بیت الحکمت

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
عباسیہ کتب خانے میں سائنسداں، مقامات الحریری۔

خلیفہ ہارون رشید نے اپنے عہد میں ایک ایک ایسے مرکز کا اہتمام اور قائم کیا جو سائنسی علوم پر تحقیات کرنا اور علمی تحیقات سے عوام کو جدید نظریات سے آگاہ کرنا تھا۔ اس کو شہر بغداد میں قائم کیا گیا۔

عباسی خلیفہ مامون الرشید کے عہد میں بغداد میں بیت الحکمت ایک کتب خانہ تھا۔ جہاں فلسفی، سائنس دان اور علما دین تحقیقی کام کیا کرتے تھے۔

عباسیہ دور کے سائنسی تحقیات پر مبنی کتابیں اور تحریریں۔

تاریخ[ترمیم]

بنو امیہ کے دور خلافت میں ملک شام شہر دمشق میں، علم کی طرف زور دیتے ہوئے کتابوں کو ذخیرہ کرنے اور کتب خانے قائم کرنے کا کام شروع کیا گیا۔ جب خلیفہ منصور امیہ خلافت کی جگہ سنبھالا تو اپنا دارالخلافہ شہر بغداد کیا۔ شہر بغداد کی بنیاد اور آباد بھی منصور نے ہی کیا تھا۔ کتب خانوں کا سلسہ جاری رہا۔ ہارون رشید کے دور میں مستحکم ہوا تو مامون کے دور میں منظم ہوا اور شہرہ آفاق بھی ہوا۔

==[ترمیم]