر علوم سہارنپور، بھارت
دار العلوم معین الاسلام، بنگلہ دیش
دار العلوم ندوۃ العلماء، بھارت
دار العلوم کراچی، پاکستان
جامعہ علوم اسلامیہ، پاکستان
جامعہ دار العلوم زاہدان، ایران
دار العلوم لندن, انگلینڈ
دار العلوم نیویارک، ریاستہائے متحدہ
دار العلوم کیناڈا،
مدرسہ انعامیہ، شمالی افریقہ

تحریکیں

تبلیغی جماعت
جمعیت علمائے ہند
جمعیت علمائے اسلام
تحریک ختم نبوت
سپاہ صحابہ
لشکر جھنگوی
طالبان


اثر[ترمیم]

لوگ اُن کی باتیں بڑی تعداد میں سنتے ہیں، ان کے اخلاق سے متاثر ہوکر کئی معروف شخصیات دائرۂ اسلام میں داخل ہوئیں۔ وہ فرقہ واریت کے سخت مخالف ہیں۔


لوگوں میں اختلافات ہوتے ہیں اس کا ہر گز یہ مطلب نہیں کہ ایک دوسرے کو قتل کریں،اسلام ایسی باتوں کی اجازت نہیں دیتا

—مولانا طارق جمیل، [6]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ "The Muslim 500 [500 مسلمان]" (انگریزی میں)، رائل اسلامک اسٹریٹجک اسٹڈیز سینٹر، http://themuslim500.com/download، اخذ کردہ بتاریخ 24 نومبر 2014ء
  2. ^ انعام الحق (1999ء)، "Memoirs of Insignificance [ناچیز کی یادیں]" (انگریزی میں)، دار التذکیر، http://books.google.com.pk/books?id=_dzgAAAAMAAJ&q=moulana+tariq+jameel&dq=moulana+tariq+jameel&hl=en&sa=X&ei=EzhSVIHdBJLfapjpgvgN&redir_esc=y، اخذ کردہ بتاریخ 24 نومبر 2014ء
  3. ^ طاہر خان (17 ستمبر 2013ء)، "Tableeghi Jamaat chief Maulana Tariq Jameel denies attack [تبلیغی جماعت کے راہنما مولانا طارق جمیل کا حملے سے انکار]" (انگریزی میں)، نیوز پاکستان، http://www.newspakistan.pk/2013/09/17/tableeghi-jamaat-chief-maulana-tariq-jameel-denies-attack، اخذ کردہ بتاریخ 24 نومبر 2014ء
  4. ^ http://www.quranrecites.com/maulana-tariq-jamil.php
  5. ^ http://www.quranrecites.com/maulana-tariq-jamil.php
  6. ^ خطا در حوالہ: غلط <ref> ٹیگ؛ حوالہ بنام ExpressTribune2 کے لیے کوئی متن فراہم نہیں کیا گیا