مینا شاہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
مینا شاہ
(انگریزی میں: Meena Shah ویکی ڈیٹا پر مقامی زبان میں نام (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شخصی معلومات
پیدائش 31 جنوری 1937[1]  ویکی ڈیٹا پر تاریخ پیدائش (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
بلرام پور[1]  ویکی ڈیٹا پر مقام پیدائش (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تاریخ وفات 10 مارچ 2015 (78 سال)  ویکی ڈیٹا پر تاریخ وفات (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of India.svg بھارت[1]
British Raj Red Ensign.svg برطانوی ہند  ویکی ڈیٹا پر شہریت (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ بیڈمنٹن کھلاڑی  ویکی ڈیٹا پر پیشہ (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
کھیل بیڈمنٹن  ویکی ڈیٹا پر کھیل (P641) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
کھیل کا ملک Flag of India.svg بھارت
British Raj Red Ensign.svg برطانوی ہند  ویکی ڈیٹا پر ملک برائے کھیل (P1532) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اعزازات
IND Padma Shri BAR.png پدم شری اعزاز برائے کھیل (1977)[1]
ارجن ایوارڈ  (1962)[1]  ویکی ڈیٹا پر وصول کردہ اعزازات (P166) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ویب سائٹ {{#اگرخطا:|}}

مینا شاہ بھارت کی ایک قومی بیڈمنٹن چیمپئن تھی۔ مینا شاہ کی پیدائش اترپردیش کے شہر بلرام پور میں31جنوری 1937ء کوہوئی۔ آپ کے والد کانام اقبال احمد شاہ اور والدہ کا نام ششی لیکھا شاہ تھا۔ آپ کے خاندان کا تعلق بہرائچ سے تھا۔ آپ کے والد سرکاری ملازم تھے۔[2][3]

حالات[ترمیم]

مینا شاہ اپنے والد کی اکلوتی اولاد تھی۔ بچپن میں ہی وہ والد کے ساتھ لکھنؤ آ گئی۔ یہاں پر انہوں نے كے سرباگ کے رفاہ عام میں بیڈمنٹن کی تربیت شروع کی۔ جب مینا شاہ بیڈمنٹن کورٹ پر پریکٹس کرتی تھی تب اس گیم میں لڑکیاں پلیئر کی تعداد گنی چنی تھی، حال یہ تھا کہ انہیں بوائز کے ساتھ پریکٹس کرنی پڑی۔ ان کو دیکھ کر ہی بعد میں بہت سے دوسرے لڑکیوں نے اس فیلڈ میں قدم رکھا۔ مینا شاہ نے بیڈمنٹن مپٹيشن کھیلنا شروع کیا تو ایک کے بعد ایک کئی میڈل جھٹکے۔ دھیرے دھیرے ان کا نام صرف لکھنؤ یا انڈیا میں نہیں بلکہ دنیا میں مشہور ہو گیا۔ خاص بات یہ ہے کہ مینا شاہ ہی اکلوتی شٹلر نہیں جنہوں نے نیشنل چیمپئن شپ میں سات بار مسلسل ٹائٹل لفٹ کر لوگوں کو دانتوں تلے انگلیاں دبانے پر مجبور کر دیا۔ تمام شٹلر ان کے کھیل کے قائل تھے۔ 1959–1965[4] تک وہ مسلسل قومی چمپئن رہی۔ اس کے علاوہ انہوں نے ويمے س ڈبلز اور مكسڈ ڈبلز میں بھی خطابی جیت درج کی ہے۔[5]

اعزاز[ترمیم]

مینا شاہ 1959-1965تک وہ مسلسل قومی چمپئن رہی۔ اس کے علاوہ انہوں نے ويمے س ڈبلز اور مكسڈ ڈبلز میں بھی خطابی جیت درج کی ہے۔ ارجن ایوارڈ اور 1977ءمیں پدم شری سے نوازی گئی۔

وفات[ترمیم]

مینا شاہ گزشتہ كھ 0 سال سے زیادہ آن بیڈ پر تھی۔ ان کی وجہ سے تھا کہ ان کی بیک بون سے منسلک رگ میں دقت آنے سے ان کے پاؤں نے کام کرنا بند کر دیا۔ جس کی وجہ سے وہ گزشتہ کئی سالوں سے بیڈ پر تھی۔ ان کی بیماری کے چلتے کئی بار مالی دشواری بھی سامنے آئی، اس کے چلتے کئی بار بیڈمنٹن ایسوسی ایشن آف انڈیا نے ان کے علاج کے لیے کئی بار مدد بھی کی۔ مینا شاہ کی وفات 10 مارچ 2015 میں لکھنؤ کے سہارا ہسپتال میں ہوئی۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب پ ت http://www.sportsbharti.com/badminton/meena-shah/
  2. "Former badminton queen suffers on sickbed – Indian Express"۔ Archive.indianexpress.com۔ 2011-11-18۔ اخذ شدہ بتاریخ 2014-03-24۔
  3. Monday, مارچ 24, 2014 (2014-03-01)۔ "BAI's financial assistance to ex-champ Meena Shah"۔ Business Standard۔ اخذ شدہ بتاریخ 2014-03-24۔
  4. Mourners’ merry memories of Meena Shah; Lucknow’s Padma Shri Shuttler Passes Away | Lucknow News - Times of India
  5. नहीं रही पद्मश्री मीना शाह - Lucknow City News,Inext Live