"ارطغرل غازی (سیریل)" کے نسخوں کے درمیان فرق

Jump to navigation Jump to search
(ٹیگ: ترمیم از موبائل موبائل ویب ترمیم ایڈوانسڈ موبائل ترمیم)
=== کہانی ===
 
[[* '''پہلا سیزن:]]'''
 
کہانی کی شروعات [[''' اوغوز''']] ترک نسل کے [[''' قائی''']] قبیلے کے ہجرت کے منظر سے ہوتی ہے جب یہ قبیلہ [[منگولوں]] کے حملوں سے بچنے کے لیے دوران میں ہجرت پڑاؤ ڈالے ہوئے تھا۔ 400 خیموں سے آباد یہ بستی اپنی نئی منزل کی تلاش میں تھی۔ یہ [[تیرہویں صدی]] کا زمانہ تھا۔ قحط کے مشکل وقت سے گزرنے کے بعد وہ ایک بہتر جگہ کی طرف ہجرت کرنے کا عزم کرتے ہیں جہاں وہ نئی زندگی کا آغاز کرسکیں۔ [[سلیمان شاہ]] قائی قبیلے کا سردار ہے۔ سلیمان شاہ کے چار بیٹے ہیں جن میں، [[گندوگدو (گلدارو)]]، [[سنگورتیکن (صارم)]]، [[ارطغرل|ارتغل]] اور سب سے چھوٹا [[دوندار (ذوالجان)]] ہے۔ صارم کو منگولوں نے پکڑ لیا تھا اور وہ لاپتہ ہے، اسے مردہ سمجھا جاتا ہے، جس پر [[حائمہ خاتون]] (سلیمان شاہ کی بیوی) کو یقین نہیں ہے۔ اس کے دو بیٹے گلدارو اور ارتغل اس کے وفادار ہیں اور قبائلی امور میں حصہ لیتے ہیں۔ قبائلی امور میں بھر پور شرکت کے لیے ذوالجان کی ابھی عمر نہیں ہے۔ سلیمان شاہ کا ایک بیٹا ارتغل اکثر تین قریبی دوستوں [[بامسی (بابر)]]، [[دوہان (روشان)]] اور [[تورگت (نورگل)]] کے ساتھ شکار پر جاتا ہے۔ شکار کے دوران میں ان کا سامنا [[ٹیمپلرز]] سے ہوتا ہے جو تین قیدیوں کو لے کر جا رہے ہوتے ہیں۔ ارتغل اور اس کے دوست ٹیمپلرز کو مار دیتے ہیں اور ان تینوں قیدیوں ایک نوجوان لڑکی جس کا نام [[حلیمہ خاتون|حلیمہ سلطان]] [[(Esra Bilgiç)]] ہے، اس کے باپ [[شہزادہ نعمان]] اور اس کے بھائی [[لیعیت (شہیر)]] کی جانیں بچا لیتے ہیں جن کو پھانسی دی جانی تھی۔ ارتغل اور اس کے دوست ان بازیاب شدہ قیدیوں کی اصل شناخت (کہ ان کا تعلق [[سلجوقسلجوقی سلطنت]] کے ایک عظیم گھرانے سے ہے) جانے بغیر انکو اپنے قبیلے لے آتے ہیں۔ ایک بار پھر پکڑے جانے کے خوف نے حلیمہ اور اس کے اہل خانہ کو ان کی اصل شناخت ظاہر نہ کرنے پر مجبور کیا ہوا ہے۔ قبیلے میں حلیمہ اور اس کے اہل خانہ کی آمد سے قائی قبیلے کو نئی مشکلات آجاتی ہیں۔ سلجوق سلطنت حلیمہ اور اسکی فیملی کو واپس نہ کرنے کی صورت میں جنگ کی دھمکی دیتی ہے اور ٹیمپلرز نے قیدیوں کو بچانے کا بدلہ لیا اور نورگل کو قید کر لیا جو بعد ازاں آزاد کروا لیا جاتا ہے۔ ان دھمکیوں کی وجہ سے کچھ خانہ بدوش افراد سلیمان شاہ کو ان مسائل سے بچنے میں ناقص قیادت کا ذمہ دار ٹھہراتے ہیں۔ اس گروہ کی بدامنی سلیمان شاہ کے منہ بولے بھائی [[کردوغلو]] کی خواہش کے باعث ہے۔ کردوغلو کی خواہش سلیمان شاہ کو ہٹانے اور قائی قبیلے کے سردار کی حیثیت سے اپنا منصب سنبھالنا ہے۔ [[سلجان ہاتون (شہناز خاتون گلدارو کی بیوی)]] حلیمہ اور اسکی فیملی کے خلاف ہے لہٰذا وہ [[گوکچے ہاتون (روشنی خاتون)]]اور [[آئیکز (شاہینہ)]] سے سرگوشی کرتی ہے۔ بدامنی کو حل کرنے کی کوشش میں سلیمان شاہ ارتغل کو اپنے قبیلے کے لئے ایک نیا مقام تلاش کرنے کے مشن پر بھیجتا ہے۔ خاص طور پر وہ ارتغل اور اسکے تین ساتھیوں کو [[امیر حلب العزیز]] سے معاہدہ کرنے کے لیے [[حلب]] بھیجتا ہے جہاں اتغل کو پتہ چلتا ہے کہ امیر حلب کے محل میں [[صلیبی]] مسلمانوں کا روپ دھارے ہوئے کام کر رہے ہیں کو کہ اپنی چالوں سے ارتغل کو قید کروا دیتے ہیں لیکن وہ کچھ شیر دلوں کی مدد سے آزاد ہو جاتا ہے۔ شہزادہ نعمان اور اس کی بیٹی حلیمہ سلطان بھی حلب میں جاتے ہیں جہاں پر امیر حلب حلیمہ سے شادی کرنا چاہتا ہے لیکن حلیمہ سلطان عین نکاح کے وقت انکار کر دیتی ہے۔ بعد ازاں امیر حلب کو سچائی کا پتہ چل جاتا ہے اور وہ ارتغل سے معذرت کرتا ہے۔ کردوغلو کی غداری سامنے آ جاتی ہے اسکی گردن ارتغل کی تلوار اڑا دیتی ہے۔ جبکہ شہناز خاتون بھی توبہ تائب ہو جاتی ہے۔
 
[[* '''دوسراسیزن:]]'''
 
دوسرے سیزن میں ارتغل کو [[بائیو نویان]] کی سربراہی میں منگولوں کے سپاہی اپنے سربراہ تنکوت سے مل کر قید کرلیتے ہیں۔ دریں اثناء حائمہ خاتون کی سربراہی میں قائی قبیلہ نے دودورگا قبیلہ سے پناہ مانگی ہے، جس کی سربراہی حائمہ خاتون کا بھائی [[کورکوت بے (سردار خوشنود)]] کر رہا ہوتا ہے۔ ارتغل کا منگولوں سے فرار اور اس کے نتیجے میں اس کے قبیلے میں واپسی اس کے اور اس کے کزن [[توتیکین (تیمور خوشنود کا بیٹا جو دودورگا کے سپاہیوں کا سربراہ ہے)]] کے درمیان میں اندرونی تنازعہ پیدا کرتی ہے۔ خوشنود کی دوسری بیوی [[ایتولن (عالیہ خاتون)]] اس کی پیٹھ کے پیچھے پلان بناتی ہے تاکہ اس کا بھائی [[گومیشتکین (مہر دین)]] [[امیر سعدتین کوپیک]] کی مدد سے سردار بن سکے۔ بعدازاں جب وہ حلیمہ خاتون اور شہناز خاتون پر حملہ کر رہی ہوتی ہے تو قائی سپاہی عبدالرحمن اسے قتل کر دیتا ہے۔ ارتغل کے طویل گمشدہ بھائی صارم کی آمد سے تناؤ مزید بڑھ جاتا ہے۔ سردار خوشنود کے قتل میں سہولت کار بننے کے جرم میں مہردین کی گردن ارتغل کی تلوار اڑا دیتی ہے ۔ نویان تیمور اور روشنی خاتون کو شہید کر دیتا ہے۔ شہزادہ شہیر اور ذوالجان نویان کی قید میں آ جاتے ہیں لیکن بعد میں آزاد کروا لیے جاتے ہیں۔ نویان کو شکست دینے کے بعد قائی قبیلہ [[اناطولیہ]] کی مغربی سرحد پر ارتغل کے ساتھ شامل ہونے یا گلدارو اور صارم کے ساتھ رہنے کے درمیان میں تقسیم ہوجاتا ہے۔ آخر میں ارتغل اس کے بھائی ذوالجان، حلیمہ سلطان اور حائمہ خاتون کے ساتھ 400 دیگر افراد نے بھی اناطولیہ کے مغربی کنارے کا سفر کیا اور باقی قائی قبیلے کو پیچھے چھوڑ دیا۔ راستے میں شہزادہ شہیر شہید ہو جاتا ہے۔
 
[[* '''تیسرا سیزن:]]'''
 
تیسرے سیزن میں ارتغل اناطولیہ کے مغربی خطے کے سب سے طاقتور [[چاوادر قبیلے]] کے ساتھ تجارتی معاہدہ کرتا ہے۔ [[کیندار بے (سردار جاندار چاودار قبیلے کا سردار)]] اور اس کے بچے [[اورال]]، [[اصلیہان]] اور [[آلیار]] کی سربراہی میں چاودار تجارت میں بہت ہنر مند ہیں۔ تاہم اورال شیطانی ذہن کا لالچی انسان ہے اور اپنے والد کی جگہ سرداری کی تلاش میں ہے اور اس کے حصول کے لئے کچھ بھی کرتا ہے۔ [[ہانلی بازار]] پر ارتغل کی فتح کے بعد اورال کو ارتغل کی قالینوں کو جلانے، اس کے سپاہیوں کو شہید کرنے اور [[کاراچائیسار ( عیسائیوں کا قلعہ)]] کے گورنر کے قتل کے جرم میں اس کے کردار پر سزائے موت سنائی گئی ہے۔ امیر سعدتین کوپیک کی مدد سے اورال کو رہا کیا گیا ہے اور وہ ترکوں کے ساتھ خونی جنگ کے خواہاں کاراچائیسار کے نئے کمانڈر [[وسیلوس]] سے مدد مانگ رہا ہے۔ ارتغل نے آلیار کے ساتھ مل کر اورال اور وسیلوس کو شکست دینے کا عزم کیا لیکن آلیار شہید ہو جاتا ہے۔ ارتغل کا بیٹا [[گوندوز]] پیدا ہوتا ہے اور بابر نے [[حیلینہ (مقتول گورنر کی بیٹی)]] سے شادی کی ہے جو بعد میں مسلمان ہوگئی اور اس کا نام حیلینہ سے تبدیل کر کے حفصہ خاتون رکھا جاتا ہے۔ چاودار کے ساتھ اپنے تعلقات کو مستحکم کرنے کے لئے ارتغل نے نورگل سے درخواست کی کہ وہ اصلیہان سے شادی کرے جو وہ قبول کرتا ہے۔ ارتغل کو [[سلطان علاؤالدین]] نے [[سردارِ اعلیٰ]] کا خطاب دیا ہے جو سعدتین کوپیک کو غصے میں پاگل کر دیتا ہے اور وہ ارتغل کو تباہ کرنے کا عہد کرتا ہے۔ کاراچائیسار کے نئے کمانڈر [[آرس]] کے ساتھ مل کر کوپیک نے ارتغل کے لئے ایک جال بچھایا اور بظاہر سیزن کے اختتام پر اسے شہید کردیا۔

فہرست رہنمائی