مسیحیت اور یہودیت

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

مسیحیت کی اصل ہیکل دوم یہودیت ہے لیکن دونوں مذاہب مسیحیت کی پہلی صدی میں الگ ہو گئے۔ مسیحیت کے عقائد عہد نامہ جدیدمیں مذکور یسوع مسیح کی تعلیمات پر مبنی نئے معاہدہ کی روشنی میں راسخ الاعتقادیت اور صحیح یقین پر مبنی ہیں ۔ [1] یہودیت کے عقائد تلمود اور تورات میں مذکور عہد موسی پر مبنی صحیح یقین اور راسخ الاعتقادیت پر مبنی ہیں۔ [2][3][4]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Hebrews 8:6
  2. Jackson، Elizabeth۔ The Illustrated Dictionary of Culture۔ Lotus Press۔ صفحہ 147۔ آئی ایس بی این 978-81-89093-26-6۔ نادرست |=مردہ ربط (معاونت)
  3. Westley، Miles۔ The Bibliophile's Dictionary۔ Writer's Digest Books۔ صفحہ 91۔ آئی ایس بی این 978-1-58297-356-2۔ نادرست |=مردہ ربط (معاونت)
  4. McKim، Donald K.۔ Westminster Dictionary of Theological Terms۔ Westminster John Knox Press۔ صفحہ 197۔ آئی ایس بی این 978-0-664-25511-4۔ نادرست |=مردہ ربط (معاونت)