سرفراز احمد نعیمی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
سرفراز احمد نعیمی
معلومات شخصیت
تاریخ پیدائش 16 فروری 1948  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
وفات 12 جون 2009 (61 سال)  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ وفات (P570) ویکی ڈیٹا پر
لاہور  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
مادر علمی جامعہ پنجاب  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تعلیم از (P69) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ مفتی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر

مفتی ڈاکٹر سرفراز احمد نعیمی، (پیدائش: 16 فروری 1948ء— وفات: 12 جون 2009ء) پاکستان میں ایک اہم اعتدال پسند سنی اسلامی عالم تھے۔ وہ دہشت گردی اور تحریک طالبان پاکستان کے مخالف تھے۔ انہیں 12 جون 2009ء کو جامعہ نعیمیہ لاہور، پاکستان میں ایک خود کش بم حملے میں ہلاک کر دیا گیا۔

زندگی[ترمیم]

سرفراز احمد نعیمی، مفتی محمد حسین نعیمی کے بیٹے، 16 فروری 1948ء میں پیدا ہوئے۔ ان کے آباؤ اجداد نے بھارت مراد آباد سے پاکستان ہجرت کی تھی۔ وہ نے لاہور، پاکستان میں جامعہ نعیمیہ لاہور میں سینئر عالم تھے۔ انہوں نے 1998ء میں ان کے والد کی موت کے بعد جامعہ نعیمیہ کے پرنسپل بن گئے۔ جو گڑھی شاہو کے پڑوس میں واقع ہے۔ جامعہ نعیمیہ سے ان کی ابتدائی تعلیم ہوئی اور پنجاب یونیورسٹی کے بعد مزید تعلیم کے لیے الازہر یونیورسٹی، مصر میں سے ایک مختصر کورس کے علاوہ پی ایچ ڈی کی۔ وہ اردو، عربی اور فارسی زبانوں میں اچھی طرح عبور رکھتے تھے اور مذہبی امور پر اخبارات میں کالم بھی لکھے۔ وہ ماہانہ عرفات، لاہور کے مدیربھی رہے۔ان کی موت کے بعد ان کے بیٹے راغب حسین نعیمی، جامعہ نعیمیہ لاہور کے پرنسپل بنے۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

٭ نعیم العرفان اسلامک انسٹی ٹیوٹ گجرات ڈاکٹر محمد سرفراز نعیمی شہید کے شاگرد ایاز اختر نعیمی آپ کی شہادت سے دس ماہ قبل جامعہ نعیمیہ سے درس نظامی کی تکمیل کے بعد اپنے آبائی علاقہ گجرات واپس چلے گئے۔ جہاں انہوں قریبی مدرسہ میں کچھ عرصہ تدریس کی۔ یکم مارچ 2010 کو نعیم العرفان اسلامک انسٹی ٹیوٹ گجرات کا قیام عمل میں لایا گیا۔ جہاں قدیم و جدید علوم کی تدریس شروع کی۔ ایاز اختر نعیمی نے مدرسة المدینہ گجرات حفظ قرآن کی تکمیل 2000 میں کی۔ 2008 میں جامعہ نعیمیہ لاہور سےدرس نظامی کی تکمیل کی۔ ایم اے اردو سرگودھا یونیورسٹی سے مکمل کیا۔ایم ایڈ علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی سے اور ایم فل اسلامک اسٹڈیز یونیورسٹی آف گجرات سے مکمل کیا۔ تنظیم المدارس سے شہادة العالمیہ فی العلوم العربیة والاسلامیہ کی سند وصول کی۔

خارجی روابط[ترمیم]

٭ جامعہ نعیمیہ میں خودکش حملہ ،ڈاکٹر سرفراز نعیمی شہید