ابو اللیث سمرقندی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
ابو اللیث سمرقندی
معلومات شخصیت
تاریخ پیدائش سنہ 944  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
تاریخ وفات سنہ 983 (38–39 سال)[1]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ وفات (P570) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
پیشہ الٰہیات دان[2]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
P islam.svg باب اسلام

ابو الليث نصر بن محمد بن ابراہيم بن الخطاب الفقيہ الحنفی السمرقندى لقب امام الہدى متوفى 373ھ

ولادت[ترمیم]

امام ابو الليث سمرقندی ازبکستان کے شہر سمرقند ميں پید اہوئے جسے عربی میں سمران کہا جاتا ہے يہ مشہور شہر ماوراء النہرکے نام سے معروف ہے اس کی مساجد اور مدارس آج بھی اس کی روشن تاريخ اورشہرت پر دلالت کرتے ہيں ۔

نام و نسب[ترمیم]

آپ کا نام نصر بن محمد بن احمد بن ابراہیم ہے ۔ آپ مفسر،محدث،فقیہ،حافظ، مشہور عابد وزاہد، صوفی اور اَئمہ اَحناف ميں سے ہيں ،فقیہ اور امام الھدیٰ کے لقب سے ملقب ہيں، اپنے اصل نام سے زیادہ اپنی کنيت ابوالليث سمرقندی سے مشہور ہیں۔

اساتذہ کرام[ترمیم]

آپ نے کئی اساتذہ سے علمی فيض حاصل کيا،چند کے نام درج ذیل ہيں:

  • (1)۔آپ کے والد گرامی محمد بن ابراہيم التوزی
  • (2)الفقيہ ابو جعفر الہندوانی
  • (3)المفسِّرمحمد بن الفضل البلخی
  • (4)خليل بن احمد القاضی

تلامذہ[ترمیم]

آپ سے کئی تشنگان ِ علم نے علمی فيوض وبرکات حاصل کئے جن ميں سے چند کے نام يہ ہيں :

  • (1)لقمان بن حکيم الفرغانی(یہ آ پ کی کتابوں کے راوی ہيں )
  • (2)ابو سہل احمد بن محمد
  • (3)محمد بن عبد الرحمن الزبيری

ان کے علاوہ بھی آپ کے کئی شاگرد ہيں ۔

تصنیفات[ترمیم]

آپکی چندتصنیفات کے نام درج ذیل ہيں:

  • (1)بستان العارفین
  • (2)تفسیر القرآن(یہ چار جلدوں میں ہے)
  • (3) تنبیہ الغافلین
  • (4)حصر المسائل، فی الفروع
  • (5)خزانۃ الفقہ
  • (6)دقائق الاخبارفی ذکر الجنۃ والنار
  • (7)شرح الجامع الصغير للشيبانی، فی الفروع
  • (8)عيون المسائل
  • (9) الفتاوٰی
  • (10)مبسوط، فی الفروع
  • (11)مختلف الروايۃ ، فی مسائل الخلاف
  • (12)مقدّمۃ فی الفقہ
  • (13)نوادر الفقہ
  • (14) النوازل ، فی الفروع
  • (15)مقدمۃ الصلوٰۃ المشہورۃ
  • (16) تأسيس النظائر الفقھیۃ
  • (17)قرّۃ العيون ومفرح القلب المحزون
  • (18)عمدۃ العقائد
  • (19) فضائل رمضان
  • (20) شرعۃ الاسلام
  • (21) تفسير جز عم يتساء لون
  • (22)رسالۃ فی اصول الدین

وصال[ترمیم]

آپکی تاريخ وفات ميں اختلاف ہے ۔ صاحب جواہر المضيۃ اورصاحب تاج التراجم نے 373ھ ذکر کی ہے اورعلامہ داؤدی نےطبقات المفسِّرین ميں ذکر کيا کہ آپ کا وصال 383ھ ميں ہوا۔امام ذھبی نے سیر اعلام النبلا میں اس بات کو ترجیح دی ہے کہ آپکا وصال 375ھ میں ہوا ۔[3]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. جی این ڈی- آئی ڈی: http://d-nb.info/gnd/136291163 — اخذ شدہ بتاریخ: 13 اگست 2015 — اجازت نامہ: سی سی زیرو
  2. ربط: جی این ڈی- آئی ڈی — اخذ شدہ بتاریخ: 20 مارچ 2015 — اجازت نامہ: سی سی زیرو
  3. قرۃ العیون ومُفرِح القلب الْمحزون مؤ لِّف فقیہ ابواللیث نصر بن محمد سمرقندی صفحہ 10 تا12