ابو یوسف

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
ابو یوسف
پیدائش 113 ہجری یا 117 ہجری (735 یا 739 عیسوی)، کوفہ، عراق[1]
وفات 798
مذہب اسلام
عہد اسلامی عہدِ زریں
علاقہ مسلمان قانون دان
مکتب فکر اہل سنت حنفی
شعبہ عمل
فقہ
اہم نظریات
فقہ کا ارتقاء

امام ابوحنیفہ کے شاگرد اور حنفی مذہب کے ایک امام، یعقوب نام، ابویوسف کنیت، آپ امام ابوحنیفہ کے بعد خلیفہ ہادی، مہدی اور ہارون الرشید کے عہد میں قضا کے محکمے پر فائز رہے اور تاریخ اسلام میں پہلے شخص ہیں جو کو قاضی القضاۃ (چیف جسٹس) کے خطاب سے نوازا گیا‘ لیکن بادشاہ کی ہاں میں ہاں ملاکر نہیں رہے، بلکہ ہرمعاملہ میں شریعت کا اتباع کرتے، یہاں تک کہ بادشاہ کا مزاج درست کردیا۔آپ کی مشہور تصنیف کتاب الخراج فقہ حنفی کی مستند کتابوں میں شمار ہوتی ہے

چند دیگر تالیفات یہ ہیں

  • 1- كتاب الْآثَار "مُسْند الإِمَام أبي حنيفَة".
  • 2- كتاب النَّوَادِر.
  • 3- اخْتِلَاف الْأَمْصَار.
  • 4- أدب القَاضِي.
  • 5- المالي فِي الْفِقْه.
  • 6- الرَّد على مَالك بن أنس.
  • 7- الْفَرَائِض.
  • 8- الْوَصَايَا.
  • 9- الْوكَالَة.
  • 10- الْبيُوع.
  • 11- الصَّيْد والذبائح.
  • 12- الْغَصْب والاستبراء.
  • 13- كتاب الْجَوَامِع [2]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. http://www.sunnah.org/history/Scholars/twin_pillars.htm
  2. الخراج مؤلف : ابو يوسف يعقوب بن ابراہيم بن حبيب بن سعد بن حبتۃ الانصاری ناشر : المكتبۃ الازہریۃ للتراث القاہرہ