ارض اسرائیل

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
مضامین بسلسلہ
یہودیت
Star of David.svg
Lukhot Habrit.svg  Menora.svg

باب:یہودیت

Davids-kingdom with captions specifiying vassal kingdoms-derivative-work.jpg
Early-Historical-Israel-Dan-Beersheba-Judea-Corrected.png

ارضِ اسرائیل سے مراد یہودیوں کے مطابق، وہ زمین ہے جو تورات کی رو سے، خدا نے آل ابراہیم کو سونپ دی ـ تورات میں خدا کا ابراہیم سے وعدہ ہے کہ ابراہیم کے ایمان کے بدلے خدا اس کی آل کو عظیم قوم بنائے گا، اسے یہودی دستاویزات کے مطابق عہدِ ابراہیمی کہا جاتا ہےـ اس عہد میں ارضِ اسرائیل بھی شامل ہے جو کنعان اور تاریخی فلسطین کو ملا کر بنتا ہےـ یاد رہے کہ ارضِ اسرائیل ایک یہودی تصور ہے جس سے تورات میں موجود کئی جگہوں کے نام منسلک ہیں ـ مگر ان قدیم مقامات کی کوئی ٹھوس سرحدیں نہیں بیان کی جاسکتیں اور موجودہ تورات میں درج مقامات کے ناموں کو کو اگر کسی نا کسی طور عہد حاضر کے علاقائی ناموں سے پہچاننے کی تگ و دو کی جاۓ تو اس میں موجودہ اسرائیل ، فلسطین اور اردن کے کچھ حصے شامل بتاۓ جاتے ہیں۔

تورات میں موجود عہدِ ابراہیمی کے مطابق ارض اسرائیل کی سرحدیں ـ سرخ لکیروں کے اندر تورات کی ایک تفسیر واضح ہے اور نیلی لکیروں میں دوسری).

حوالہ جات[ترمیم]