ایلیاہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
ایلیاہ (اِلیاس)
ایلیاہ

معلومات شخصیت
پیدائش صدی 10 ق.م  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
تشبی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
تاریخ وفات صدی 9 ق.م  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ وفات (P570) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
نمایاں شاگرد الیشع[1]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شاگرد (P802) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ نبی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر

ایلیاہ یا اِلیاس (عبرانی: אֱלִיָּהוּ ؛ مطلب ”یہوواہ میرا خدا ہے“) کا ایک عظیم نبی تھا۔[2] اُس نے کئی معجزات کیے، اُس نے بیوہ کے لڑکے کو زندہ کیا۔[3]، قحط کی پیشینگوئی کی اور بعل کے پجاریوں سے مقابلہ کیا۔[4] وہ اخی اب بادشاہ کے ڈر سے حورب کے پہاڑ پر بھاگ گیا۔[5] خدا نے اُسے حکم دیا کہ حزائیل کو ارام کا اور یاہو کو اِسرائیل کا بادشاہ اور الیشع کو نبی ہونے کے لیے مسح کرے۔[6] اس نے الیشع کو نبی ہونے کے لیے بلایا۔[7] اُس نے اخی اب اور ایزبل پر لعنت کی۔[8] اور اخزیاہ کو موت کے بارے میں آگاہ کیا۔[9] وہ بگولے میں آسمان میں اُٹھالیا گیا۔[10] یوحنا بپتسمہ دینے والے کو بھی ایلیاہ کہا گیا ہے۔[11] جب پہاڑ پر مسیح کی صورت بدلی تو ایلیاہ بھی وہاں پر ظاہر ہوا۔ [12]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. باب: 6
  2. 1 سلاطین 17:1
  3. 1 سلاطین 24–17:13
  4. 1 سلاطین باب 18
  5. 1 سلاطین 9–19:1
  6. 1 سلاطین 18–19:9
  7. 1 سلاطین 31–19:19
  8. 1 سلاطین 24–21:17
  9. 2 سلاطین 17–1:1
  10. 2 سلاطین 11–2:1
  11. متی 11:14 / 13–17:10 ؛ لوقا 1:17
  12. متی 4–17:3 ؛ مرقس 5–9:4 ؛ لوقا 33–9:30