آغا خان سوم

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
آغا خان سوم

پیدائش؛ 1878ء

وفات؛ 1957ء

اسماعیلی فرقے کے اماموں کو آغا خان کے نام سے پکارا جاتا ہے۔ جبکہ ان کے پیروکار آغا خانی کہلاتے ہیں۔ سلطان سر محمد بن امام آغا علی شاہ اسماعیلیہ فرقے کے اڑتالیسویں امام تھے۔آپ نے تقریبا ستر سال امامت کی ہے جوکہ اسماعیلی اماموں میں کسی بھی امام کی امامت سے طولانی امامت ہے۔ کراچی میں پیدا ہوئے۔ انھوں نے پہلی عالمگیر جنگ میں برطانیہ کی مدد کی جس کے صلے میں انھیں سر اور ہزہائی نس کے خطابات ملے۔ اور گیارہ توپوں کی سلامی مقرر ہوئی۔ فارسی، عربی، انگریزی، اور فرانسیسی زبانوں کے ماہر عظیم مدبر اور سیاست دان تھے۔ 1906ء سے 1912ء تک مسلم لیگ کے صدر رہے۔ 1930ء اور1931ء میں گول میز کانفرنس میں مسلمانوں کی نمائندگی کی۔ 1934ء میں برطانیہ کی پریوی کونسل میں لیے گئے۔ 1937ء میں جمعیت الاقوام کے صدر منتخب ہوئے ان کے مرید تمام دنیا میں پھیلے ہوئے ہیں۔ جینوا میں انتقال کیا اوروصیت کے مطابق اسوان میں دفن ہوئے۔ ان کے دو لڑکے ہیں۔ شہزادہ علی اور شہزادہ صدر الدین۔ مگر ان کی وصیت کے مطابق شہزادہ علی کے بیٹے شہزادہ کریم ان کے جانشین مقرر ہوئے۔ جو آغا خان چہارم کہلائے۔