حجر بن عدی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
Hujr ibn Adi's Shrine.jpg

حجر بن عدی صحابیٔ رسول صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم تھے اور حضرت علی کے محبین میں سے تھے۔ ان کا جھگڑا زیاد بن سمیہ سے ہوا جب زیاد حضرت علی کو برا بھلا کہہ رہا تھا۔ انہیں معاویہ بن ابی سفیان نے ان کے ساتھیوں سمیت قتل کروا دیا تھا۔ اس قتل کی پیشگوئی حضور صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم نے کی تھی۔ ابن کثیر نے البدایہ والنہایہ میں بیان کیا کہ حجر بن عدی کے قتل کے بعد معاویہ بن ابی سفیان سے حضرت عائشہ نے پوچھا کہ اے معاویہ تجھے کسی بات نے اہل عذراء یعنی حجر بن عدی اور ان کے ساتھیوں کے قتل پر آمادہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ میں نے ان کے قتل میں امت کی اصلاح اور ان کی زندگی میں امت کی خرابی دیکھی ہے۔ اس پر حضرت عائشہ سے نے فرمایا کہ میں نے آنحضرت صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کو بیان کرتے سنا کہ عنقریب عذراء میں کچھ لوگ قتل ہوں گے جن کی خاطر اللہ اور آسمان والے غصے ہو جائیں گے۔[1]


حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ البدایہ والنہایہ از ابن کثیر جلد 6 صفحہ 306