اسد قیصر

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
اسد قیصر
Asad Qaiser.jpg 

اسپیکر قومی اسمبلی پاکستان
آغاز منصب
15 اگست 2018
نائب قاسم سوری
Fleche-defaut-droite-gris-32.png سردار ایاز صادق
  Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
رکن قومی اسمبلی پاکستان
آغاز منصب
13 اگست 2018
خیبر پختونخوا کی صوبائی اسمبلی کے چودہویں اسپیکر
مدت منصب
30 مئی 2013 – 13 اگست 2018
Fleche-defaut-droite-gris-32.png کرامت اللہ خان
مشتاق احمد غنی Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
رکن خیبر پختونخوا صوبائی اسمبلی
مدت منصب
29 مئی 2013 – 28 مئی 2018
معلومات شخصیت
پیدائش 15 نومبر 1969 (50 سال)  ویکی ڈیٹا پر تاریخ پیدائش (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ضلع صوابی  ویکی ڈیٹا پر مقام پیدائش (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان  ویکی ڈیٹا پر شہریت (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
جماعت پاکستان تحریک انصاف  ویکی ڈیٹا پر سیاسی جماعت کی رکنیت (P102) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
مادر علمی جامعۂ پشاور  ویکی ڈیٹا پر تعلیم از (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ سیاست دان  ویکی ڈیٹا پر پیشہ (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

اسد قیصر (انگریزی: Asad Qaiser) ایک پاکستانی سیاست دان جو 15 اگست 2018ء سے موجودہ اسپیکر قومی اسمبلی پاکستان اور 13 اگست 2018ء سے قومی اسمبلی پاکستان کے رکن ہیں۔ اس سے قبل وہ 2013ء سے 2018ء تک خیبر پختونخوا کی صوبائی اسمبلی کے رکن رہ چکے ہیں۔ وہ مئی 2013ء سے اگست 2018ء تک خیبر پختونخوا کی صوبائی اسمبلی کے بھی اسپیکر رہے۔

ابتدائی زندگی اور تعلیم

اسد 15 نومبر 1969ء کو ضلع صوابی، پاکستان میں پیدا ہوئے۔[1] انگریزی زبان کے اخبار دی ایکسپریس ٹریبیون کے مطابق وہ 15 نومبر 1968ء کو مرغوز میں پیدا ہوئے۔[2]

انہوں نے ابتدائی تعلیم گورنمنٹ ہائر سیکنڈری اسکول مرغوز سے حاصل کی۔ انہوں نے جامعہ پشاور سے گریجویشن کی۔[1][3] انہوں نے گورنمنٹ پوسٹ گریجویٹ کالج (صوابی)[4] سے بھی گریجویٹ ہوئے اور بیچلر آف آرٹ کی سند پائی۔[2]

1995ء میں گریجویشن کے بعد وہ جماعت اسلامی پاکستان یوتھ وِنگ کے ڈویژنل صدر برائے پاسبان بنے۔[2]

سیاسی زندگی

اسد قیصر نے جماعت اسلامی پاکستان کے پلیٹ فارم سے سیاست کا آغاز کیا۔[5] 1984ء میں وہ کوٹھا کالج صوابی کے ناظم اسلامی جمعیت طلبہ منتخب ہوئے اور دو سال تک ناظم رہے۔[2]

1996ء میں پاکستان تحریک انصاف میں شامل ہوئے۔[5] اسی سال انہیں پی ٹی آئی کے ضلعی صدر کے لیے نامزد کیا گیا[4] 2008ء میں اسد قیصر کو پاکستان تحریک انصاف خیبر پختونخوا کا صدر بنایا گیا[4][5] اور 2013ء تک صدر رہے۔[6] 2013ء میں صوابی سے رکن قومی اسمبلی منتخب ہوئے۔[7] انہوں نے صوابی سے ہی خیبر پختونخوا صوبائی اسمبلی کی نشست بھی جیتی لیکن انہوں نے قومی اسمبلی کی نشست چھوڑ دی۔[8] 30 مئی 2013ء کو اسد قیصر کو خیبر پختونخوا کی صوبائی اسمبلی کا چودہواں اسپیکر منتخب کر لیا گیا۔[6][9]

2018ء کے عام انتخابات میں انہیں صوابی کے حلقہ پی کے-44 (صوابی-2) سے دوبارہ کامیابی حاصل ہوئی۔[10] اسد قیصر نے صوابی کے حلقہ این اے-18 (صوابی-1) سے بھی کامیابی حاصل کی[11] تاہم انہوں نے صوبائی اسمبلی کی نشست چھوڑ دی۔[12]

10 اگست 2018ء کو انہیں پاکستان تحریک انصاف کی طرف سے اسپیکر قومی اسمبلی پاکستان کے لیے نامزد کیا گیا۔[13] 15 اگست 2018ء کو وہ اسپیکر قومی اسمبلی منتخب ہو گئے۔ انہوں نے 176 ووٹ حاصل کیے اور اپنے مد مقابل سید خورشید احمد شاہ کو شکست دی۔[14]

حوالہ جات

  1. ^ ا ب "Asad Qaiser named NA Speaker, Ch Sarwar nominated as Punjab Governor"۔ دنیا نیوز۔ 10 اگست 2018۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 اگست 2018۔
  2. ^ ا ب پ ت "Asad Qaiser – political journey of 20th NA speaker | The Express Tribune"۔ دی ایکسپریس ٹریبیون۔ 15 اگست 2018۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 اگست 2018۔
  3. "PTI nominates Asad Qaiser as NA speaker, Ch Sarwar as Punjab governor"۔ جیو نیوز۔ 10 اگست 2018۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 اگست 2018۔
  4. ^ ا ب پ مقدم خان (11 اگست 2018)۔ "Friends in Swabi back Asad Qaiser for speaker's job"۔ ڈان۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 اگست 2018۔
  5. ^ ا ب پ "PTI nominates Asad Qaiser for NA speaker, Chaudhry Sarwar for Punjab governor"۔ ڈان۔ 10 اگست 2018۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 اگست 2018۔
  6. ^ ا ب "Asad Qaisar PTI nominee for National Assembly speaker | The Express Tribune"۔ دی ایکسپریس ٹریبیون۔ 10 اگست 2018۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 اگست 2018۔
  7. "2013 election result"۔ الیکشن کمیشن پاکستان۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل (پی‌ڈی‌ایف) سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 اگست 2018۔
  8. دی نیوز پیپرز کورسپونڈنٹ (11 جولائی 2018)۔ "Tough contest likely on Swabi's NA-18 seat"۔ ڈان۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 اگست 2018۔
  9. "K-P Assembly: PTI leaders elected speaker, deputy speaker | The Express Tribune"۔ دی ایکسپریس ٹریبیون۔ 30 مئی 2013۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 اگست 2018۔
  10. "PTI's Asad Qaiser wins PK-44 election"۔ ایسوسی ایٹڈ پریس آف پاکستان۔ 26 جولائی 2018۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 اگست 2018۔
  11. "Asad Qaiser Khan of PTI wins NA-18 election"۔ ایسوسی ایٹڈ پریس آف پاکستان۔ 27 جولائی 2018۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 اگست 2018۔
  12. "19 NA, 3 PA seats vacated by winners"۔ دی نیشن۔ 14 اگست 2018۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 اگست 2018۔
  13. "Asad Qaiser NA Speaker, Ch Sarwar nominated as Governor Punjab"۔ دی نیشن (انگریزی زبان میں)۔ 10 اگست 2018۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 اگست 2018۔
  14. "PTI's Asad Qaiser elected NA speaker: unofficial results"۔ ڈان۔ 15 اگست 2018۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 اگست 2018۔