پاکستان میں تعلیم

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
پاکستان میں تعلیم
State emblem of Pakistan.svg
وفاقی وزارت تعلیم
صوبائی تعلیمی وزارتیں
عام تفصیلات
خواندگی (2009)
کل 58%
مرد 69%
خواتین 45%
اندراج
کل 37,462,900[1]
ابتدائی 22,650,000[1]
ثانوی 2,884,400[1]
بعد ثانوی 1,349,000[1]

پاکستان میں تعلیم (Education in Pakistan) کی نگرانی وفاقی حکومت کی وزارت تعلیم اور صوبائی حکومتیں کرتی ہیں۔ وفاقی حکومت زیادہ تر تحقیق اور ترقی نصاب، تصدیق اور سرمایہ کاری میں مدد کرتی ہے۔ آئین پاکستان کی شق 25-A کے مطابق ریاست 5 سے 16 سال کی عمر کے بچوں کو مفت اور لازمی معیاری تعلیم فراہم کی پابند ہے۔ [2]

رسمی تعلیم کے مراحل[ترمیم]

ابتدائی تعلیم[ترمیم]

پاکستانی بچوں میں سے صرف 80 فیصد ابتدائی تعلیم مکمل کرتے ہیں۔ [3] معیار تعلیم کا نظام بنیادی طور پر برطانوی نظام سے اخذ کیا گیا ہے۔

آٹھ مضامین جو عام طور پڑھائے جاتے ہیں وہ اردو، انگریزی، ریاضی، فن، سائنس، معاشرتی علوم،اسلامیات اور کپیوٹر ہیں۔

ثانوی تعلیم[ترمیم]

پاکستان میں ثانوی تعلیم نویں جماعت سے شروع ہوتی ہے اور چار سال جاری رہتی ہے۔ ان چار سالوں میں ہر سال کے اختتام پر طلباء کو ایک قومی امتحانی انتظام کے تحت ایک امتحان پاس کرنے کی ضرورت ہوتی ہے جس کا انتظام علاقائی بورڈ انٹرمیڈیٹ اینڈ سیکنڈری ایجوکیشن کرتا ہے۔ نویں اور دسویں سال کی تکمیل پر طلباء کو سیکنڈری اسکول سرٹیفکیٹ جاری کیا جاتا ہے جبکہ گیارہوں اور بارہوں سال کی تکمیل پر ہائر سیکنڈری اسکول سرٹیفکیٹ جاری کیا جاتا ہے۔

ثلاثی درجہ تعلیم[ترمیم]

جامعہ پنجاب

یونیسکو کے عالمی تعلیم ڈائجسٹ 2009 کے مطابق 6.3 فیصد پاکستانی 2007ء میں (مرد 8.9 فیصد اور خواتیں 3.5 فیصد) جامعات سے فارغ التحصیل تھے۔ [4] پاکستان ان اعداد و شمار کو 2015ء میں 10 فیصد کرنے اور 2020ء تک 15 فیصد کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔ [5]

رباعی درجہ تعلیم[ترمیم]

ماسٹر ڈگری پروگراموں میں زیادہ تر دو سال کی تعلیم کی ضرورت ہوتی ہے۔ اس کے بعد ماسٹرز ان فلاسفی (ایم فل) کیا جا سکتا ہے۔ ایم فل کی تکمیل پر ڈاکٹر آف فلاسفی (پی ایچ ڈی) کی ڈگری کا حصول کیا جا سکتا ہے۔

جامعات کی عالمی درجہ بندی[ترمیم]

جامعہ ہندسیات و طرزیات، لاہور

کوالٹی سٹینڈرڈ ورلڈ یونیورسٹی رینکنگ 2010 کے مطابق دنیا کی چوٹی کی 200 طرزیات جامعات میں دو پاکستانی جامعات بھی شامل ہیں۔

گیارہ دیگر پاکستانی جامعات کے سمیت جامعہ ہندسیات و طرزیات، لاہور، خلائی ٹیکنالوجی کا انسٹی ٹیوٹ، جامعہ قائداعظم، نیشنل یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی، جامعہ کراچی کا شمار یونیورسٹیوں کی عالمی رینکنگ کے مطابق بہتریں 1000 عالمی جامعات میں کیا جاتا ہے۔

شماریات[ترمیم]

شرح خواندگی - پاکستان
نقشہ خواندگی پاکستان
خواندگی بلحاظ صوبہ
خواندگی بلحاظ وفاقی علاقہ
مخصوص اضلاع میں خواندگی بلحاظ وقت

شرح خواندگی[ترمیم]

مردم شماری کا سال[6] مرد[6] عورت[6] کل[6] شہری[7] دیہی[7] "تعلیم یافتہ" کی تعریف[6] عمر
گروہ[7]
1951 19.2%[8] 12.2%[8] 16.4% -- -- کسی بھی زبان میں ایک واضح پرنٹ پڑھ سکتا ہو ہر عمر
1961 26.9%[8] 8.2%[8] 16.3% 34.8% 10.6% کسی بھی زبان میں ایک سادہ خط سمجھ کے ساتھ پڑھنے کے قابل ہو پانچ سال یا زیادہ
1972 30.2% 11.6% 21.7% 41.5% 14.3% سمجھنے کے ساتھ کسی زبان میں پڑھنے اور لکھنے کے قابل ہو دس سال یا زیادہ
1981 35.1% 16.0% 26.2% 47.1% 17.3% جو ایک اخبار پڑھ سکتا ہو اور سادہ خط لکھ سکتا ہو دس سال یا زیادہ
1998 54.8% 32.0% 43.9% 63.08% 33.64% جو ایک اخبار پڑھ سکتا ہو اور سادہ خط لکھ سکتا ہو
کسی بھی زبان میں
دس سال یا زیادہ
2004 66.25% 41.75% 54% 71%[9] 44%[9]
2009[10] 69% 45% 57% 74% 48%

مندرجہ ذیل جدول شرح خواندگی بلحاظ صوبہ ہے۔

صوبہ شرح خواندگی[6]
1972 1981 1998 2009[10]
پنجاب 20.7% 27.4% 46.6% 59%
سندھ 30.2% 31.5% 45.3% 59%
خیبر پختونخوا 15.5% 16.7% 35.4% 50%
بلوچستان 10.1% 10.3% 26.6% 45%

مندرجہ ذیل جدول شرح خواندگی بلحاظ وفاق کے زیر انتظام علاقہ جات ہے۔

علاقہ شرح خواندگی
1981 1998 2007
اسلام آباد 47.8%[11][12] 72.88%[11] 87%[13]
آزاد کشمیر 25.7%[14] 55%[15] 62%(2004)[16]
گلگت بلتستان 3% (خواتین)[17] 37.85%[17] 53%(2006)[17]
قبائلی علاقہ جات 6.38%[11] 17.42%[18][19] 22%[20]

مخصوص اضلاع میں خواندگی بلحاظ وقت

ضلع شرح خواندگی
2007[21] 1998[12][22] 1981[12]
اسلام آباد 87% 72.38% 47.80%
ضلع راولپنڈی 80% 70.45% 46.60%
ضلع جہلم 79% 63.92% 38.90%
ضلع کراچی 77% 65.26% 55%
ضلع لاہور 74% 64.66% 48.40%
ضلع گجرات 71% 62.11% 31.30%
ضلع گوجرانوالہ 69% 53.40% 29.90%
ضلع ایبٹ آباد 67% 55.30% دستیاب نہیں
ضلع کوئٹہ 62% 57.10% 36.70%
ضلع فیصل آباد 62% 51.94% 31.80%
ضلع سیالکوٹ 59% 57% 30.80%

سکول حاضری[ترمیم]

صوبہ اعلی ادنی
پنجاب راولپنڈی (80%) مظفر گڑھ اور راجن پور (40%)
سندھ کراچی (78%) جیکب آباد (34%)
خیبر پختونخوا ایبٹ آباد (67%) دیر بالا (34%)
بلوچستان کوئٹہ (64%) جھل مگسی (20%)

دوسرے ممالک کے ساتھ موازنہ[ترمیم]

شرح خواندگی بالغان[ترمیم]

Adult Literacy Rate EFA 2012.png
ملک شرح خواندگی بالغان مرد عورت
پاکستان 55% 69% 40%
بھارت 63% 75% 51%
بنگلہ دیش 57% 61% 52%
نیپال 60% 73% 48%
بھوٹان 53% 65% 39%

شرح خواندگی نوجوانان[ترمیم]

Youth Literacy Rate EFA 2012.png
ملک شرح خواندگی نوجوانان مرد عورت
پاکستان 71% 79% 61%
بھارت 81% 88% 74%
بنگلہ دیش 77% 75% 78%
نیپال 83% 88% 78%
بھوٹان 74% 80% 68%

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ 1.0 1.1 1.2 1.3 "Ministry of Education, Pakistan". http://www.moe.gov.pk/Pakistan%20Education%20Statistics%2007-08.pdf. 
  2. ^ [1]
  3. ^ Stuteville, Sarah (August 16, 2009). "seattletimes.nwsource.com/html/localnews/2009670134_pakistanschool16.html". The Seattle Times. http://seattletimes.nwsource.com/html/localnews/2009670134_pakistanschool16.html. 
  4. ^ Global Education Digest 2009. UNESCO Institute for Statistics. 2009. http://www.uis.unesco.org/Library/Documents/ged09-en.pdf. 
  5. ^ http://www.dawn.com/wps/wcm/connect/dawn-content-library/dawn/news/pakistan/13+cabinet+approves+education+policy+2009-za-08
  6. ^ خطا در حوالہ: غلط <ref> ٹیگ؛ حوالہ بنام unesdoc.unesco.org کے لیے کوئی متن فراہم نہیں کیا گیا
  7. ^ 7.0 7.1 7.2 http://unesdoc.unesco.org/images/0013/001357/135793eb.pdf
  8. ^ 8.0 8.1 8.2 8.3 http://www.pap.org.pk/files/statisticalprofile.pdf
  9. ^ 9.0 9.1 http://www.eurojournals.com/ejefas_15_13.pdf
  10. ^ 10.0 10.1 http://finance.gov.pk/survey/chapter_10/10_Education.pdf
  11. ^ 11.0 11.1 11.2 http://www.census.gov.pk/Literacy.htm
  12. ^ 12.0 12.1 12.2 http://mpra.ub.uni-muenchen.de/4166/1/MPRA_paper_4166.pdf
  13. ^ خطا در حوالہ: غلط <ref> ٹیگ؛ حوالہ بنام statpak.gov.pk کے لیے کوئی متن فراہم نہیں کیا گیا
  14. ^ http://www.google.co.uk/search?tbs=bks:1&tbo=1&q=AJK+literacy+rate+1981+census&btnG=Search+Books#hl=en&safe=off&tbo=1&tbs=bks%3A1&q=AJK+literacy+rate+1981+census+25.7%25&aq=f&aqi=&aql=&oq=&gs_rfai=&pbx=1&fp=ba99e4b9aa5dc78e
  15. ^ http://books.google.co.uk/books?id=99WTTyxnkDYC&pg=PA12&dq=AJK+literacy+rate+1998+census&hl=en&ei=zgqBTOfWC8P68Aap6Z1T&sa=X&oi=book_result&ct=result&resnum=2&ved=0CDkQ6AEwAQ#v=onepage&q=AJK%20literacy%20rate%201998%20census&f=false
  16. ^ http://pakistantimes.net/2004/09/27/kashmir5.htm
  17. ^ 17.0 17.1 17.2 http://www.dawn.com/wps/wcm/connect/dawn-content-library/dawn/in-paper-magazine/education/education-in-gilgit-and-baltistan-809
  18. ^ http://www.allvoices.com/contributed-news/6095465-government-steps-up-efforts-to-improve-literacy-status-in-fata
  19. ^ http://www.khalidaziz.com/Agenda_for_Fata_Reform.pdf
  20. ^ http://fata.gov.pk/files/MICS.pdf
  21. ^ خطا در حوالہ: غلط <ref> ٹیگ؛ حوالہ بنام statpak.gov.pk.2Fdepts کے لیے کوئی متن فراہم نہیں کیا گیا
  22. ^ http://i16.tinypic.com/5zn9xcw.jpg