سامری

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
سامری
ࠔࠌࠓࠉࠌ
שומרונים
السامريون
عید خیام منانے کے لیے سامری جبل جرزیم پر موجود
عید خیام منانے کے لیے سامری جبل جرزیم پر موجود
کل تعداد
796 (2017)
علاقے جہاں پر کثیر تعداد ہے
سامری برادری کی تعداد
اسرائیل (زیادہ تر حولون میں) 415[1]
قریہ لوزہ، مغربی کنارہ۔[2] 381[1]
مذاہب
سامریت
مقدس کتب
سامری تورات
زبانیں
موجودہ دیسی
عبرانی، عربی
سابقہ دیسی
عربی، سے پہلے آرامی اور ابتدائی عبرانی
عبادتی
سامری عبرانی، آرامی، سامری عربی[3]
منسلکہ گروہ
یہود[4][5]
کچھ دوسرے شامی اور سامی قوم[6][7] جیسے کہ فلسطینی[8][9]  • آشوری[9][6]

سامری (سامری عبرانی: ࠔࠠࠌࠝࠓࠩࠉࠌ، نقل حرفی شامرم (שַמֶרִים)، مطلب "(تورات کے ) محافظ/امانتدار/پہرے دار"، عبرانی: שומרונים، نقل حرفیشومرونم‎، عربی: السامريون) سرزمین شام کا ایک نسلی مذہبی گروہ جن کا تعلق قدیم مشرقی تہذیب کے بنی اسرائیلی (یا عبرانی) نسل سے ہے۔

سامریوں کا دعویٰ ہے کہ ان کے جد امجد کا تعلق قبیلہ افرائیم اور قبیلہ منسی (یوسف کے دو بیٹوں کا قبیلہ) کے ساتھ ساتھ لاوی قوم سے تھا۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب The Samaritan Update Retrieved 1 جنوری 2017.
  2. Gabrielle Barbati (January 21, 2013)۔ "Israeli Election Preview: The Samaritans, Caught Between Two Votes"۔ International Business Times۔ اخذ کردہ بتاریخ 14 اکتوبر 2014۔ 
  3. "Joshua, The Samaritan Book Of:"۔ JewishEncyclopedia.com۔ اخذ کردہ بتاریخ 2010-02-25۔ 
  4. Shen، P; Lavi، T; Kivisild، T; Chou، V; Sengun، D; Gefel، D; Shpirer، I; Woolf، E et al۔ (2004). "Reconstruction of patrilineages and matrilineages of Samaritans and other Israeli populations from Y-chromosome and mitochondrial DNA sequence variation". Human Mutation 24 (3): 248–60. doi:10.1002/humu.20077. PMID 15300852. http://evolutsioon.ut.ee/publications/Shen2004.pdf. 
  5. Hippokratis Kiaris (2012)۔ Genes, Polymorphisms and the Making of Societies: How Genetic Behavioral Traits Influence Human Cultures۔ Universal Publishers (اشاعت April 1, 2012)۔ صفحہ 21۔ آئی ایس بی این 978-1-61233-093-8۔ 
  6. ^ ا ب Jim Ridolfo (2015)۔ Digital Samaritans: Rhetorical Delivery and Engagement in the Digital Humanities۔ University of Michigan Press (اشاعت 16 Sep 2015)۔ صفحہ 69۔ آئی ایس بی این 978-0-472-07280-4۔ 
  7. Gerard Russell (2014)۔ Heirs to Forgotten Kingdoms: Journeys Into the Disappearing Religions of the Middle East (اشاعت 1st)۔ Basic Books (اشاعت اکتوبر 21, 2014)۔ آئی ایس بی این 978-0-465-03056-9۔ 
  8. Atzmon، G; Hao، L; Pe'Er، I; Velez، C; Pearlman، A; Palamara، PF; Morrow، B; Friedman، E et al۔ (2010). "Abraham's Children in the Genome Era: Major Jewish Diaspora Populations Comprise Distinct Genetic Clusters with Shared Middle Eastern Ancestry". American Journal of Human Genetics 86 (6): 850–59. doi:10.1016/j.ajhg.2010.04.015. PMID 20560205. 
  9. ^ ا ب "Jews Are The Genetic Brothers Of Palestinians, Syrians, And Lebanese"۔ Sciencedaily.com۔ 9 مئی 2000۔ اخذ کردہ بتاریخ 12 April 2013۔