سلجوق خاندان

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
سلجوق خاندان
Seljuq dynasty
ملک سلجوقی سلطنت
سلطنت روم
قیام دسویں صدیسلجوق
معدومی

دمشق:
1104 – ظاہر الدين طغتكين نے محی الادین بختاش کو معزول کیا۔

عظیم سلجوق:
1194 –علاؤ الدین تکش کے ساتھ جنگ میں طغرل سوم ہلاک ہو گیا۔

روم:
1307 – مسعود دوم مر گیا۔
خطاب

سلجوق خاندان (انگریزی: Seljuq dynasty) یا سلجوق ترک (Seljuk Turks) [1][2][3] یا آل سلجوق (فارسی: آل سلجوق[4]‎) ایک غز ترک اہل سنت خاندان تھا جو بتدریج فارسی معاشرہ بن گیا جس نے قرون وسطی میں مغربی ایشیا اور وسط ایشیا میں ترکی-فارسی روایت میں اہم کردار ادا کیا۔[5][6] سلجوقوں نے سلجوقی سلطنت اور سلطنت روم قائم کیں جو اناطولیہ سے ایران تک پھیلی ہوئی تھیں اور یہ پہلی صلیبی جنگ کا نشانہ بھی بنیں۔

آل سلجوق کی اصل[ترمیم]

سلجوقیوں کا مورث ایک شخص سلجوق یا سلچک تھا جس نے اس خاندان میں سب سے پہلے ناموری حاصل کی اور بلاد اسلام میں داخل ہو کر اپنے لیے سیاسی عظمت کا دروازہ کھولا۔ اس لیے اس کی نسل اور اس کے متبعین کو سلجوقی یا آل سلجوق یا سلاجقہ کہا جاتا ہے۔ نسلا اس خاندان کا تعلق اتراک قنق کی اس شاخ سے ہے جو غز کے نام سے موسوم ہے۔

آل سلجوق کا شجرہ[ترمیم]

آل سلجوق.png

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Michael S Neiberg۔ Warfare in World History۔ Routledge۔ صفحات 19–20۔ آئی ایس بی این 9781134583423۔
  2. "Seljuk Turks"۔ New World Encyclopedia۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 نومبر 2016۔
  3. Jonathan Harris۔ Byzantium and the Crusades۔ Bloomsbury Publishing۔ صفحات 39–45۔ آئی ایس بی این 9781780937366۔
  4. Muḥammad Rāvandī۔ Rāḥat al-ṣudūr va āyat al-surūr dar tārīkh-i āl-i saljūq۔ Tihrān: Intishārāt-i Asāṭīr۔ آئی ایس بی این 9643313662۔
  5. Grousset, Rene, The Empire of the Steppes, (Rutgers University Press, 1991), 161,164; "renewed the Seljuk attempt to found a great Turko-Persian empire in eastern Iran..", "It is to be noted that the Seljuks, those Turkomans who became sultans of Persia, did not Turkify Persia-no doubt because they did not wish to do so. On the contrary, it was they who voluntarily became Persians and who, in the manner of the great old Sassanid kings, strove to protect the Iranian populations from the plundering of Ghuzz bands and save Iranian culture from the Turkoman menace."
  6. Nishapuri, Zahir al-Din Nishapuri (2001), "The History of the Seljuq Turks from the Jami’ al-Tawarikh: An Ilkhanid Adaptation of the Saljuq-nama of Zahir al-Din Nishapuri," Partial tr. K.A. Luther, ed. C.E. Bosworth, Richmond, UK. K.A. Luther, p. 9: "[T]he Turks were illiterate and uncultivated when they arrived in Khurasan and had to depend on Iranian scribes, poets, jurists and theologians to man the institution of the Empire")

کتابیات[ترمیم]

  • Rene Grousset۔ The Empire of the Steppes: a History of Central Asia۔ New Brunswick: Rutgers University Press۔ صفحہ 147۔ آئی ایس بی این 0813506271۔
  • Peacock, A.C.S., Early Seljuq History: A New Interpretation; New York, NY; Routledge; 2010
  • C. W. Previté-Orton۔ The Shorter Cambridge Medieval History۔ Cambridge: Cambridge University Press۔