زمخشری

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
زمخشری
معلومات شخصیت
پیدائش 18 مارچ 1075[1][2][3][4][5]  ویکی ڈیٹا پر تاریخ پیدائش (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
زمخشر  ویکی ڈیٹا پر مقام پیدائش (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 12 جون 1144 (69 سال)  ویکی ڈیٹا پر تاریخ وفات (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
کہنہ گرگانج  ویکی ڈیٹا پر مقام وفات (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مدفن کہنہ گرگانج  ویکی ڈیٹا پر مقام دفن (P119) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Black flag.svg دولت عباسیہ  ویکی ڈیٹا پر شہریت (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مذہب اسلام
فرقہ اہل سنت
فقہی مسلک حنفی
عملی زندگی
پیشہ الٰہیات دان، فلسفی، مصنف، ماہرِ علم اللسان[6]، مفسر قرآن، ادیب، ماہرِ لسانیات  ویکی ڈیٹا پر پیشہ (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان عربی[7]  ویکی ڈیٹا پر زبانیں (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شعبۂ عمل تفسیر قرآن  ویکی ڈیٹا پر شعبۂ عمل (P101) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
کارہائے نمایاں تفسیر کشاف  ویکی ڈیٹا پر کارہائے نمایاں (P800) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
P islam.svg باب اسلام

علامہ ابوالقاسم محمود بن عمر بن محمد خوارَزمی زَمَخْشَری معتزلی ممتاز عالم، مفسر جو تفسیر کشاف کے مولف ہیں

ولادت[ترمیم]

علامہ زمخشری کی ولادت بروز بدھ 27 رجب المرجب 467ھ مطابق 18 مارچ 1075ء کو زمخشر میں ہوئی۔

علمی حیثیت[ترمیم]

چونکہ مدت تک آپ نے مکۂ معظمہ کی مجادرت کی تھی اس لیے آپ جار اللہ اور نیز فخر خوارزم کے لقب سے ملقب ہوئے،اپنے وقت کے امام بلا مدافع،علامہ،نحوی،لغوی،فقیہ جید،محدث متقن،مفسر کامل،فاضل مناظر،ادیب،متکلم،بیانی،شاعر،ذکی،تیز طبع،حنفی الفروع، معتزلی الاصول تھے۔ علم ادب ابی الحسن علی بن مظفر نیشا پوری اور ابی نعیم اصفہانی سے حاصل کیا اور آپ سے زین بقالی محمد ابی القاسم وغیرہ لوگوں نے اخذ کیا اور آپ کو اصحاب پیدا ہوئے۔کئی دفعہ بغداد میں آئے۔چونکہ بہ ایام طالب علمی جب آپ بخارا کو جا رہے تھے تو راستہ میں آپ سواری سے گر پڑے اور ٹانگ کو سخت ضرب آئی اور ہر چند علاج کیا کچھ فائدہ نہ ہوا اس لیے آپ نے ناچار ہو کر ٹانگ کو کٹواڈالا اور بجائے اس کے لکڑی کا پاؤں بنوایا،جب چلتے پھر تے تو اس پر کپڑاڈال دیتے جس سے دیکھنے والا گمان کرتا کہ آپ لنگڑے ہیں۔

تصانیف[ترمیم]

آپ نے تفسیر،حدیث لغت وغیرہ میں نہایت جید تصانیف کیں چنانچہ

  • تفسیر کشاف،
  • فائق اللغہ فی تفسیر الحدیث
  • اساس البلاعہ فی اللغہ،
  • ربیع الابرار،
  • متشابہ اسامی الرواۃ،
  • نصائح الکبار،
  • نصائح الصغار،
  • الرائض فی علم الفرائض،
  • المفصل فی النحو،
  • انموذج،
  • مفرو،
  • شرح ابیات سیوبہ،
  • شقائق النعمان،
  • مقامات زمخشری،
  • مستقصی فی الامثال،
  • اطواق الذہب،
  • شرح مشکلات المفصل،
  • الکلم التواضع القسطاس فی العروض،
  • الاحاجی النحویہ،
  • المنہاج فی الاصول،
  • رسالۃ ناصحیہ،
  • مقدمۃ الادب،
  • رؤس المسائل فی الفقہ،
  • نصوص الاخبار،
  • صمیم العربیہ،
  • دیوان التمثیل،
  • امال،
  • معجم الحدودو المیاہ والا ماکن و الجبال،
  • ضالۃ الناشد،

اختلاف[ترمیم]

ملا علی قاری نے لکھا ہے کہ بسبب معتزلی الاعتقاد ہونے کے آپ نے تفسیر میں بعض مقام پر تاویل میں سوء تعبیری و تغیر کو کام فرمایا ہے جو اکثر لوگوں پر خفیہ ہے اس لیے ہمارے بعض فقہا نے آپ کی تفسیر کا مطالعہ کرنا حرام لکھاہے۔ [8]

وفات[ترمیم]

علامہ زمخشری کی وفات شبِ دوشنبہ 8 ذوالحجہ 538ھ مطابق 12 جون 1144ء کو ہوئی۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. جی این ڈی- آئی ڈی: https://d-nb.info/gnd/11930693X — اخذ شدہ بتاریخ: 12 اگست 2015 — اجازت نامہ: CC0
  2. http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb131780364 — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  3. او ایل آئی ڈی: https://openlibrary.org/works/OL5407035A — بنام: Mahmud ibn 'Umar Al-Zamakhshari — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017 — مصنف: آرون سوارٹز — اجازت نامہ: GNU Affero General Public License, version 3.0
  4. ایس این اے سی آرک آئی ڈی: https://snaccooperative.org/ark:/99166/w6pk6fjq — بنام: Al-Zamakhshari — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  5. ایف اے ایس ٹی - آئی ڈی: http://id.worldcat.org/fast/72021 — بنام: Maḥmūd ibn ʻUmar Zamakhsharī — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  6. اجازت نامہ: CC0
  7. http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb131780364 — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  8. حدائق الحنفیہ