محمد ارشد القادری

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
علامہ مولانا محمد ارشد القادری
[[file:Allama Muhammad Arshad Al Qadri.jpg|lang=ur|280px|alt=Image illustrative de l'article محمد ارشد القادری|]]

معلومات شخصیت
قومیت رانا
مذہب اسلام
عملی زندگی
مادر علمی جامعہ پنجاب لاہور

محمد ارشدالقادری ایک مسلمان عالم دین 1990ء سے مسلسل داتا دربار لاہور کی جامع مسجد میں عوام الناس کے سوالات کے جوابات دے رہے ہیں ان کی سوال و جواب کی نشستیں ہفتے میں کئی بار ہوتی ہیں ان علمی نشستوں میں وہ لاکھوں سوالات کے جوابات دے چکے ہیں[1]

مفتی اعظم پاکستان علامہ مولانا محمد ارشد القادری داتا دربار لاہور کی مسجد میں

رانا ارشد قادری[ترمیم]

ایک طویل عرصے تک علمی و مذہبی حلقوں میں ان کی پہچان "رانا ارشد" کے نام سے رہی ہے۔ کیونکہ وہ رانا خاندان میں رانا محمد طفیل کے گھر 15 یا 16 فروری 1958ء کو پیدا ہوئے اور خود اپنے نام کے ساتھ "رانا" لفظ لکھتے رہے پھر ان کے استاد قبلہ مفتی محمد عبدالحکیم شرف قادری نے "ارشدالقادری" لکھنے کا حکم دیا۔ آج بھی عوام الناس کی اکثریت انہیں رانا ارشد رضوی کے نام جانتی ہے۔[2]

بچپن[ترمیم]

ان کا بچپن کوٹ نیناں تحصیل میں گزرا اور ابتدائی تعلیم کا آغاز وہیں ہوا۔

تعلیم[ترمیم]

ارشد نے ثانوی تعلیم لاہور کے علاقے بلال گنج میں اپنے استادِ محترم محمد علی نقشبندی سے اور نزدیکی گورنمنٹ اسلامیہ اسکول خزانہ گیٹ لاہور سے حاصل کی۔ انہوں نے گورنمنٹ کالج لاہور سے اور گولڈ میڈل حاصل کیا۔ انہوں نے دینی تعلیم کے لیے تنظیم المدارس اہل سنت پاکستان (بورڈ) کے امتحانات اعلیٰ پوزیشن سے پاس کیے۔ انہوں نے اسلامیات ، عربی اور تاریخ میں ایم اے کی اسناد جامعہ پنجاب سے حاصل کیں۔ ارشد نے مفتی عبدالقیوم ہزاروی ، مفتی عبدالقیوم خان ہزاروی، مفتی عبدالعلیم سیالوی اور مفتی محمد عبدالحکیم شرف قادری سے بھی علم دین سیکھا۔

بیعت و خلافت[ترمیم]

محمد ارشد نے علامہ ابو محمد، محمد عبدالرشید قادری سمندری شریف کے ہاتھ پر بیعت کی۔ وہیں سے چاروں سلاسل میں خلافت سے شرف یاب ہیں۔ ان کا سلسلہ طریقت میں امام احمد رضا خان قادری سے جا ملتا ہے۔

نظریات[ترمیم]

مفتی محمد ارشدالقادری، اعلٰی حضرت امام احمد رضا خان قادری کے افکار و نظریات سے متاثر ہیں۔ 30 جنوری 2011ء کو انہوں نے "فکر رضا کانفرنس" منعقد کی۔ ان کے نزدیک حرمت رسولصلی اللہ علیہ وآلہ واصحابہ وسلم کا تحفظ ہر مسلمان کا فرض ہے۔ انہوں نے 14 اکتوبر، 2012ء کو "حرمت رسول اور اس کے تقاضے"[3] کے نام سے ایک اجتماع کیا۔

تصانیف[ترمیم]

مفتی محمد ارشد القادری بہت سی کتابوں کے مصنف ہیں جن میں سے دو درجن کے قریب زیور طبع سے آراستہ ہو چکی ہیں۔ وہ صحیح ترمذی کی شرح "فیوض النبی" لکھ رہے ہیں اس کی جلد اول چھپ چکی ہے[4] اور سینکڑوں کتب طباعت کی منتظر ہیں۔ ان کی طبع شدہ کتابوں کے نام یہ ہیں۔

  1. جنت کا راستہ
  2. علمی محاسبہ
  3. امام اعظم ابو حنیفہ
  4. الجھا ہے پاؤں یار کازلفِ دراز میں
  5. عید میلا د البنی صلی اللہ علیہ وآلہ واصحابہ وسلم کی شرعی حیثیت
  6. حقیقت میلا د فیو ض و بر کات کی برسات
  7. تعظیم مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وآلہ واصحابہ وسلم قرآن کی روشنی میں
  8. ندا یارسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ واصحابہ وسلم کا جواز
  9. غلامی رسو ل صلی اللہ علیہ وآلہ واصحابہ وسلم اور اُ س کے تقاضے
  10. شان صدیق اکبر رضی اللہ عنہ
  11. مولانا محمد بخش مسلم کے سوسال
  1. میاں محمد حیات نقشبندی پر ایک نظر
  2. اسباب عروج و زوال
  3. پیغام باہو
  4. نماز ہے حسن ایمان
  5. ذرا سی بات یا معرکہ حق و باطل
  6. ہماری دعوت فکر
  7. ذرا ایک نظر ادھر بھی
  8. پاکستان کو کیسے بچایا جائے
  9. سکون قلب
  10. نوجوانان ملت کے نام کھلا خط
  11. فضائل و مسائل رمضان اعتکاف روزہ
  12. فضائل شب برات
  13. ہماری پریشانیوں کا حل

تنظیم[ترمیم]

محمد ارشد قادری تعلیم و تربیت اسلامی پاکستان نامی ایک تحریک کے بانی ہیں۔ اس تنظیم کے زیر انتظام مختلف اجتماعات، کانفرسیں اور سیمینار منعقد کیے جاتے ہیں۔[5][6][7][8] تعلیم و تربیت اسلامی مختلف فلاحی کاموں میں حصہ لیتی ہے۔ "تعلیم و تربیت اسلامی پاکستان" کا منشور وحدت امت ، خدمت امت اور استحکام امت ہے۔ تعلیم و تربیت اسلامی پاکستان کا صدر دفتر لاہور میں ہے۔ جس کا نام جامعہ اسلامیہ رضویہ کے طور پر جانا جاتا ہے۔ یہ رچنا ٹاؤن فیروز والہ میں واقع ہے۔ اس میں تحریک کے مختلف شعبہ جات کام کر رہے ہیں۔

حوالہ جات[ترمیم]

بیرونی روابط[ترمیم]