طارق جمیل

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
طارق جمیل
مولانا، اسلامی عالم
طارق جمیل
پیدائش مولانا طارق جمیلجنوری 1953 (عمر 64 سال)
مياں چنوں،خانیوال،پاکستان
مذہب اسلام
فرقہ اہل سنت
فقہ حنفی
تحریک تبلیغی جماعت
شعبۂ عمل شریعت،حدیث، اسلامی بنکاری،تفسیر قرآن
مادر علمی جامعہ عربیہ (قریب از لاہور، پاکستان)
ویب سائٹ http://alh.com.pk

طارق جمیل (معروف بہ مولانا طارق جمیل) ایک پاکستانی مبلغ اور عالمِ دین ہیں۔[1] اُن کا تعلق خانیوال، صوبہ پنجاب کے شہر تلمبہ سے ہے جو میاں چنوں کے قریب واقع ہے۔ وہ تبلیغی جماعت کے رکن ہیں اور فیصل آباد، پاکستان میں ایک مدرسہ چلاتے ہیں۔ اُن کی تبلیغی کوششوں کے باعث بہت سے گلوکار، اداکار اور کھلاڑی دینِ اسلام کی طرف راغب ہوئے۔

ابتدائی حالات

طارق جمیل کا تعلق ایک زمیندار گھرانے سے ہے اور ان کی پیدائش ضلع خانیوال کے مياں چنوں علاقے میں ہوئی۔[2] اُنھوں نے ابتدائی تعلیم کے حصول کے بعد لاہور کی کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی میں ایم بی بی ایس کے لیے داخلہ لیا۔[3] دورانِ تعلیم وہ تبلیغی جماعت سے متعارف ہوئے اور پھر اُس سے متاثر ہوکر مذہبی تعلیم کے حصول کے لیے جامعہ عربیہ رائے ونڈ میں داخلہ لیا۔[4]

تبلیغی جماعت

طارق جمیل اپنے اندازِ بیان کے باعث مشہور ہیں۔ انہوں نے تبلیغی جماعت کے ساتھ 6 براعظموں کا سفر کیا ہے۔ اُن کے مقتدین کی جانب سے اُن کے بیانات انٹرنیٹ پر مختلف ویب سائٹوں پر پیش کیے جاتے ہیں۔[5]

اثر

لوگ بڑی تعداد میں اُن کی باتیں سنتے ہیں، ان کے اخلاق سے متاثر ہوکر کئی معروف شخصیات دائرۂ اسلام میں داخل ہوئیں۔ وہ فرقہ واریت کے سخت مخالف ہیں۔


لوگوں میں اختلافات ہوتے ہیں اس کا ہر گز یہ مطلب نہیں کہ ایک دوسرے کو قتل کریں، اسلام ایسی باتوں کی اجازت نہیں دیتا

—مولانا طارق جمیل، [6]

حوالہ جات

  1. "The Muslim 500" [500 مسلمان] (انگریزی زبان میں)، رائل اسلامک اسٹریٹجک اسٹڈیز سینٹر 
  2. انعام الحق (1999ء)، "Memoirs of Insignificance" [ناچیز کی یادیں] (انگریزی زبان میں)، دار التذکیر 
  3. طاہر خان (17 ستمبر 2013ء)، "Tableeghi Jamaat chief Maulana Tariq Jameel denies attack" [تبلیغی جماعت کے راہنما مولانا طارق جمیل کا حملے سے انکار] (انگریزی زبان میں)، نیوز پاکستان 
  4. http://www.quranrecites.com/maulana-tariq-jamil.php
  5. http://www.quranrecites.com/maulana-tariq-jamil.php
  6. 500 مسلمانوں میں شمار