عامر عثمانی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

عامر عثمانی بھارت سے تعلق رکھنے والے اردو کے ممتاز شاعر تھے۔

عامر عثمانی[ترمیم]

آپ کا تعلق دیوبندی مکتب فکر سے تھا۔ دارالعلوم دیوبند سے ہی آپ نے تعلیم حاصل کی تھی۔ وہاں سے کتب خانے سے خوب استفادہ کیا۔

حالانکہ تعلق دیوبند سے تھا، مگر یہ تاحیات جماعت اسلامی ہند کے حامی رہے۔ ان کا تبلیغی جماعت اور بریلوی مکتب فکر سے شدید اختلاف رہا۔ وہ تجلی کے عنوان سے ایک رسالہ بھی نکالتے تھے جس میں ان کے اور ان کے ہم خیال لوگوں کے مضامین شائع ہوتے تھے۔

تصانیف[ترمیم]

  • یہ قدم قدم بلائیں (شاعری)
  • مسجد سے مے خانے تک
  • تین طلاق مکتبہ دیوبند یوپی
  • تجلیات صحابہ مکتبہ الحجاز پاکستان
  • تجلی(رسالہ کے مدیر رہے)

وفات[ترمیم]

آپ کی وفات 1972میں ایک مشاعرے کے دوران نظم 'جنہیں سحر نگل گئی وہ خواب ڈھونڈتا ہوں میں" سناتے ہوئے ہوئی۔

طنز و مزاح نگاری[ترمیم]

طنز ومزاح میں آپ نے نمایاں مقام حاصل کیاتھا اس کی دلیل مسجد سے مئے خانے تک نامی کتاب سے دی جاسکتی ہے ۔

شاعری[ترمیم]

آپ کی شاعری میں اسلام پسندی اور حقانیت و رومانیت ایک ساتھ چلتے ہوئے نظر آتے ہیں۔ آپ کی نظمیں خالص اسلامی نظمیں ہیں۔[1][2]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. مولانا عامر عثمانی ~ zaheer danish umary
  2. دس عالم شعرا از سید ظؔہیر صفحہ 90