ابن حزم اندلسی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
ابن حزم اندلسی
ابن حزم اندلسی
پیدائش 7 نومبر، 994 (384ھ)
قرطبہ، خلافت قرطبہ
وفات 15 اگست، 1064[1] (456ھ)
منتجار، نزد ویلبا، طائفہ اشبیلیہ
نسل اندلسی
مذہب اسلام
فرقہ اہل سنت
فقہ ظاہری
مکتب فکر عطاری
کارہائے نماياں الفصل في الملل والأهواء والنحل

ابن حزم کا پورا نام علی بن احمد بن سعید بن ہضم، کنیت ابو محمّد ہے اور ابن حزم کے نام سے شہرت پائی۔ آپ اندلس کے شہر قرطبہ میں پیدا ہونے اور عمر کی 72 بھاریں دیکھ کر 452 ہجری میں فوت ہویے۔

ابن حزم تقریباّ چار صد کتب کے مولف کہلاتے ہیں۔ آپ کی وہ کتابیں جنہوں نے فقہ ظاہری کی اشاعت میں شہرت پائی وہ المحلی اور" الاحکام" فی اصول الاحکام ہیں۔ المحلی فقہ ظاہری اور دیگر فقہ میں تقابل کا ایک موسوعہ ہے ۔ یہ کئی اجزاء پر مشتمل ایک ضخیم فقہی کتاب ہے جس میں فقہ اور اصول فقہ کے ابواب شامل ہیں۔المحلی کا اردو زبان میں ترجمہ ہو چکا ہے۔(اور اسکی تین جلدیں کبھی کبھی بازار میں آ جاتی ہیں لیکن اکثر نہیں ملتی) موخرالذکر کتاب کا مو ضو ع اصول فقہ ہے۔ کہتے ہیں کہ اگر یہ دونوں کتابیں نہ ہوتیں تو اس مسلک کا جاننے والا کوئی نہ ہوتا۔ ظاہری مسلک کے متبعین نہ ہونے کے با وجود یہ مسلک ہم تک جس ذریعہ سے پہنچا ہے، وہ ذریعہ یہ دونوں کتابیں ہی ہیں۔[2]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. آر۔ آرنلڈز، ابن حزم۔ دائرۃ المعارف اسلامیہ، سینکڈ ایڈیشن۔ برل آن لائن، 2013. حوالہ۔ 09 جنوری 2013
  2. اصول فقہ -بک نمبر -22- شریعہ اکیڈمی -فصل مسجد اسلامآباد