شیو

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
شیو
Shiva cropped.jpg
ملحقہ براہمن (شیویتتریمورتی، دیو
مسکن کارتیک
منتر اوم نماہا شیوایا
مہامرتیون جیا منتر
شیوا تانڈاؤ ستوترم
ہتھیار ترشول، پشو پتستر
علامات شیولنگ
سواری نندی
تہوار مہا شواراتری
ذاتی معلومات
شریک حیات ستی، پاروتی
اولاد گنیش
کارتیک

شیو (تلفظ: /ˈʃivə/; سنسکرت: شیوا) ہندو مت کی تری مورتی کا آخری جزو ہے اور بھگوان کی جبروتی اور قہاری صفات سے منسوب ہے اور یوم آخرت کا مالک ہے۔ مگر شیو مت کے پیروکار صرف شیو کو حقیقت ارفع کی صورت گردانتے ہیں جس نے براہما کو تخلیق کیا۔ اسے گناہوں سے پاکیزگی بخشنے والا اور معصیت سے نجات دینے والا تصور کیا جاتا ہے۔ ’’شیو پُران‘‘ میں شیو کے 108 نام تحریر ہیں۔ جنوبی ہندوستان میں شیو کے ماننے والے زیادہ تعداد میں پائے جاتے ہیں۔ شیو لنگ، شیش ناگ، تیسری آنکھ اور رودرکش مالا شیو سے منسوب ہیں۔

تری مورتی میں یہ تباہی، بربادی، جنگ اور طوفان کا دیوتا تھا۔ اس کی پیشانی پر تیسری آنکھ ہوتی ہے جسے ”ترلوچن“ کہا جاتا ہے۔ اس سے غیظ و غضب کے شعلے نکلتے ہیں کہتے ہیں کہ عشق کا دیوتا کام دیو اس کے غیظ و غضب کا شکار ہوکر ایک مرتبہ جل گیا تھا اور پھر بڑی ہی مشکلات سے عالمِ وجود میں آسکا۔ شیو کی علامت شیولنگ ہے جس کی پوجا کی جاتی ہے۔ شیو کی بیوی اوما ہے جو درگا، کالی اور ستی کہلاتی ہے۔ شیو کے نام پر ہندومت میں کئی فرقے وجود میں آئے پسوتپار، شیو سدھانت، لنگاتی اور نتارا — تیسرا جنوبی ہند میں اور چوتھا بنگال میں پایا جاتا ہے۔ شیو کی اولاد بھی بتائی جاتی ہے۔ ایک بیٹے کا نام کارتیک جو دیوتاؤں کے لشکر کا سپہ سالار ہے اور دوسرا گنیش جو ہاتھی اور انسان کا مرکب ہے۔[1]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. پروفیسر میاں منظور احمد، تقابلِ ادیان و مذاہب، صفحہ 23، محمد سعید اقبال علمی بک ہاؤس چوک اردو بازار لاہور۔ ایڈیشن 2004ء

بیرونی روابط[ترمیم]