عبد القیوم ہزاروی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
(عبدالقیوم ہزاروی سے رجوع مکرر)
Jump to navigation Jump to search
محمد عبدالقیوم قادری ہزاروی
معلومات شخصیت
شہریت پاکستانی
شہریت پاکستانی
مذہب اسلام
عملی زندگی
مادر علمی جامعہ حزب الاحناف لاہور
P islam.svg باب اسلام

محمد عبد القیوم ہزاروی ایک عظیم مفتیِ اسلام تھے۔ وہ جامعہ نظامیہ رضویہ لاہور کے مہتمم ،جامعہ نظامیہ رضویہ شیخوپورہ کے مہتمم و بانی اورتنظیم المدارس اہلسنت کے ناظم اعلیٰ تھے۔

نام[ترمیم]

ان کا پورا نام محمد عبد القیوم قادری ہزاروی تھا۔ والد کا نام مولانا حمید اللہ تھا

ولادت[ترمیم]

مفتی عبد القیوم ہزاروی 29 شعبان 1352ھ بمطابق 1933ء کو موضع میراہ علاقہ اپر تناول ضلع مانسہرا میں میں پیدا ہوئے۔ ان کا بچپن جڑانوالہ ضلع فیصل آباد میں ان کے والد مولانا حمید اللہ ہزاروی کے زیر سایہ گزرا۔ انہی سے قرآن پڑھنا سیکھا۔ اور چچا مولانا محبوب الرحمن سے ابتدائی کتب پڑھیں۔

سلسلہ تعلیم[ترمیم]

انہوں نے دارالعلوم حزب الاحناف لاہور ،دار العلوم منظر الاسلام ہارون آباد ،مدرسہ احیائے علوم بوریوالہ جامعہ رضویہ مظہر الاسلام فیصل آباد سے مولانا محمد سردار احمد قادری سے تعلیم حاصل کی۔ 1955ء میں حزب الاحناف سے دستار فضیلت حاصل کی۔ مولانا محمد سردار احمد قادری ہی سے علم حدیث کا دورہ کیا۔

معلمین[ترمیم]

آپ کے معلمین میں مولانا محمد سردار احمد قادری، سید انور شاہ، مفتی عبد اللہ اشرفی برکاتی اور مفتی غلام رسول رضوی کے نام سر فہرست ہیں۔

بیعت[ترمیم]

مولانامحمد سردار احمد قادری ہی آپ کے پیر و مُرشِد ہیں۔ آپ سلسلہ عالیہ قادریہ میں ان سے بیعت ہوئے۔

تصانیف[ترمیم]

بہت سی کتابوں کے مصنف تھے۔ "تاریخ نجد و حجاز" آپ کی معرکۃ الآ راء تصنیف ہے۔

تنظیم[ترمیم]

تنظیم المدارس اہل سنت پاکستان (بورڈ)، رَضا فاؤنڈیشن، کے بانی تھے۔ اور جماعت اہل سنت کی سپریم کونسل، رویت ہلال کمیٹی اور زکوٰۃ کمیٹی کے ارکان رہے۔ تنظیم المدارس (اہل سنت) پاکستان کے بلامقابلہ ناظم منتخب ہوئے اور تاحیات اس عہدہ پر فائز رہے۔ فتاویٰ رضویہ کا اردو ترجمہ کروانا اور طبع کروانا آپ کا عظیم کارنامہ ہے۔

شاگرد[ترمیم]

محمد عبدالحکیم شرف قادری، محمد ارشد القادری اور محمد خان قادری جیسے جید علما کے علاوہ آپ کے ہزاروں تلمیذ تھے۔

وفات[ترمیم]

مفتی عبد القیوم ہزاروی قادری 26 اگست، 2003ء کو فوت ہو گئے۔ آپ کی نماز جنازہ عتیق سٹیڈیم لاہور میں 27 اگست، 2003ء کو مولانا شاہ احمد نورانی نے پڑھائی۔ ان کا مزار جامعہ نظامیہ رضویہ شیخوپورہ میں مسجد کے باہر جنوبی طرف موجود ہے۔

بیرونی روابط[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]