توکیو

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
توکیو Prefecture
جاپانی (انتساخ)
 - جاپانی 東京都
 - روماجی توکیو تُو

علامت توکیو
متناسقات: 35°41′N 139°45′E / 35.683°N 139.75°E / 35.683; 139.75متناسقات: 35°41′N 139°45′E / 35.683°N 139.75°E / 35.683; 139.75
ملک جاپان
علاقہ کانتو
جزیرہ ہونشو
دارالحکومت ناقابلِ اطلاق
حکومت
 - گورنر شنتارو ایشیہارا
رقبہ
 - کُل 2,187.08 (621.81) کلومیٹر2 (خطاء تعبیری: غیر متوقع ( مشتغل۔ میل2)
درجہ بلحاظ رقبہ پینتالیسواں
آبادی (جنوری 1, 2009)
 - کُل 12,790,000[1]
(8,653,000 مخصوص تحصیلات میں)
 - درجہ اول
 کثافتِ آبادی 5,847/کلومیٹر2 (15,143.7/میل2)
آیزو 3166 رمز JP-13
اضلاع 1
بلدیات 62
پھول ساکورا (شگوفۂ شاہ دانہ)
درخت جنکو دوفصوصہ (Ginkgo biloba)
پرندہ سیاہ سرمرغابی (Larus ridibundus)
ویب سائٹ metro.tokyo.jp (انگریزی)

توکیو (جاپانی: 東京 تلفظ: توکیو) جسے رسمیاً (یا باضابطہ) طور پر ، میٹروپولس توکیو (جاپانی: 東京都 تلفظ: توکیو تُو) کہا جاتا ہے، جاپان کے 47 اقالیم (prefectures) میں سے ایک اور دارالخلافہ کی حیثیت کا حامل شہر ہے۔ اپنے وقوع کے لحاظ سے یہ شہر جاپان کے رئیسی جزیرے ہونشوُ پر مشرق کی جانب واقع ہے۔ آج کے توکیو کو 23 تحصیلوں (wards) میں تقسیم کیا گیا ہے جس میں سے ہر ایک کا انتظام ایک الگ شہر کے طور پر چلایا جاتا ہے اور اس اقلیمِ توکیو میں مشرق کی جانب وہ تمام علاقہ بھی شامل ہو جاتا ہے جسے تاریخی طور پر شہرِ توکیو کہا جاتا تھا۔ توکیو شہر کی آبادی ایک کروڑ بیس لاکھ سے تجاوز (12,790,000) کر چکی ہے، جو کہ جاپان کی کل آبادی (12 کروڑ) کا 10% بنتی ہے[1]۔ اس اقلیمِ توکیو کو اپنے گرد و نواح کے شہری علاقے یعنی چیبا ، کاناگاوا اور سائتاما کے اقالیم کے ساتھ ملا کر 3 کروڑ 50 لاکھ کی آبادی والا دنیا کا گنجان ترین ام البلاد اور 2005ء کی تعادل قوت خرید (purchasing power parity) کے مطابق دس کھرب سے زیادہ (US$1.191 trillion) GDP والی دنیا کی سب سے بڑی ام البلاد معیشت بنانے کا اعزاز حاصل ہے۔

عالمی معیشت میں اپنی موجود اھمیت کے پیش نظر اسے نیویارک اور لندن کے ساتھ دنیا کے تین مراکزِ امر (command centers) میں شمار کیا جاتا ہے[2]۔ عالمگیر حیثیت ہی کی وجہ سے توکیو کا شمار 2008ء کی GaWC فہرست کے مطابق alpha+ شہروں کے ساتھ کیا گیا ہے[3]۔ انسانی وسائل سے متعلق ایک ادارے mercer اور معیشتداں مخابر اکائی (economist intelligence unit) کے مساحہ برائے لاگت بسر (cost-of-living) کے مطابق توکیو کو غیرملکی ملازمین کے لیئے دنیا کا مہنگا ترین شہر قرار دیا گیا ہے[4] اس کے باوجود توکیو کا شمار دنیا کے سب سے زیادہ قابل رہائش (liveable) شہروں میں کیا جاتا ہے، بین الاقوامی جریدہ برائے اندازِ حیات (lifestyle) کے مطابق اسے دنیا کا سب سے زیادہ قابل رہائش ام البلاد قرار دیا گیا[5]۔

توکیو کے معنی[ترمیم]

توکیو ، تاریخی طور پر ایدو کے نام سے جانا جاتا تھا جس کے معنی مصب النہر (estuary) کے ہوتے ہیں یعنی آسان الفاظ میں وہ مقام جہاں کوئی دریا ، سمندر میں کھلتا ہے.[6] جب 1868ء میں اس شہر کو دارالخلافہ کا درجہ دیا گیا تب اس کا نام تبدیل کر کہ توکیو رکھا گیا؛ جو کہ دو الفاظ ، تو بمعنی مشرق اور کیو بمعنی دارالخلافہ کا مرکب لفظ ہے، یعنی توکیو کے لغوی معنی دارالخلافۂ مشرق کے ہوتے ہیں[6]۔ جاپانی چونکہ چینی محارف بھی استعمال کرتی ہے اس لیۓ اس میں ایک ہی محارف کو چینی تلفظ میں مختلف انداز سے ادا کیا جاسکتا ہے اور اسی وجہ سے میجی عہد میں توکیو کا تلفظ توکئی بھی ملتا ہے[7] لیکن آج کل یہ تلفظ یکسر متروک ہو چکا ہے[8]۔









حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ 1.0 1.1 آبادی کے بارے میں خلاصہ توکیو حکومت ام البلاد کے موقع پر
  2. ^ Sassen, Saskia (2001). The Global City: New York, London, Tokyo (2nd ed.). Princeton University Press. ISBN 0691070636.
  3. ^ GaWC - The World According to GaWC 2008 موقع حبالہ
  4. ^ The Mercer 2009 Cost of Living Survey موقع حبالہ
  5. ^ پچیس اولین قابل رہائش شہر
  6. ^ 6.0 6.1 Room, Adrian. Placenames of the World. McFarland & Company تین سو ساٹھواں صفحہ روئے خط ISBN 0-7864-1814-1
  7. ^ Waley, Paul (2003). Japanese Capitals in Historical Perspective: Place, Power and Memory in
    Kyoto, Edo and Tokyo
    . Routledge. p. 253. ISBN 070071409X.
  8. ^ Tokyo Metropolitan Archives. Retrieved on 13 September 2008 جاپانی موقع