احمد بن خالد الناصری

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
احمد بن خالد الناصری
(عربی میں: أحمد بن خالد الناصري ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
معلومات شخصیت
پیدائش 20 اپریل 1835ء [1]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
سلا   ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 13 اکتوبر 1897ء (62 سال)[1]  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
سلا   ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت مراکش [2]  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ مورخ   ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان عربی [1]  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

ابو العباس احمد ابن خالد النصری السالوی، (1835ء-1897ء) مراکش کے شہر سلا میں پیدا ہوئے تھے اور احمد ابن خالد کو مراکش کا 19 ویں صدی کا سب سے بڑا مؤرخ سمجھا جاتا ہے۔[3] وہ ایک ممتاز عالم اور اس خاندان کا ایک فرد تھے جس نے 17 ویں صدی میں ناسیریا صوفی حکم کی بنیاد رکھی۔ انھوں نے مراکش کی تاریخ پر ایک اہم کتاب لکھی جس کا نام "المستقصا لی اخبار دووال المغرب الا اقصیٰ" ہے۔ یہ کتاب کئی جلدوں میں موجود ہے۔[4] یہ کتاب مراکش اور اسلامی مغرب کی اسلامی فتح سے لے کر 19 ویں صدی کے آخر تک کی ایک عمومی تاریخ ہے۔ کتاب کو پورا کرنے کے فوراً بعد ہی 1897ء میں وفات ہو گئی۔[5]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب پ http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb14550497x — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — مصنف: فرانس کا قومی کتب خانہ — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  2. https://libris.kb.se/katalogisering/xv8b5sdg04fzc4q — اخذ شدہ بتاریخ: 24 اگست 2018 — شائع شدہ از: 18 ستمبر 2012
  3. Le temps des marabouts : itinéraires et stratégies islamiques en Afrique occidentale française v.1880-1960۔ Robinson, David, 1938-, Triaud, Jean-Louis., Lydon, Ghislaine.۔ Paris: Karthala۔ 1997۔ صفحہ: pp. 136۔ ISBN 2-86537-729-6۔ OCLC 37211829 
  4. New annotated edition in 8 volumes, Keta Books, 2002
  5. C.R. Pennell Morocco Since 1830: A History, pp. 109,