مندرجات کا رخ کریں

پاکستان سپر لیگ 2024ء

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
پاکستان سپر لیگ 2024ء
آفیشل لوگو
تاریخ17 فروری 2024 – 18 مارچ 2024[1]
منتظمپاکستان کرکٹ بورڈ
کرکٹ طرزٹی/20
ٹورنامنٹ طرزراؤنڈ روبن ٹورنامنٹ اور پلے آف
میزبانپاکستان
فاتحاسلام آباد یونائیٹڈ (3 بار)
رنر اپملتان سلطانز
شریک ٹیمیں6
کل مقابلے34
بہترین کھلاڑیشاداب خان (اسلام آباد یونائیٹڈ) (305 رنز اور 14 وکٹیں)
کثیر رنزبابر اعظم (پشاور زلمی) (569)
کثیر وکٹیںاسامہ میر (ملتان سلطانز) (24)
باضابطہ ویب سائٹpsl-t20.com
2023
2025

پاکستان سپر لیگ 2024ء (جسے پی ایس ایل 9 بھی کہا جاتا ہے یا سپانسرشپ وجوہات کی بنا پر ایچ بی ایل- پی ایس ایل 2024 ) پاکستان سپر لیگ کا نواں سیزن تھا۔ اس ٹورنامنٹ کو ایک فرنچائز ٹوئنٹی 20 کرکٹ لیگ کے طور پر پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے 2015ء میں قائم کیا تھا۔ یہ لیگ 13 فروری سے 18 مارچ 2024ء تک منعقد ہوئی جس میں 6 ٹیموں نے حصہ لیا رہا ہے۔ یہ لیگ راؤنڈ روبن اور پلے آف کی بنیاد پر کھیلی گئی۔پی ایس ایل 2024 کی دفاعی چیمپئن لاہور قلندرز تھی۔فائنل میچ میں اسلام آباد یونائیٹڈ نے آخری گیند پر ملتان سلطانزکو 2 وکٹوں سے شکست دے کر تیسری بار ٹورنامنٹ جیت لیا۔ [2] [3]

پس منظر[ترمیم]

پاکستان کرکٹ بورڈ پاکستان کے عام انتخابات، 2024ء کی وجہ سے ٹورنامنٹ کو متحدہ عرب امارات منتقل کرنے اور لیگ میں مزید دو ٹیموں کو متعارف کرانے کا منصوبہ بنا رہا تھا۔ تاہم فرنچائز مالکان نے ان منصوبوں کی مخالفت کی۔[4][5] میچوں کی میزبانی کے لیے پشاور میں ارباب نیاز اسٹیڈیم کی تجاویز پیش کی گئی تھیں لیکن سیکیورٹی مسائل کی وجہ سے یہ کامیاب نہیں ہوسکیں۔[6]


دستے[ترمیم]

فرنچائزز نے اپنے کھلاڑیوں کو برقرار رکھنے کا اعلان کرنے کے چھ دن بعداس ٹورنامنٹ میں شریک دستوں کو 13 دسمبر 2023 کو لاہور میں ڈرافٹ کے ساتھ حتمی شکل دی ۔[7][8]

اسلام آباد یونائیٹڈ کراچی کنگز لاہور قلندرز ملتان سلطانز پشاور زلمی کوئٹہ گلیڈی ایٹرز
  1. ^ ا ب پ ت ٹ کھلاڑی کو انجری ہوئی جس کی وجہ سے وہ ٹورنامنٹ سے باہر ہو گئے۔
  2. ^ ا ب کھلاڑی این او سی مسائل کی وجہ سے شرکت نہ کر سکا۔
  3. کھلاڑی اپنی قومی ٹیم کے بین الاقوامی میچوں کی وجہ سے ٹورنامنٹ سے دستبردار ہو گئے۔

مقامات[ترمیم]

پی سی بی نے 12 جنوری 2024 کو مقامات اور مقابلوں کا اعلان کیا۔[17][18] ٹورنامنٹ چار شہروں کراچی، لاہور، ملتان اور راولپنڈی میں منعقد ہوا۔[19][20]

شہر لاہور ملتان کراچی راولپنڈی
اسٹیڈیم قذافی اسٹیڈیم ملتان کرکٹ اسٹیڈیم نیشنل اسٹیڈیم راولپنڈی کرکٹ اسٹیڈیم
میچ 9 5 11 9
تصویر
گنجائش 27,000[21][22] 30,000[23][24] 32,000[25][26] 15,000[27][28]


میچ آفیشلز[ترمیم]

12 فروری 2024ء کو، پی سی بی نے لیگ مرحلے کے میچوں کے لیے آفیشلز کی فہرست کا اعلان کیا جس میں آئی سی سی امپائرز کے ایلیٹ پینل کے 4 اراکین شامل تھے۔[29]

امپائر[ترمیم]

ریفری[ترمیم]

مارکیٹنگ[ترمیم]

ٹائٹل ترانہ[ترمیم]

سیزن کا لوگو 8 دسمبر 2023 کو ایچ بی ایل پی ایس ایل 9، [ا] یا ہیش ٹیگ #HBLPSL9، [30] کے نام کے ساتھ سامنے آیا کیونکہ "ایچ بی ایل"پاکستان لیگ کے پہلے سیزن سے ہی اس کا ٹائٹلر اسپانسر رہا ہے۔[31] ٹائٹل ترانہ "کھل کے کھیل" میں علی ظفر اور آئمہ بیگ شامل ہیں۔

ٹرافی[ترمیم]

اورین نامی سیزن کی ٹرافی کی نقاب کشائی 13 فروری 2024 کو پولو گراؤنڈ، جیلانی پارک، لاہور میں کی گئی۔ اسے لاہور کے محفوظ جیولرز نے بنایا تھا۔[32][33]

نشریات اور میڈیا[ترمیم]

چونکہ سابقہ نشریاتی حقوق دو سالکے بعد ختم ہو گئے ، اس لیے نشریاتی اور سلسلہ بندی کے حقوق کے لیے عوامی میرٹ پر مبنی ٹینڈر اگلے دو سالوں کے لیے 9 جنوری 2024 کو کھولے گئے۔ اے آر وائی ڈیجیٹل نیٹ ورک نے 45 فیصد زائد بولی دے کر نشریاتی حقوق کی تجدید کی اور ولی ٹیکنالوجیز نے 113 فیصد کی زائد بولی کے ساتھ اسٹریمنگ کے حقوق جیتے۔[ب][37][38] جبکہ پی سی بی نے 16 فروری کو عالمی نشریاتی اداروں کی فہرست کا اعلان کیا، یہ پہلا سیزن ہے جسے ٹینڈر نہ جیتنے کی وجہ سے پی ٹی وی سپورٹس نشر نہیں کر سکے گا۔[39][40]

رمیز راجہ کی اس سال پاکستان کے سات کمنٹیٹرز کے درمیان واپسی ہوئی اور مائیکل کلارک نے آٹھ بین الاقوامی کمنٹیٹرز میں اپنی پہلی شمولیت حاصل کی۔ زینب عباس اور ایرن وکٹوریہ ہالینڈ سیزن میں نمائندگی کر رہی ہیں۔[41]

کینسر سے آگاہی[ترمیم]

چھاتی کے کینسر سے آگاہی کا دن اور بچپن کے کینسر کا آگاہی دن بالترتیب 5 اور 12 مارچ کو منایا گیا، جس کی تھیم بالترتیب گلابی ربن اور گولڈن ربن سے بنے ہوئے تھے۔[42][43]

لیگ مرحلہ[ترمیم]

فارمیٹ[ترمیم]

ہر ٹیم نے ہر دوسری ٹیم کو ڈبل راؤنڈ رابن فارمیٹ میں دو بار کھیلا، پوائنٹس ٹیبل میں سرفہرست چار ٹیمیں پلے آف میں آگے بڑھیں۔.[44]

پوائنٹس ٹیبل[ترمیم]

پوزیشن ٹیم کھیلے جیتے ہارے بلانتیجہ پوائنٹس نیٹ رن ریٹ
1 ملتان سلطانز (رنر اپ) 10 7 3 0 14 1.150
2 پشاور زلمی (تیسری) 10 6 3 1 13 0.147
3 اسلام آباد یونائیٹڈ (چیمپئن) 10 5 4 1 11 0.224
4 کوئٹہ گلیڈی ایٹرز (چوتھی) 10 5 4 1 11 −0.921
5 کراچی کنگز 10 4 6 0 8 −0.192
6 لاہور قلندرز 10 1 8 1 3 −0.554
ماخذ: کرک انفو

چار اعلی درجے کی ٹیموں نے پلے آفس کے لیے کوالیفائی کیا۔
  کوالیفائر میں رسائی
  الیمینیٹر_1 میں رسائی


نتائج کا خلاصہ[ترمیم]

مہمان ٹیم ←IU LQ MS PZ KK QG
میزبان ٹیم ↓
اسلام آباد یونائیٹڈلاہور
17 رنز
اسلام آباد
3 وکٹ
اسلام آباد
29 رنز
اسلام آباد
5 وکٹ
بلا
نتیجہ
لاہور قلندرزاسلام آباد
8 وکٹ
ملتان
60 رنز
پشاور
8 رنز
کراچی
2 وکٹ
کوئٹہ
5 وکٹ
ملتان سلطانزملتان
5 وکٹ
ملتان
5 وکٹ
پشاور
5 رنز
ملتان
55 رنز
ملتان
13 رنز
پشاور زلمیپشاور
8 رنز
بلا
نتیجہ
پشاور
4 رنز
کراچی
7 وکٹ
پشاور
76 رنز
کراچی کنگزاسلام آباد
7 وکٹ
کراچی
3 وکٹ
ملتان
20 رنز
پشاور
2 رنز
کوئٹہ
5 وکٹ
کوئٹہ گلیڈی ایٹرزکوئٹہ
3 وکٹ
کوئٹہ
6 وکٹ
ملتان
79 رنز
کوئٹہ
16 رنز
کراچی
7 وکٹ
میزبان ٹیم جیتیمہمان ٹیم جیتی
  • نوٹ: یہ نتائج میزبان (افقی) اور مہمان (عمودی) ٹیموں کے مطابق ہیں۔
  • نوٹ: نتائج پر کلک کر کے مقابلے کا خلاصہ دیکھیے۔


لیگ کی تفصیل[ترمیم]

ٹیمگروپ مقابلےپلے آف
12345678910ا1/کا2ف
اسلام آباد یونائیٹڈ22224577911WWW
لاہور قلندرز0000001333
ملتان سلطانز246681012121214WL
پشاور زلمی002467791113LL
کراچی کنگز0244446688
کوئٹہ گلیڈی ایٹرز246689991111L
جیتہاربلا نتیجہ
  • نوٹ: ہر میچ کے اختتام پر ہر ٹیم کے کل پوائینٹس درج ہیں۔
  • نوٹ: پوائینٹس (گروپ میچز) یا جیت/ہار (ناک آؤٹ میچز) پر کلک کر کے مقابلے کا خلاصہ دیکھیں۔


مقابلے[ترمیم]

پی سی بی نے 12 جنوری 2024 کو مقابلوں کا اعلان کیا۔ لاہورنے افتتاحی میچ کی میزبانی کی جبکہ کراچی نے پلے آف اور فائنل کی میزبانی کی۔ تمام اوقات پاکستان کا معیاری وقت (م ع و +5) کے مطابق ہیں۔[17][18]

لاہور اور ملتان[ترمیم]

میچ 1
17 فروری 2024 (د/ر)
اسکور کارڈ
(گ) لاہور قلندرز
195/5 (20 آوور)
ب
شاداب خان 74* (41)
سلمان فیاض 1/23 (2.2 آوور)
اسلام آباد یونائیٹڈ نے 8 وکٹوں سے کامیابی حاصل کی۔
قذافی اسٹیڈیم، لاہور
امپائر: مائیکل گف (انگلستان) اور علیم ڈار (پاکستان)
بہترین کھلاڑی: شاداب خان (اسلام آباد یونائیٹڈ)
  • اسلام آباد یونائیٹڈ نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔
  • عبید شاہ (اسلام آباد یونائیٹڈ) اور سلمان فیاض (لاہور قلندرز) دونوں نے اپنے ٹی/20 کرئیر کا آغاز کیا۔

میچ 2
18 فروری 2024
اسکور کارڈ
ب
پشاور زلمی
190/6 (20 آوور)
جیسن رائے 75 (48)
سلمان ارشاد 3/38 (4 آوور)
کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے 16 رنز سے کامیابی حاصل کی۔
قذافی اسٹیڈیم، لاہور
امپائر: مائیکل گف (انگلستان) اور طارق رشید (پاکستان)
بہترین کھلاڑی: سعود شکیل (کوئٹہ گلیڈی ایٹرز)
  • پشاور زلمی نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔
  • محمد ذیشان (پشاور زلمی) اپنے ٹی/20 کرئیر کا آغاز کیا۔

میچ 3
18 فروری 2024 (د/ر)
اسکور کارڈ
(گ) ملتان سلطانز
185/2 (20 آوور)
ب
کراچی کنگز
130/8 (20 آوور)
ریزا ہینڈرکس 79* (54)
میر حمزہ 1/30 (4 آوور)
شعیب ملک 53 (35)
محمد علی 3/23 (4 آوور)
ملتان سلطانز نے 55 رنز سے کامیابی حاصل کی۔
ملتان کرکٹ اسٹیڈیم، ملتان
امپائر: راشد ریاض (پاکستان) اور کرس گیفانی (نیوزی لینڈ)
بہترین کھلاڑی: ریزا ہینڈرکس (ملتان سلطانز)
  • کراچی کنگز نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔
  • سعد بیگ (کراچی کنگز) نے اپنے ٹی/20 کرئیر کا آغاز کیا۔

میچ 4
19 فروری 2024 (د/ر)
اسکور کارڈ
(گ) لاہور قلندرز
187/7 (20 آوور)
ب
خواجہ نافع 60* (31)
سکندررضا 1/25 (3 آوور)
کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے 5 وکٹوں سے کامیابی حاصل کی۔
قذافی اسٹیڈیم، لاہور
امپائر: مائیکل گف (انگلستان) اور علیم ڈار (پاکستان)
بہترین کھلاڑی: خواجہ نافع (کوئٹہ گلیڈی ایٹرز)
  • لاہور قلندرز نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کا فیصلہ کیا۔

میچ 5
20 فروری 2024 (د/ر)
اسکور کارڈ
ب
(گ) ملتان سلطانز
145/5 (19.5 آوور)
آغا سلمان 52 (43)
محمد علی 3/19 (4 آوور)
ریزا ہینڈرکس 58 (46)
نسیم شاہ 2/27 (4 آوور)
ملتان سلطانز نے 5 وکٹوں سے کامیابی حاصل کی۔
ملتان کرکٹ اسٹیڈیم، ملتان
امپائر: کرس گیفانی (نیوزی لینڈ) اور فیصل آفریدی (پاکستان)
بہترین کھلاڑی: محمد علی (ملتان سلطانز)
  • ملتان سلطانز نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔

میچ 6
21 فروری 2024
اسکور کارڈ
پشاور زلمی
154 (19.5 آوور)
ب
کراچی کنگز
157/3 (16.5 آوور)
بابر اعظم 72 (51)
میر حمزہ 3/28 (4 آوور)
کیرون پولارڈ 49* (21)
لیوک ووڈ 2/20 (3.5 آوور)
کراچی کنگز نے 7 وکٹوں سے کامیابی حاصل کی۔
قذافی اسٹیڈیم، لاہور
امپائر: احسن رضا (پاکستان) اور مائیکل گف (انگلستان)
بہترین کھلاڑی: میر حمزہ (کراچی کنگز)
  • کراچی کنگز نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔

میچ 7
21 فروری 2024 (د/ر)
اسکور کارڈ
لاہور قلندرز
166/5 (20 آوور)
ب
(گ) ملتان سلطانز
170/5 (19 آوور)
ملتان سلطانز نے 5 وکٹوں سے کامیابی حاصل کی۔
ملتان کرکٹ اسٹیڈیم، ملتان
امپائر: راشد ریاض (پاکستان) اور کرس گیفانی (نیوزی لینڈ)
بہترین کھلاڑی: محمد رضوان (ملتان سلطانز)
  • لاہور قلندرز نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کا فیصلہ کیا۔

میچ 8
22 فروری 2024 (د/ر)
اسکور کارڈ
ب
آغا سلمان 33 (23)
ابرار 3/18 (4 آوور)
جیسن رائے 37 (18)
شاداب خان 2/24 (4 آوور)
کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے 3 وکٹوں سے کامیابی حاصل کی۔
قذافی اسٹیڈیم، لاہور
امپائر: رچرڈ الینگورتھ (انگلستان) اور علیم ڈار (پاکستان)
بہترین کھلاڑی: ریلی روسو (کوئٹہ گلیڈی ایٹرز)
  • کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔

میچ 9
23 فروری 2024 (د/ر)
اسکورکارڈ
پشاور زلمی
179/8 (20 آوور)
ب
ملتان سلطانز
174 (20 آوور)
حسیب اللہ خان 37 (18)
محمد علی 2/23 (4 آوور)
ڈیوڈ میلان 52 (25)
عارف یعقوب 3/43 (4 آوور)
پشاور زلمی نے 5 رنز سے کامیابی حاصل کی۔
ملتان کرکٹ اسٹیڈیم، ملتان
امپائر: کرس گیفانی (نیوزی لینڈ) اور فیصل آفریدی (پاکستان)
بہترین کھلاڑی: لیوک ووڈ (پشاور زلمی)
  • پشاور زلمی نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کا فیصلہ کیا۔

میچ 10
24 فروری 2024 (د/ر)
(گ) لاہور قلندرز
175/6 (20 آوور)
ب
کراچی کنگز
176/8 (20 آوور)
کیرون پولارڈ 58 (33)
احسن حفیظ 2/19 (2 آوور)
کراچی کنگز نے 2 وکٹوں سے کامیابی حاصل کی۔
قذافی اسٹیڈیم، لاہور
امپائر: رچرڈ الینگورتھ (انگلستان) اور احسن رضا (پاکستان)
بہترین کھلاڑی: کیرون پولارڈ (کراچی کنگز)
  • کراچی کنگز نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔

میچ 11
25 فروری 2024 (د/ر)
(گ) ملتان سلطانز
180/4 (20 آوور)
ب
ریزا ہینڈرکس 72 (47)
محمد عامر 2/46 (4 آوور)
خواجہ نافع 36 (31)
محمد علی 3/19 (4 آوور)
ملتان سلطانز نے 13 رنز سے کامیابی حاصل کی۔
ملتان کرکٹ اسٹیڈیم، ملتان
امپائر: کرس گیفانی (نیوزی لینڈ) اور فیصل آفریدی (پاکستان)
بہترین کھلاڑی: محمد علی (ملتان سلطانز)
  • کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔

میچ 12
25 فروری 2024 (د/ر)
اسکور کارڈ
پشاور زلمی
211/4 (20 آوور)
ب
(گ) لاہور قلندرز
203/6 (20 آوور)
صائم ایوب 88 (55)
شاہین آفریدی 3/33 (4 آوور)
پشاور زلمی نے 8 رنز سے کامیابی حاصل کی۔
قذافی اسٹیڈیم، لاہور
امپائر: رچرڈ الینگورتھ (انگلستان) اور احسن رضا (پاکستان)
بہترین کھلاڑی: صائم ایوب (پشاور زلمی)
  • لاہور قلندرز نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔

میچ 13
26 فروری 2024 (د/ر)
اسکور کارڈ
پشاور زلمی
201/5 (20 آوور)
ب
بابر اعظم 111* (63)
شاداب خان 2/28 (4 آوور)
اعظم خان 75 (30)
عارف یعقوب 5/27 (4 آوور)
پشاور زلمی نے 8 رنز سے کامیابی حاصل کی
قذافی اسٹیڈیم، لاہور
امپائر: رچرڈ الینگورتھ (انگلستان) اور شوزیب رضا (پاکستان)
بہترین کھلاڑی: بابر اعظم (پشاور زلمی)
  • اسلام آباد یونائیٹڈ نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔

میچ 14
27 فروری 2024
19:00 (د/ر)
اسکور کارڈ
ملتان سلطانز
214/4 (20 آوور)
ب
(گ) لاہور قلندرز
154 (17 آوور)
عثمان خان 96 (55)
شاہین آفریدی 2/39 (4 آوور)
ملتان سلطانز نے 60 رنز سے کامیابی حاصل کی۔
قذافی اسٹیڈیم، لاہور
امپائر: روچیرا پالیا گروگے (سری لنکا) اور احسن رضا (پاکستان)
بہترین کھلاڑی: عثمان خان (ملتان سلطانز)
  • ملتان سلطانز نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کا فیصلہ کیا۔

کراچی اور راولپنڈی[ترمیم]

میچ 15
28 فروری 2024
19:00 (د/ر)
اسکور کارڈ
(گ) کراچی کنگز
165/5 (20 آوور)
ب
کولن منرو 82 (47)
محمد نواز 1/23 (4 آوور)
اسلام آباد یونائیٹڈ نے 7 وکٹوں سے کامیابی حاصل کی۔
قومی بینک کرکٹ گراؤنڈ، کراچی
امپائر: کرس گیفانی (نیوزی لینڈ) اور راشد ریاض (پاکستان)
بہترین کھلاڑی: کولن منرو (اسلام آباد یونائیٹڈ)
  • اسلام آباد یونائیٹڈ نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔

میچ 16
29 فروری 2024 (د/ر)
اسکور کارڈ
(گ) کراچی کنگز
165/8 (20 آوور)
ب
جیمز ونس 37 (25)
ابرار احمد 3/31 (4 آوور)
کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے 5 وکٹوں سے کامیابی حاصل کی۔
قومی بینک کرکٹ گراؤنڈ، کراچی
امپائر: کرس گیفانی (نیوزی لینڈ) اور عبد المقیت (پاکستان)
بہترین کھلاڑی: شیرفین ردرفورڈ (کوئٹہ گلیڈی ایٹر)
  • کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔

میچ 17
2 مارچ 2024
ب
بلا نتیجہ
راولپنڈی کرکٹ اسٹیڈیم، راولپنڈی
امپائر: روچیرا پالیا گروگے (سری لنکا) اور احسن رضا (پاکستان)
  • بارش کی وجہ سے میچ کھیلنا ممکن نہیں تھا۔

میچ 18
2 مارچ 2024 (د/ر)
ب
بلا نتیجہ
راولپنڈی کرکٹ اسٹیڈیم، راولپنڈی
امپائر: رچرڈ الینگورتھ (انگلستان) اور آصف یعقوب (پاکستان)
  • بارش کی وجہ سے میچ کھیلنا ممکن نہیں تھا۔

میچ 19
3 مارچ 2024 (د/ر)
اسکور کارڈ
(گ) کراچی کنگز
189/3 (20 آوور)
ب
ملتان سلطانز
169/7 (20 آوور)
شعیب ملک 38 (28)
اسامہ میر 2/29 (4 آوور)
ملتان سلطانز نے 20 رنز سے کامیابی حاصل کی۔
قومی بینک کرکٹ گراؤنڈ، کراچی
امپائر: فیصل آفریدی (پاکستان) اور کرس گیفانی (نیوزی لینڈ)
بہترین کھلاڑی: عثمان خان (کرکٹ کھلاڑی) (ملتان سلطانز)
  • ملتان سلطانز نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کا فیصلہ کیا۔
  • اس میچ کے نتیجے میں ملتان سلطانز نے پلے آف کے لیے کوالیفائی کر لیا۔[45]

میچ 20
4 مارچ 2024 (د/ر)
اسکور کارڈ
(گ) اسلام آباد یونائیٹڈ
196/4 (20 آوور)
ب
پشاور زلمی
167/9 (20 آوور)
شاداب خان 80 (51)
صائم ایوب 2/15 (2 آوور)
عامرجمال 87 (49)
شاداب خان 3/41 (4 آوور)
اسلام آباد یونائیٹڈ نے 29 رنز سے کامیابی حاصل کی۔
راولپنڈی کرکٹ اسٹیڈیم، راولپنڈی
امپائر: رچرڈ الینگورتھ (انگلستان) اور آصف یعقوب (پاکستان)
بہترین کھلاڑی: شاداب خان (اسلام آباد یونائیٹڈ)
  • پشاور زلمی نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔

میچ 21
5 مارچ 2024 (د/ر)
پشاور زلمی
204/5 (20 آوور)
ب
ملتان سلطانز
200/5 (20 آوور)
بابر اعظم 64 (40)
اسامہ میر 3/32 (4 آوور)
افتخار احمد 60* (27)
عامرجمال 2/36 (4 آوور)
پشاور زلمی نے 4 رنز سے کامیابی حاصل کی۔
راولپنڈی کرکٹ اسٹیڈیم، راولپنڈی
امپائر: رچرڈ الینگورتھ (انگلستان) اور ایلکس وارف (انگلستان)
بہترین کھلاڑی: بابر اعظم (پشاور زلمی)
  • پشاور زلمی نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کا فیصلہ کیا۔

میچ 22
6 مارچ 2024
اسکور کارڈ
ب
کراچی کنگز
121/3 (15.3 آوور)
سعود شکیل 33 (28)
حسن علی 4/15 (4 آوور)
ٹم سیفرٹ 49 (31)
محمد عامر 1/23 (2 آوور)
کراچی کنگز نے 7 وکٹوں سے کامیابی حاصل کی۔
راولپنڈی کرکٹ اسٹیڈیم، راولپنڈی
امپائر: رچرڈ الینگورتھ (انگلستان) اور آصف یعقوب (پاکستان)
بہترین کھلاڑی: حسن علی (کراچی کنگز)
  • کراچی کنگز نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔
  • اس میچ کے نتیجے میں لاہور قلندرز ٹورنامنٹ سے باہر ہو گئی۔[46]

میچ 23
6 مارچ 2024 (د/ر)
اسکور کارڈ
لاہور قلندرز
162/7 (20 آوور)
ب
(گ) اسلام آباد یونائیٹڈ
145 (18.5 آوور)
فہیم اشرف 41* (31)
زمان خان 4/37 (3.5 آوور)
لاہور قلندرز نے 17 رنز سے کامیابی حاصل کی۔
راولپنڈی کرکٹ اسٹیڈیم، راولپنڈی
امپائر: احسن رضا (پاکستان) اور ایلکس وارف (انگلستان)
بہترین کھلاڑی: راسی وین ڈیرڈوسن (لاہور قلندرز)
  • اسلام آباد یونائیٹڈ نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔
  • طیب عباس (لاہور قلندرز) نے اپنے ٹی/20 کرئیر کا آغاز کیا۔

میچ 24
7 مارچ 2024 (د/ر)
کراچی کنگز
150/7 (20 آوور)
ب
(گ) اسلام آباد یونائیٹڈ
151/5 (18.4 آوور)
کیرون پولارڈ 39 (28)
ٹیمل ملز 3/34 (4 آوور)
شاداب خان 34 (26)
میر حمزہ 3/41 (4 آوور)
اسلام آباد یونائیٹڈ نے 5 وکٹوں سے کامیابی حاصل کی۔
راولپنڈی کرکٹ اسٹیڈیم، راولپنڈی
امپائر: روچیرا پالیا گروگے (سری لنکا) اور ایلکس وارف (انگلستان)
بہترین کھلاڑی: فہیم اشرف (اسلام آباد یونائیٹڈ)
  • اسلام آباد یونائیٹڈ نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔

میچ 25
8 مارچ 2024 (د/ر)
(گ) پشاور زلمی
196/8 (20 آوور)
ب
بابر اعظم 53 (30)
عقیل حسین 4/23 (4 آوور)
سعود شکیل 24 (12)
خرم شہزاد 2/15 (2.5 آوور)
پشاور زلمی نے 76 رنز سے کامیابی حاصل کی۔
راولپنڈی کرکٹ اسٹیڈیم، راولپنڈی
امپائر: آصف یعقوب (پاکستان) اور ایلکس وارف (انگلستان)
بہترین کھلاڑی: فہیم اشرف (اسلام آباد یونائیٹڈ)
  • کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔
  • عقیل حسین (کوئٹہ گلیڈی ایٹرز) نے ہیٹ ٹرک کی۔
  • اس میچ کے نتیجے میں پشاور زلمی نے پلے آف کے لیے کوالیفائی کر لیا۔

میچ 26
9 مارچ 2024 (د/ر)
اسکور کارڈ
لاہور قلندرز
177/5 (20 آوور)
ب
(گ) کراچی کنگز
179/7 (20 آوور)
جیمز ونس 42 (27)
طیب عباس 2/23 (3 آوور)
کراچی کنگز نے 3 وکٹوں سے کامیابی حاصل کی۔
قومی بینک کرکٹ گراؤنڈ، کراچی
امپائر: رچرڈ الینگورتھ (انگلستان) اور راشد ریاض (پاکستان)
بہترین کھلاڑی: عرفان خان (پاکستانی کرکٹر) (کراچی کنگز)
  • کراچی کنگز نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔

میچ 27
10 مارچ 2024
اسکور کارڈ
ملتان سلطانز
228/4 (20 آوور)
ب
(گ) اسلام آباد یونائیٹڈ
232/7 (20 آوور)
عثمان خان 100* (50)
فہیم اشرف 2/32 (3 آوور)
کولن منرو 84 (40)
عباس آفریدی 3/40 (4 آوور)
اسلام آباد یونائیٹڈ نے 3 وکٹوں سے کامیابی حاصل کی۔
راولپنڈی کرکٹ اسٹیڈیم، راولپنڈی
امپائر: محمد آصف (پاکستان) اور روچیرا پالیا گروگے (سری لنکا)
بہترین کھلاڑی: کولن منرو (اسلام آباد یونائیٹڈ)
  • اسلام آباد یونائیٹڈ نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔
  • اس میچ کے نتیجے میں اسلام آباد یونائیٹڈ نے پلے آف کے لیے کوالیفائی کر لیا۔

میچ 28
10 مارچ 2024 (د/ر)
اسکور کارڈ
لاہور قلندرز
166/4 (20 آوور)
ب
سعود شکیل 88* (65)
جہانداد خان 2/30 (4 آوور)
کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے 6 وکٹوں سے کامیابی حاصل کی۔
قومی بینک کرکٹ گراؤنڈ، کراچی
امپائر: کرس گیفانی (نیوزی لینڈ) اور راشد ریاض (پاکستان)
بہترین کھلاڑی: سعود شکیل (کوئٹہ گلیڈی ایٹرز)
  • لاہور قلندرز نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کا فیصلہ کیا۔
  • اس میچ کے نتیجے میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے پلے آف کے لیے کوالیفائی کر لیا اور کراچی کنگز ٹورنامنٹ سے باہر ہو گئی۔

میچ 29
11 مارچ 2024 (د/ر)
اسکور کارڈ
پشاور زلمی
147/6 (20 آوور)
ب
(گ) کراچی کنگز
145/5 (20 آوور)
بابر اعظم 51 (46)
عرفات منھاس 1/11 (4 آوور)
ٹم سیفرٹ 41 (30)
نوین الحق 2/22 (4 آوور)
پشاور زلمی نے 2 رنز سے کامیابی حاصل کی۔
قومی بینک کرکٹ گراؤنڈ، کراچی
امپائر: فیصل آفریدی (پاکستان) اور ایلکس وارف (انگلستان)
بہترین کھلاڑی: بابر اعظم (پشاور زلمی)
  • پشاور زلمی نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کا فیصلہ کیا۔

میچ 30
12 مارچ 2024 (د/ر)
اسکور کارڈ
ملتان سلطانز
185/4 (20 آوور)
ب
محمد رضوان 69 (47)
محمد عامر 2/40 (4 آوور)
ملتان سلطانز نے 79 رنز سے کامیابی حاصل کی۔
قومی بینک کرکٹ گراؤنڈ، کراچی
امپائر: رچرڈ الینگورتھ (انگلستان) اور راشد ریاض (پاکستان)
بہترین کھلاڑی: محمد رضوان (ملتان سلطانز)
  • کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔

پلے آف[ترمیم]

کوالیفائرایلمنٹر 2فائنل
14 مارچ — کراچی18 مارچ — کراچی
1ملتان سلطانز147/3 (18.3 اوور)1ملتان سلطانز159/9 (20 اوور)
2پشاور زلمی146/7 (20 اوور)16 مارچ — کراچی3اسلام آباد یونائیٹڈ163/8 (20 اوور)
پشاور زلمی185/5 (20 اوور)
ایلمنٹر 1اسلام آباد یونائیٹڈ189/5 (19 اوور)
15 مارچ — کراچی
3اسلام آباد یونائیٹڈ174/9 (20 اوور)
4کوئٹہ گلیڈی ایٹرز135 (18.4 اوور)

کوالیفائیر[ترمیم]

میچ 31
14 مارچ 2024
21:00 (د/ر)
اس کو کارڈ
پشاور زلمی
146/7 (20 اوور)
ب
ملتان سلطانز
147/3 (18.3 اوور)
بابر اعظم 46 (42)
اسامہ میر 2/16 (4 اوور)
یاسر خان 54 (37)
عامرجمال 1/23 (3 اوور)
ملتان سلطانز نے 7 وکٹوں سے کامیابی حاصل کی۔
قومی بینک کرکٹ گراؤنڈ، کراچی
امپائر: علیم ڈار (پاکستان) اور رچرڈ الینگورتھ (انگلستان)
بہترین کھلاڑی: اسامہ میر (ملتان سلطانز)
  • پشاور زلمی نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کا فیصلہ کیا۔

ایلمنٹری[ترمیم]

ایلمنٹر 1[ترمیم]

میچ 32
15 مارچ 2024
21:00 (د/ر)
اسکور کارڑ
ب
مارٹن گپٹل 56 (47)
محمد عامر 2/20 (4 اوور)
عمیریوسف 50 (37)
عماد وسیم 3/12 (4 اوور)
اسلام آباد یونائیٹڈ نے 39 رنز سے کامیابی حاصل کی۔
قومی بینک کرکٹ گراؤنڈ، کراچی
امپائر: کرس گیفانی (نیوزی لینڈ) اور احسن رضا (پاکستان)
بہترین کھلاڑی: عماد وسیم (اسلام آباد یونائیٹڈ)
  • اسلام آباد یونائیٹڈ نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کا فیصلہ کیا۔

ایلمنٹر 2[ترمیم]

میچ 33
16 مارچ 2024
21:00 (د/ر)
اسکور کارڈ
پشاور زلمی
185/5 (20 اوور)
ب
صائم ایوب 73 (44)
نسیم شاہ 3/30 (4 اوور)
عماد وسیم 59* (40)
صائم ایوب 2/34 (3 اوور)
اسلام آباد یونائیٹڈ نے 5 وکٹوں سے کامیابی حاصل کی۔
قومی بینک کرکٹ گراؤنڈ، کراچی
امپائر: رچرڈ الینگورتھ (انگلستان) اور آصف یعقوب (پاکستان)
بہترین کھلاڑی: عماد وسیم (اسلام آباد یونائیٹڈ)
  • اسلام آباد یونائیٹڈ نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔

فائنل[ترمیم]

میچ 34
18 مارچ 2024
21:00 (ر)
اسکورکارڈ
ملتان سلطانز
159/9 (20 اوور)
ب
عثمان خان 57 (40)
عماد وسیم 5/23 (4 اوور)
مارٹن گپٹل 50 (32)
افتخاراحمد 2/19 (3 اوور)
اسلام آباد یونائیٹڈ 2 وکٹوں سے جیت گیا
نیشل اسٹیڈیم، کراچی
امپائر: کرس گیفانی (نیوزی لینڈ) اور رچرڈ الینگورتھ (انگلستان)
بہترین کھلاڑی: عماد وسیم (اسلام آباد یونائیٹڈ)
  • ملتان سلطانز نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کا فیصلہ کیا
  • فائنل جیت کر اسلام آباد یونائیٹڈ پی ایس ایل کی تاریخ کی کامیاب ترین ٹیم بن گئی۔[47]

شماریات[ترمیم]

زیادہ رنز[ترمیم]

کھلاڑی ٹیم اننگز رنز ہائی اسکور اوسط
بابر اعظم پشاور زلمی 11 569 *111 56.90
عثمان خان ملتان سلطانز 7 430 *106 107.50
محمد رضوان ملتان سلطانز 12 407 82 33.91
راسی وین ڈیرڈوسن لاہور قلندرز 7 364 *104 72.80
صائم ایوب پشاور زلمی 11 345 88 31.36

زیادہ وکٹیں[ترمیم]

کھلاڑی ٹیم اننگز وکٹیں بہترین گیندبازی اوسط
اسامہ میر ملتان سلطانز 11 24 &100000000000000010000006/40 15.66
محمد علی ملتان سلطانز 11 18 &100000000000000040000003/19 18.17
ابرار احمد کوئٹہ گلیڈی ایٹرز 10 16 &100000000000000030000003/18 19.56
عقیل حسین کوئٹہ گلیڈی ایٹرز 10 15 &100000000000000020000004/23 20.53
نسیم شاہ اسلام آباد یونائیٹڈ 10 15 &100000000000000030000003/30 20.53

سیزن کے اختتامی اعزازات[ترمیم]

نام ٹیم اعزاز انعام
شاداب خان اسلام آباد یونائیٹڈ ٹورنامنٹ کا بہترین کھلاڑی 35 لاکھ روپیہ
عثمان خان ملتان سلطانز ٹورنامنٹ کا بہترین بلے باز 35 لاکھ روپیہ
اسامہ میر ملتان سلطانز ٹورنامنٹ کا بہترین گیند باز 35 لاکھ روپیہ
صائم ایوب پشاور زلمی ٹورنامنٹ کا بہترین آل راؤنڈر 35 لاکھ روپیہ
اعظم خان اسلام آباد یونائیٹڈ ٹورنامنٹ کا بہترین وکٹ کیپر 35 لاکھ روپیہ
عرفان خان کراچی کنگز ٹورنامنٹ کا بہترین فیلڈر 35 لاکھ روپیہ
ٹورنامنٹ کا ابھرتا ہوا کھلاڑی 35 لاکھ روپیہ
آصف یعقوب ٹورنامنٹ کا بہترین امپائر 35 لاکھ روپیہ
پشاور زلمی سپرٹ آف کرکٹ 35 لاکھ روپیہ
  • مآخذ: جیو سوپر،[48] کرک ٹریکر[49]

ٹورنامنٹ کی ٹیم[ترمیم]

ٹورنامنٹ کے اختتام پر ٹورنامنٹ کی ٹیم کا اعلان کیا گیا جس میں شاداب خان کپتان اور محمد رضوان 12ویں کھلاڑی ہیں۔[50]

کھلاڑی

تنازعات[ترمیم]

فلسطین کے حامی ریمارکس[ترمیم]

چونکہ کے ایف سی پاکستان کا 17 فروری کو ٹورنامنٹ کے لیے اسنیک پارٹنر کے طور پر اعلان کیا گیا تھا، لوگوں نے غزہ پر 2023 کے اسرائیلی حملے میں نسل کشی کے الزامات کی وجہ سے پی سی بی کو تنقید کا نشانہ بنانا شروع کر دیا اور ہیش ٹیگ #BoycottPSL ایک سوشل میڈیا ٹرینڈ بن گیا۔ اصل کے ایف سی کی بنیادی کمپنی یم! برانڈز کی جاری جنگ کے دوران اسرائیل کے حامی موقف کے ساتھ وابستگی تھی۔[51][52] اس کے بعد تماشائیوں نے یہ شکایت بھی کی کہ انھیں اسٹیڈیم میں فلسطینیوں کے حق میں بینرز اٹھانے سے روک دیا گیا۔[53]

شائقین کی گرفتاریاں[ترمیم]

ایک اور واقعے میں شائقین کو میچز کے دوران عمران خان کی حمایت میں نعرے لگانے پر گرفتار کیا گیا۔[54][55] یہ اس وقت قابل ذکر تھا کیونکہ عمران خان، ایک سابق کرکٹ کھلاڑی، سابق وزیر اعظم اور ایک ممتاز سیاسی رہنما ہیں جو اس وقت جیل میں تھے۔[56] اور پاکستانی ٹیلی ویژن اور میڈیا پر اس کا حوالہ دینا حکومت کی طرف سے ممنوع تھا۔[57]

ڈی آر ایس کی خرابی۔[ترمیم]

ہاک آئی، کرکٹ میں فیصلے کا جائزہ لینے کے نظام (ڈی آر ایس) کے لیے استعمال ہونے والی ٹیکنالوجی نے کوئٹہ گلیڈی ایٹرز اور اسلام آباد یونائیٹڈ کے درمیان میچ کے دوران انسانی غلطی کی۔ گیند سے باخبر رہنے کے غلط اعداد و شمار کے نتیجے میں غلط نتائج برآمد ہوئے، جس سے کھلاڑیوں اور شائقین میں مایوسی پھیل گئی۔[58]

حواشی[ترمیم]

  1. As stated on [https://www.pcb.com.pk/press-release-detail/hbl-psl-9-to-begin-from-17-february-2024-.html the official website
  2. دیکھئے انڈین نمبرنگ سسٹم اور پاکستانی روپیہ۔ پچھلے معاہدے سے موازنہ کرتے ہوئے اور مہنگائی کو مدنظر رکھتے ہوئے، روپیہ 630 کروڑ کے ٹی وی حقوق 8% کم ہیں جبکہ ڈیجیٹل حقوق مالیت روپیہ 187.5 کروڑ[34] 32% زیادہ ہیں;[35] اس وقت امریکی ڈالر1 کا ایکسچینج ریٹ روپیہ 281.22تھا۔ [36]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "پی ایسل ایل کا افتتاحی میچ 17 فروری کو آئی ایل ٹی 20 فائنل سے ٹکرائے گا۔"۔ ESPNcricinfo۔ 12 January 2024۔ 12 جنوری 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 12 جنوری 2024 
  2. "HBL PSL player draft 2024 to take place on 13 December"۔ Pakistan Cricket Board (بزبان انگریزی) 
  3. "Three players relegated from their registered categories ahead of PSL 9 draft"۔ Cricket Pakistan۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 نومبر 2023 
  4. "Hosting the HBL PSL anywhere but Pakistan will be a financial disaster"۔ Pakistan Today۔ 29 November 2023۔ 14 جنوری 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 جنوری 2024 
  5. "Franchise owners oppose new PSL teams, moving to UAE"۔ The News۔ 6 May 2023۔ 14 جنوری 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 جنوری 2024 
  6. "No PSL matches for Peshawar"۔ The News۔ 31 December 2023۔ 14 جنوری 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 جنوری 2024 
  7. "Teams announce player retentions for PSL 9"۔ دی نیوز۔ 8 December 2023۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 دسمبر 2023 
  8. "485 foreign players register for PSL 2024 draft"۔ بزنس ریکارڈر۔ 6 December 2023۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 دسمبر 2023 
  9. ^ ا ب پ Matt Roller (25 January 2024)۔ "Rashid Khan withdraws from PSL as he continues rehab"۔ ESPNcricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 25 جنوری 2024 
  10. Faiz Ahmed (14 February 2024)۔ "Several Foreign Players Pull Out of PSL at Last Minute"۔ ESPNcricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 فروری 2024 
  11. "Setback for Qalandars as Rashid to miss HBL PSL"۔ The News۔ 18 January 2024۔ اخذ شدہ بتاریخ 20 جنوری 2024 
  12. ^ ا ب "Multan Sultans lose two key bowlers ahead of PSL 9"۔ Dunya News۔ 13 February 2024۔ اخذ شدہ بتاریخ 13 فروری 2024 
  13. "Setback for Zalmi as Ngidi likely to miss HBL PSL 9"۔ The News۔ 28 January 2024۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 جنوری 2024 
  14. "Spinner Sufiyan Muqeem undergoes operation on left knee"۔ The Nation (بزبان انگریزی)۔ 2024-01-10۔ اخذ شدہ بتاریخ 17 فروری 2024 
  15. "PSL 9: Rilee Rossouw replaces Sarfaraz Ahmed as Quetta Gladiators' captain"۔ Geo Super۔ 13 February 2024۔ اخذ شدہ بتاریخ 13 فروری 2024 
  16. Saleem Khaliq (13 February 2024)۔ "Quetta Gladiators appoint Rilee Rossouw as captain, Shakeel named vice-captain"۔ Cricket Pakistan۔ اخذ شدہ بتاریخ 13 فروری 2024 
  17. ^ ا ب "PSL 9 schedule confirmed with Lahore set to host opener"۔ Geo Super۔ 12 January 2024۔ 12 جنوری 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 جنوری 2024 
  18. ^ ا ب "Schedule for HBL PSL 9 unveiled"۔ A Sports۔ 12 January 2024۔ 12 جنوری 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 جنوری 2024 
  19. "HBL PSL to start on Feb 17; Lahore gets opener, Karachi to host final"۔ Dawn۔ 13 January 2024۔ 14 جنوری 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 جنوری 2024 
  20. "Proposed schedule for PSL 9 revealed"۔ Cricket Pakistan۔ 5 January 2024۔ 10 جنوری 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 جنوری 2024 
  21. "Gaddafi stadium looks its best for PSL final"۔ Geo News۔ 3 March 2017۔ 13 جنوری 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 13 جنوری 2024 
  22. "Lahore Qalandars demand large-capacity stadium in Lahore"۔ Cricket Pakistan۔ 9 March 2022۔ 13 جنوری 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 13 جنوری 2024 
  23. "Multan Cricket Stadium"۔ ESPNcricinfo۔ 21 اکتوبر 2023 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 13 جنوری 2024 
  24. Associated Press of Pakistan (28 August 2023)۔ "Cricket fans seek increase in seating capacity at Multan Stadium"۔ The Nation۔ 13 اکتوبر 2023 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 13 جنوری 2024 
  25. "PSL 2019: Impressive closing ceremony"۔ The News۔ 17 March 2019۔ 27 مارچ 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 19 مارچ 2019 
  26. Umar Farooq (26 October 2022)۔ "National Stadium in Karachi to be renamed National Bank Cricket Arena"۔ ESPNcricinfo۔ 08 جنوری 2023 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 13 جنوری 2024 
  27. "Rawalpindi Cricket Stadium"۔ ESPNcricinfo۔ 13 جنوری 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 13 جنوری 2024 
  28. "Pindi Stadium capacity shrinks"۔ The News۔ 24 February 2020۔ 13 جنوری 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 13 جنوری 2024 
  29. "PSL 9: Match officials announced ahead of new season"۔ Geo Super۔ 12 February 2024۔ اخذ شدہ بتاریخ 12 فروری 2024 
  30. "Pakistan Super League season nine's logo revealed"۔ Geo Super۔ 8 December 2023۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 جنوری 2024 
  31. "HBL retains PSL title sponsorship till 2025"۔ Dawn۔ 19 November 2021۔ 30 دسمبر 2021 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 30 دسمبر 2021 
  32. Muhammad Yousaf Anjum (13 February 2024)۔ "PCB unveils PSL 9 trophy in Lahore"۔ Cricket Pakistan۔ اخذ شدہ بتاریخ 13 فروری 2024 
  33. Azhar Khan (13 February 2024)۔ "PSL 9 trophy unveiled at Polo Ground"۔ The Nation۔ اخذ شدہ بتاریخ 13 فروری 2024 
  34. "پی سی بی اور والی نے ایچ بی ایل پی ایس ایل 9 اور 10 کی ڈیجیٹل نشریات کے لیے معاہدہ کیا ہے۔"۔ Walee۔ 14 February 2024۔ اخذ شدہ بتاریخ 18 فروری 2024 
  35. Shahnawaz Ali (14 January 2024)۔ "پی ایس ایل کے میڈیا رائٹس کی قدر میں واقعی کوئی اضافہ نہیں دیکھا گیا۔ وجہ یہ ہے"۔ Pakistan Today۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 جنوری 2024 
  36. Ali Gulrez (9 January 2024)۔ "USD to PKR – Dollar Rate in Pakistan – 10 January 2022"۔ INCPak۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 جنوری 2024 
  37. "PSL media rights see a massive increase"۔ Dunya News۔ 10 January 2024۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 جنوری 2024 
  38. "PSL broadcasting rights sold for Rs. 6.3 billion"۔ Cricket Pakistan۔ 10 January 2024۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 جنوری 2024 
  39. "پاکستان سپر لیگ 9 کے میچز کن چینلز پر دیکھے جا سکیں گے؟"۔ Urdu News۔ 14 February 2024۔ اخذ شدہ بتاریخ 18 فروری 2024 
  40. ثوبان افتخار راجہ (14 February 2024)۔ "پی ٹی وی سپورٹس 'پی ایس ایل 9' کیوں نہیں دِکھا رہا؟"۔ Urdu News۔ اخذ شدہ بتاریخ 18 فروری 2024 
  41. "Star-studded commentary panel announced for PSL 9"۔ Cricket Pakistan۔ 12 February 2024۔ اخذ شدہ بتاریخ 18 فروری 2024 
  42. "Zalmi vs Sultans: PSL 9 turns pink for breast cancer awareness day"۔ Cricket Pakistan۔ 5 March 2024۔ اخذ شدہ بتاریخ 07 مارچ 2024 
  43. "PSL 9 observes Golden Ribbon Day for childhood cancer awareness"۔ A Sports۔ 12 March 2024۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 مارچ 2024 
  44. "پاکستان سپر لیگ کا آفیشل ترانہ اگلے ہفتے شروع ہونے والے ٹورنامنٹ سے قبل جاری کر دیا گیا۔"۔ عرب نیوز۔ 12 فروری 2023۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 جنوری 2024 
  45. "Usman Khan ton powers Multan Sultans into playoffs"۔ Cricbuzz (بزبان انگریزی)۔ 2024-03-03۔ اخذ شدہ بتاریخ 03 مارچ 2024 
  46. "Lahore Qalandars knocked out of PSL 9 Playoffs race"۔ A Sports (بزبان انگریزی)۔ 2024-03-06۔ اخذ شدہ بتاریخ 06 مارچ 2024 
  47. "اسلام آباد نے فائنل میں ملتان کو سنسنی خیز مقابلے کے بعد شکست دے کر پی ایس ایل جیت لیا۔"۔ بی بی سی اسپورٹ (بزبان انگریزی)۔ اخذ شدہ بتاریخ 18 مارچ 2024 
  48. "پی ایس ایل 8: احسان اللہ پلیئر آف دی ٹورنامنٹ قرار، رضوان نے دو ایوارڈ اپنے نام کر لیے"۔ جیو سوپر۔ 19 مارچ 2023۔ اخذ شدہ بتاریخ 21 مارچ 2023 
  49. اناسوارا وی راجن (2023-03-19)۔ "پی ایس ایل ونر انعامی رقم 2023: پی ایس ایل 2023 ایوارڈز اور نقد انعامات، ایوارڈ جیتنے والوں کی مکمل فہرست، ٹاپ ریکارڈز - تفصیلات دیکھیں"۔ کرک ٹریکر (بزبان انگریزی)۔ اخذ شدہ بتاریخ 22 مارچ 2023 
  50. "PSL 9: Team of the tournament unveiled"۔ ARY News۔ 21 March 2024۔ اخذ شدہ بتاریخ 21 مارچ 2024 
  51. Ali Gulrez (17 February 2024)۔ "کے ایف سی کے ساتھ شراکت داری پر سوشل میڈیا پر پی ایس ایل 9 کے ٹرینڈز کا بائیکاٹ کریں۔"۔ INCPak۔ اخذ شدہ بتاریخ 24 فروری 2024 
  52. ذیشان مہتاب (17 فروری 2024)۔ "پی ایس ایل کا کے ایف سی کیساتھ شراکت داری کا اعلان، 'بائیکاٹ پی ایس ایل' پاکستان میں ٹاپ ٹرینڈ بن گیا"۔ اردو پوائنٹ۔ اخذ شدہ بتاریخ 24 فروری 2024 
  53. میر شبار علی (21 فروری 2024)۔ "پی ایس ایل گیمز میں فلسطین کے حق میں بینرز لگانے پر پابندی"۔ ڈان۔ اخذ شدہ بتاریخ 24 فروری 2024 
  54. شایان عبید سکندر (17 فروری 2024)۔ "پنجاب پولیس نے مبینہ طور پر پی ایس ایل کے شائقین کو اسٹیڈیم میں سیاسی نعرے لگانے پر گرفتار کر لیا۔"۔ پرو پاکستانی۔ اخذ شدہ بتاریخ 7 مارچ 2024 
  55. منوج گپتا (18 فروری 2024)۔ "پاکستان انتخابات دھاندلی کے بارے میں پی ایس ایل کے دوران قیدی نمبر 804 کے نعرے"۔ نیوز 18۔ اخذ شدہ بتاریخ 7 مارچ 2024 
  56. "پی ایس ایل 9 کے میچ میں ملتان سٹیڈیم میں ایک بار پھر عمران خان کا نام گونجنے لگا"۔ دی نیشن۔ 23 فروری 2024۔ اخذ شدہ بتاریخ 24 فروری 2024 
  57. وینگاس (26 فروری 2024)۔ "پاکستان میں میڈیا اور سوشل میڈیا پلیٹ فارمز کو بڑھتی ہوئی پابندیوں کا سامنا ہے۔"۔ دی وائر ڈاٹ۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 فروری 2024 
  58. "ہاک آئی نے 'انسانی غلطی' پر معافی مانگ لی جس کی وجہ سے پی ایس ایل میں غلط فیصلہ ہوا"۔ Wisden۔ 23 فروری 2024۔ اخذ شدہ بتاریخ 24 فروری 2024 

بیرونی روابط[ترمیم]