کرشن

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
کرشن

‘‘کرشن‘‘ : دیوناگری-कृष्ण :

ہندو مت میں کرشنا (Krishna) یا کرشن (Kṛṣṇa) وشنو کے آٹھویں اوتار گزرے ہیں۔ سنسکرت میں کرشن کے لفظی معنی سیاہ کے ہیں۔ گووند، گوپال، کرشن کنہیا، ہری اور جگن ناتھ ان کے مختلف القاب اور صفاتی نام ہیں۔ کرشن کو بھگتی کا معلم اعظم گردانا جاتا ہے۔ بھگوت گیتا کرشن کی تعلیمات کا خلاصہ ہے۔

پیدائش[ترمیم]

کرشن 3228 ق م میں پیدا ہوئے اور ان کی وفات 3102 ق م مِیں ہوئی۔ ان کے والد کا نام واسو دیو اور والدہ کا نام دیوکی تھا۔ ان کی پیدائش متھرا میں ہوئی۔ متھرا یادووں کی دارالحکومت تھی، یادو پر کرشن کے والدین کی حکومت تھی۔ کرشن کی پیدائش کے وقت کرشن کے ماموں کنس نے ان کے والدین کو قید کر رکھا تھا اور خود تخت سنبھال رکھا تھا۔ کسی نے کنس کو بتایا تھا کہ دیوکی کا آٹھواں بیٹا کنس ان کو قتل کر دے گا۔ اس انجام سے بچنے کے لیے کنس اپنی بہن کے ہر بیٹے کو پیدا ہوتے ہی مار دیتا تھا۔ کرشن جی پیدا ہوئے تو انہیں خفیہ طور پر قید سے باہر یشودا اور نندا کے پاس بھجوا دیا گیا، جنہوں نے ان کی پرورش کی۔ کنس کو جب اس بات کی خبر ہوئی توکہا جاتا ہے کہ اس نے ایک آدم خور بلا پٹان کو بھجوائی تاکہ وہ کرشن کو اپنا دودھ پلا کر مار دے۔ مگر اس نے جب انہیں اپنا زہریلا دودھ پلا کر مارنے کی کوشش کی تو ننہے کرشن نے الٹا اس کے دودھ میں سے قوت حیات چوس لی۔

کرشن کو ختم کرنے کی کوششیں اور ان کوششوں کی ناکامی[ترمیم]

کرشن کا رضاعی باپ نندا گوالوں کے قبیلے کا سربراہ تھا اور برندا بن میں رہتا تھا۔ چنانچہ کرشن کا بچپن اور جوانی گایوں کے چرواہے کے طور پر گزری۔جب کرشن نے آدم خور بلا پٹان کو ہلاک کیا، جو انہیں قتل کرنے کے لیے بھیجی گئی تھی، تو ہندو عقائد کے مطابق کالیا نام کے ایک سانپ کو دریائے جمنا کے پانیوں میں زہر ملانے بھیجا گیا تھا تاکہ وہاں کی گائیں مر جائیں۔ کرشن نے اس سانپ کو سدھا لیا۔ ہندو پینٹنگز میں اکثر کرشن کو کالیا کے ساتھ رقص کرتے دکھایا جاتا ہے۔ مزید یہ بھی عقیدہ ہے کہ کرشن نے دیوتاؤں کے بادشاہ اندر کو بھی خوب سبق سکھایا۔ بھگوت پران کے مطابق کرشن نے لوگوں کو بتایا کہ بارش برسانے والا اندر نہیں، اس لیے وہ اس کی پوجا نہ کیا کریں بلکہ اس پہاڑ کی پوجا کریں جہاں سے بارش برستی ہے۔ اس پر اندر کرشن کا دشمن ہو گیا اور اس نے ان سے بدلہ لینے کی ٹھانی، مگر اسے شکست ہوئی۔

گوپیاں[ترمیم]

اسی زمانے میں کرشن کی دوستی گوپیوں سے ہوگئی۔ یہ گوپیاں چرواہوں کی بیویاں اور بیٹیاں تھیں۔ رادھا رانی ان میں سب سے مشہور گوپی تھی۔ کرشن جی گوپیوں کو ان کے گھروں سے بلانے کے لیے بانسری بجاتے تھے۔ ان گوپیوں کی کرشن سے محبت کوہندو عقیدے کے مطابق خدا سے محبت کی علامت سمجھا جاتا ہے۔ کرشن اور گوپیوں کی عشق و محبت کی داستانوں کو ہندو مت میں بہت اہمیت حاصل ہے، یہاں تک کہ گوپیوں کی پوجا بھی کی جاتی ہے۔

سیاسی اتھل پتھل[ترمیم]

کرشن جب سن بلوغ کو پہنچے تو انہوں نے اپنے ماموں کا قتل کیا اور اپنے نانا اُگراسین کو تخت پر بٹھا دیا۔ یہیں ان کی دوستی ارجن اور پانڈووں سےہوئی جو کورووں کی سلطنت کے سردار اور کرشن جی کے رشتے کے بھائی تھے۔ کرشن نے ودربھ کی راجکماری رکمنی سے شادی کی۔ یہ شادی رکمنی کو اس کی مرضی سے اغوا کرکے کی گئی کیونکہ وہ شیشو پل سے بیاہ نہیں کرنا چاہتی تھی۔ بعد میں کرشن نے 16100 کنواریوں سے بھی شادی کی، جن کو نارا کسور راکھشس نے اغوا کر رکھا تھا۔ جب کرشن نے اس راکھشس کو قتل کر کے اس کی قید میں موجود ان خواتین کو آزاد کروایا تو ان سے کوئی بھی شادی کرنے کے لیے تیار نہ تھا۔ کرشن جی نے ان سے شادی کرکے سماج میں ان کی حیثیت کو بحال کروایا۔

ہَستِنا پور کے تخت کے لیے کورووں اور پانڈووں میں جنگ ہوئی۔ یہ جنگ مہا بھارت کے نام سے جانی جاتی ہے۔ کورَواور پانڈَو آپس میں رشتہ دار تھے۔ کرشن جی نے دونوں فریقوں کو پیشکش کی کہ اس جنگ میں وہ چاہیں تو کرشن جی کی فوج نارائنی سینا اور کرشن جی میں سے کسی ایک کو چن لیں۔ مگر اس جنگ میں کرشن جی خود کسی پر ہتھیار نہیں اٹھائیں گے۔ پانڈووں کے ایک سردار ارجن نے کرشن کو چن لیا، جبکہ کورووں نے کرشن کی فوج کو چنا۔ اس جنگ میں کرشن نے ارجن کے رتھ بان کے فرائض انجام دیے۔

بھگوت گیتا[ترمیم]

ہندو دھرم کی مقدس اور روحانی کتاب بھگوت گیتا یا گیتا ہے۔ اس کتاب میں 700 اشلوک ہیں۔ اس کتاب میں کرشن اور ارجن کے درمیان ہوئی گفتگو ہے۔ اس کتاب کے معلم کرشن ہیں۔

1966 ء میں قائم ہونے والی سوامی پربھوپد کی روحانی جماعت انٹرنیشنل سوسائٹی فار کرشن کونشیئس کے پیروکاروں کے نزدیک کرشن اور انکی تعلیماتِ حب کو مرکزی اہمیت حاصل ہے۔ کرشن کا یوم ولادت جنم اشٹمی بڑے عقیدت سے ہر سال بھادوں کے مہینے میں منایا جاتا ہے۔

مہابھارت کی محاذ جنگ کُرُکْ شیتْر پر پہنچنے پر ارجن نے جب دیکھا کہ مخالف فوج میں اس کے گرو اور بزرگ موجود ہیں، تو وہ جنگ کے متعلق مخمصے کا شکار ہو گیا۔ اس موقع پر کرشن نے اسے ایک شاندار وعظ دیا۔ یہی بھگوت گیتا یعنی خدا کا گیت کہلاتا ہے اور ہندوؤں کی مقدس کتاب مانا جاتا ہے۔ یہ کتاب خدا کی محبت اور اس کی موجودگی میں رہنےکا نہ صرف درس دیتی ہے ۔ کرشن کی کامیاب جنگی حکمت عملیوں کے باعث کورو یہ جنگ جیت گئے۔

انتقال[ترمیم]

اپنی زندگی کے آخری دنوں میں کرشن مراقبے کے لیے جنگل میں چلے گئے۔ ایک شکاری کا تیر ایک دن غلطی سے انہیں جا لگا اور کرشن کا انتقال ہو گیا۔ ارجن نے ان کی ارتھی جلا کر ان کی آخری رسومات ادا کیں۔ہندو عقیدے کے مطابق کرشن کی وفات پر دواپار یگ کا اختتام ہو گیا اور کل یگ شروع ہو گیا۔[1]

مزید دیکھیے[ترمیم]

بیرونی روابط[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]