زبیر ابن بکار

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
زبیر ابن بکار
معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 788  ویکی ڈیٹا پر تاریخ پیدائش (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مدینہ منورہ  ویکی ڈیٹا پر مقام پیدائش (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 23 اکتوبر 870 (81–82 سال)  ویکی ڈیٹا پر تاریخ وفات (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مکہ  ویکی ڈیٹا پر مقام وفات (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ شاعر  ویکی ڈیٹا پر پیشہ (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان عربی  ویکی ڈیٹا پر زبانیں (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

زبیر ابن بکار (پیدائش: 788ء– وفات: 23 اکتوبر 870ء) عرب کے مشہور مؤرخ، ماہر انساب و شعر اور قاضی الحرمین تھے۔

نام و نسب[ترمیم]

ابن بکار کی کنیت ابوبکر یا ابوعبداللہ ہے۔ ابن بکار کا نسب یوں ہے: زبیر ابن بکار بن عبد اللہ بن مصعب بن ثابت بن عبد اللہ بن الزبیر بن العوام القرشی الاسدی المدنی۔[1] حافظ، قاضی الحرمین کے لقب سے شہرت پائی۔

پیدائش[ترمیم]

ابن بکار 172ھ/ 788ء میں مدینہ منورہ میں پیدا ہوئے۔[2]

ابتدائی حالات[ترمیم]

تحصیل علم[ترمیم]

وفات[ترمیم]

ابن بکار ہفتہ 22 ذوالقعدہ 256ھ/ 21 اکتوبر 870ء کو اپنے گھر کی چھت سے گر کر زخمی ہوئے۔ ہنسلی اور ران کی ہڈی ٹوٹنے کے باعث دو روز بے ہوش رہے اور بروز پیر 23 ذوالقعدہ 256ھ/ 23 اکتوبر 870ء کو 84 سال کی عمر میں انتقال کر گئے۔[3][4]

تصانیف[ترمیم]

ابن بکار کی 31 تصانیف کا ذکر ابن ندیم نے الفہرست میں کیا ہے۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. شمس الدین الذہبی: سیر اعلام النبلاء، جلد 12، ص 311۔
  2. شمس الدین الذہبی: سیر اعلام النبلاء، جلد 12، ص 312۔
  3. ابن کثیر: تاریخ ابن کثیر، جلد 11، ص 62/63۔ تذکرہ واقعات سنۃ 256ھ۔
  4. شمس الدین الذہبی: سیر اعلام النبلاء، جلد 12، ص 314۔