ابن عبد البر

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
ابن عبدالبر
پیدائش یوسف بن عبداللہ

جمعہ 25 ربیع الثانی 368ھ/ 29 نومبر 978ء

قرطبہ، خلافت قرطبہ، اندلس، موجودہ صوبہ قرطبہ (ہسپانیہ)، اندلوسیا، ہسپانیہ
وفات جمعہ 29 ربیع الثانی 463ھ/ 4 فروری 1071ء
(95 سال 5 دن قمری، 92 سال 2 ماہ 6 دن شمسی)
شاطبہ، خلافت قرطبہ، اندلس، موجودہ صوبہ بالینسیا، ویلنسیائی کمیونٹی، ہسپانیہ
آخری آرام گاہ اندلس
پیشہ محدث، فقیہ، مؤرخ
نمایاں کام الاستیعاب فی معرفۃ الاصحاب

ابن عبدالبر القرطبی (پیدائش: 29 نومبر 978ء– وفات: 4 فروری 1071ء) حدیث اور فقہ کے امام و مجتہد جنہوں نے اپنے عہد کے اکابر اساتذہ سے حدیث سنی اور احادیث کے حفظ و ضبط کے حوالے سے 'حافظِ مغرب' کے لقب سے مشہور ہوئے۔ طلباء اور علماء دور دراز علاقوں سے سفر کر کے ان کی خدمت میں حاضر ہو کر فیض حاصل کرتے۔ مختلف شہروں کی سیر و سیاحت بھی کی۔ بشونہ ( لزبن ) میں قاضی بھی رہے۔ ادبی علوم اور بلاغت میں کمال ہونے کے علاوہ مقدمات میں بڑے صحیح فیصلے کرتے۔ کئی علمی و ادبی کتابوں کے مصنف ہیں۔

پیدائش[ترمیم]

جمعہ 25 ربیع الثانی 368ھ/ 29 نومبر 978ء کو قرطبہ میں پیدا ہوئے۔

تصانیف[ترمیم]

  • الأجوبة الموعبة في الأسئلة المستغربة۔
  • الاستيعاب في معرفة الأصحاب۔ المعروف الاستیعاب (صحابہ کرام کے حالات پر بہت ہی عمدہ کتاب ہے)
  • الإشراف على ما في أصول فرائض المواريث من الإجماع والاختلاف۔ (وراثت کے مسائل پر ایک مکمل کتاب)
  • الاتقاء في فضائل الثلاثة الأئمة الفقهاء۔
  • بهجة المَجالس وانس المجالس وشحذ الذاهن والهاجس۔ المعروف بہجتہ المجالس
  • التقصي لما في الموطأ من حديث الرسول۔
  • جمهرة الأنساب۔
  • شرح زهديات أبي العتاهية۔
  • فهرست شيوخه أو فهرسته۔
  • أخبار أئمة الأمصار۔
  • الاستذكار الجامع لمذاهب فقهاء الأمصار وعلماء الأقطار۔
  • الاكتفاء في قراءة نافع وأبي عمرو بن العلاء بتوجيه ما اختلف فيه۔
  • الإنصاف فيما في بسم الله من الخلاف۔
  • البيان عن تلاوة القرآن۔
  • التمهيد لما في الموطأ من المعاني والأسانيد۔ المعروف التمہید (اس کتاب کے بارے میں ابن حزمؒ فرماتے ہیں، ’’میرے علم میں فقہ حدیث پر اس جیسی کوئی کتاب نہیں، تو اس سے اچھی کیا ہو گی۔‘‘)
  • الدرر في اختصار المغازي والسير۔
  • الشواهد في إثبات خبر الواحد۔
  • القصد والأمم في التعريف بأصول أنساب العرب والعجم۔
  • اختلاف أصحاب مالك بن أنس، واختلاف رواياتهم عنه۔
  • تجريد التمهيد في الموطأ من المعاني والأسانيد۔
  • الإنباه على قبائل الرواة۔
  • البستان في الأخدان۔
  • التجريد والمدخل إلى علم القرءات بالتجويد۔
  • جامع بيان العلم وفضله۔
  • رسالة في أدب المجالسة وحمد اللسان۔
  • العقل والعقلاء وما جاء في أوصافهم عن الحكماء والعلماء۔
  • الكافي في فقه أهل المدينة۔ [1]

وفات[ترمیم]

20 ربیع الثانی 463ھ بمطابق 25 جنوری 1071ء کو Jativa شاطبہ میں وفات پائی۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]